تازہ ترین

لاک ڈائون بدستور جاری، شہر میں پہلی بار نرمی دیکھی گئی

کئی علاقوں میں 17افراد گرفتار، کئی گاڑیاں ضبط

7 اپریل 2020 (08 : 02 AM)   
(   عکاسی: امان فاروق    )

بلال فرقانی
سرینگر//کورونا وائرس کے پھیلائو کی زنجیر توڑنے کیلئے ملک گیر سطح پر لاک دائون سے وادی بھر میں سکوت کا عالم ہے۔تاہم پیر کو پہلی بار شہر سرینگر کی سڑکوں پر پرائیویٹ گاڑیوں کی تعداد میں اضافہ دیکھنے کو ملا جبکہ پولیس نے امتناعی احکامات کی خلاف ورزی کرنے کی پاداش میں17افراد کو حراست میں لیکر9گاڑیوں کو ضبط کیا۔ شہر کیساتھ ساتھ وادی بھر میں اگر چہ ہر طرح کی آمد و رفت پر سخت ترین قدغن عائد کردی گئی ہے اور مکمل طور پر لاک ڈائون پر عمل در آمد کو یقینی بنایا جارہا ہے تاکہ کورونا وائرس کو پھیلنے سے روکا جاسکے لیکن شہر سرینگر میں پیر کو پہلی بار پرائیویٹ گاڑیوں کی آمد و رفت میں بری حد تک اضافہ دیکھنے کو ملا۔ اتنا ہی نہیں بلکہ پولیس نے عام دنوں کے دوران سڑکوں پر بچھائی گئی خاردار تاریں کئی مقامات پر ہٹادیں تھیں جس کی وجہ سے نجی گاڑیوں کی آمد و رفت میں اضافہ دیکھنے کو ملا۔ پیر کو کسی بھی جگہ پر گاڑیوں کو نہیں روکا جارہا تھا اور گاڑیوں کی آواجاہی چلنے کی اجازت تھی۔ لاک ڈائون کے اعلان کے بعد پیر کو پہلی بار شہر میں پولیس  کی جانب سے نرمی برتی گئی۔تاہم اس طرح کی صورتحال دیگر قصبوں میں نہیں تھی جہاں مکمل طور پر بندشیں عائد رہیں۔پولیس نے لاک ڈائون کو نافذ العمل بنانے کیلئے دفعہ144 کے تحت عائد پابندیوںکی خلاف ورزی کی پاداش میں17افراد بشمول دکانداروں کو حراست میں لیا۔ پولیس تھانہ نشاط اور ہارون کے حدود میں3افراد جبکہ سرکاری احکامات کی خلاف ورزی کرنے کی پاداش میں  ایک گاڑی کو بھی ضبط کیا گیا۔ پولیس تھانہ رام نشی باغ اور نوگام کے تحت آنے والے علاقوں میں پولیس نے9افراد کو حراست میں لیکر8گاڑیوں کو ضبط کیا۔ پولیس تھانہ خانیار سے وابستہ عملے نے بھی5افراد کو کو حراست میں لیکر کیس درج کیا۔ اتوار اور پیر کی رات پولیس نے  نوگام بائی پاس پر تین ٹپروں کو اس وقت ضبط کیا جب وہ تعمیراتی سامان لیکر کہیں جارہے تھے۔ادھر پٹن میں کئی دکانداروں کیخلاف بھی کیس درج کیا گیا۔