تازہ ترین

مزید علاقے ناکہ بندی کے دائرے میں لال بازار ، عیدگاہ ،جواہر نگر ، راجباغ اور حاجن بھی شامل

8 اپریل 2020 (29 : 12 AM)   
(      )

بلال فرقانی+عازم جان
سرینگر+بانڈی پورہ//سرینگرضلع انتظامیہ نے منگل کو عید گاہ،لال بازار، جواہر نگر اور راجباغ کو بھی ’پابندی علاقے‘ قرار دیا ہے۔لال بازار اور عید گاہ میں نئے کورونا کیسز سامنے آنے کے بعد ضلع انتظامیہ نے چھتہ بل کی بھی مکمل طور پر ناکہ بندی کردی جسے پہلے ہی ریڈ زون قرار دیا گیا ہے۔سرینگر ضلع انتظامیہ نے پیر کو پہلے سے ریڈ زون قرار دئیے گئے چھتہ بل کی مکمل طور پر ناکہ بندی کی اور پورے علاقے کوسیل کیا۔ ضلع مجسٹریٹ ڈاکٹر شاہد اقبال چودھری نے کہا کہ چھتہ بل میں جراثیم کش ادویات کا چھڑکائو کیا گیا اور علاقت کے سارے راستے بند کئے گئے۔منگل کو عیدگاہ اور لال بازار کے مزید کیس سامنے آئے جس کے فوراً بعد ضلع انتظامیہ نے یہاں بھی ناکہ بندی کردی اور ہاٹ سپاٹ علاقوں کی طرف جانے والے راستے سیل کردیئے۔ضلع مجسٹریٹ کے احکامات پر منگل کی صبح ہی راجباغ اور جواہر نگر کی بھی ناکہ بندی کی گئی۔مکینوں کا کہنا ہے کہ صبح سویرے علاقوں میں پولیس کی بھاری گشت رہی اور لوگوں کو گھروں سے باہر آنے کی اجازت نہیں دی گئی۔ جموں کشمیر انتظامیہ نے پہلے ہی44علاقوں کو ریڈ زون قرار دیا ہے،جن میں وادی میں34اور جموں میں10علاقے شامل ہیں۔ اب اس میں مزید علاقے شامل کئے گئے ہیں۔ شہر کے خیام علاقے کو بھی پیر کے روز ریڈ زون میں تبدیل کیا گیا ہے جبکہ ،بھشمبر نگر اور ڈلگیٹ تک محدود نقل و حمل والا علاقہ قرار دیا گیا۔ ریڈ زون علاقوں کی حد بندی،ان علاقوں کے سرحدوں سے لیکر دائرے میں آنے والے5کلو میٹر تک کی ہے،جبکہ نواحی علاقوں کو محدود نقل و حرکت والے علاقے قرار دیا گیا ہے۔ادھر بانڈی پورہ کے تحصیل حاجن کی دوبستیوں کو ریڈزوون قرار دیکر پابندیاں سخت کردی گئیں ہیں۔ ڈپٹی کمشنر بانڈی پورہ شہباز احمد مرزا نے اس سلسلے میں احکامات صادر کر کے نائد کھے اور گنڈ جہانگیر کو ریڈ زون قرار دیا۔ضلع مجسٹریت نے ہدایت جاری کرتے ہوئے کہا کہ ان دو بستیوں میں نہ کسی کو اندر جانے کی اجازت ہوگی اور ناکسی باہر آنے کی اجازت ہوگی۔ گنڈ جہاگیر اور نائندکھے میں مزید دو مریضوں کی رپورٹ  مثبت آئی ہے جن میں ایک فوت ہوگیا ہے۔