محبوبہ مفتی گھر منتقل | رہائش گاہ سب جیل قرار

تاریخ    8 اپریل 2020 (29 : 12 AM)   


بلال فرقانی
سرینگر// پبلک سیفٹی ایکٹ کے تحت نظر بند پی ڈی پی صدر محبوبہ مفتی کو منگل کے روز سرکاری رہائش گاہ واقع فیئر ویو گپکارمنتقل کیا گیا۔ محبوبہ مفتی گذشتہ 7ماہ سے زائد کے عرصے سے نظربند ہیں۔ انہیں جنوری میں چشمہ شاہی گیسٹ ہاوس سے ٹرانسپورٹ یارڈمولانا آزاد روڑ  کے ایک سرکاری گیسٹ ہائوس میں منتقل کیا گیا تھا، جو سب جیل بنایا گیا تھا۔محبوبہ مفتی کو ڈاکٹر فاروق اور عمر عبداللہ کیساتھ ہی 5اگست 2019کو پہلے 6ماہ کیلئے نظر بند کیا گیا اور بعد میں تینوں پر پی ایس اے کا اطلاق عمل میں لایا گیا۔ڈاکٹرفاروق اور عمر عبداللہ پر عائد سیفٹی ایکٹ جموں کشمیر انتظامیہ نے واپس لیکر دونوں کی نظر بندی ختم کردی ہے تاہم محبوبہ مفتی ابھی بھی زیر حراست ہیں۔و ہ اپنی رہائش میں ہی نظر بند رہیں گی جسے سب جیل کا درجہ دیا گیا ہے۔ محکمہ داخلہ کے پرنسپل سیکریٹری شالین کابرا کی طرف سے جاری کئے گئے ایک حکم نامہ میں کہا گیا ہے’’ جموں کشمیر پبلک سیفٹی ایکٹ مجریہ1978 کی دفعہ10شقB کے تحت حاصل اختیارات کے تناظر میں حکومت محبوبہ مفتی دختر مرحوم مفتی محمد سعید ساکن بجبہاڑہ حال نوگام سرینگر جسے نظربند رکھا گیا تھا، کو سب جیل ڈی ایم کیو۔۔6ٹرانسپورٹ یارڑ مولانا آزاد روڑ سرینگر سے سب جیل فیئر ویو گپکار روڑ سرینگر فوری طور پر منتقل کرنے کے احکامات صادر کئے جاتے ہیں جبکہ موصوفہ کو ضلع مجسٹریٹ سرینگر کی طرف سے زیر آرڈر نمبر DMS/PSA/147/2020  محررہ5فروری2020 جس کو6فروری2020کی تاریخ کے درستگی کے ساتھ پڑھا جائے،کے تحت  نظر بند رکھا گیاہے‘‘۔شالین کابرا کی طرف سے جاری احکامات کے مطابق’’ جیل خانہ قانون1990کی دفعہ2شقBکے تحت حاصل اختیار ات کے تحت حکومت فیئر ویو گپکار روڑ کو سب جیل قرار دیتی ہے‘‘۔
 

تازہ ترین