کورونا وائرس کے نئے 17معاملات سامنے ، 28,545 اَفراد زیر نگرانی

4 اپریل 2020 (21 : 09 PM)   
(      )

نیوز ڈیسک
جموں//حکومت نے سنیچر کو کہا کہ جموںوکشمیر میں آج کورونا وائر س کے 17نئے معاملات سامنے آگئے ۔ ان میں 3 کا تعلق جموں صوبے اور 14 کا تعلق کشمیر صوبے سے ہے۔اس طرح جموں وکشمیر میں مثبت معاملات کی کل تعداد 92تک پہنچ گئی ہے۔حکومت کی طرف سے جاری کئے گئے روزانہ میڈیا بلٹین میں بتایا گیا ہے کہ نوول کورونا وائرس کے 92 مثبت معاملات میں سے 86 سرگرم معاملات ہیں ،چار مریض صحتیاب ہوئے ہیں اور دو کی موت واقع ہوئی ہے۔
اب تک 28,545 ایسے اَفراد کو نگرانی میں رکھا گیا ہے جن کا سفری پس منظر ہے یا جو مشتبہ معاملات کے رابطے میں آئے ہیں ۔ ان میں سے 10,606 اَفراد کو ہوم کورنٹین میں رکھا گیا ہے جس میں سرکار کی طرف سے چلائے جارہے کورنٹین مراکز بھی شامل ہیں ۔ اس کے علاوہ682 اَفراد کو ہسپتال کورنٹین میں رکھا گیا ہے۔86کو ہسپتال آئیسولیشن میں رکھا گیا ہے جبکہ 12,795 اَفراد کو گھروں میں نگرانی میں رکھا گیا ہے۔اسی طرح بلیٹن کے مطابق 4,376اَفرادنے 28روزہ نگرانی مدت پوری کی ہے۔
بلیٹن میں مزید بتایا گیا ہے کہ اب تک 1397نمونے جانچ کے لئے بھیجے گئے ہیں جن میں سے 1250 نمونوں کی رِپورٹ منفی پائی گئی ہے،92مثبت رپورٹ میں پائے گئے ہیں اور 55کی روپورٹیں 04اپریل 2020 ءتک آنا باقی ہے ۔
لوگوں سے کہا گیا ہے کہ وہ گھروں میں ہی رہیں اور سماجی دوری کو برقرار رکھیں۔ اُن سے مزید کہا گیا ہے کہ وہ سفری تفاصیل یا مثبت معاملے کے ساتھ رابطے کو رضاکارانہ طور پر رِپورٹ کریں۔
جن لوگوں کو کسی مرض کی شکایت نہیں ہے اُنہیں چاہئے کہ وہ کپڑے سے بنائی گئی ماسکیں استعمال کریں ۔ اس طرح کی ماسک گھر میں ہی صاف ستھرے کپڑے سے تیار کی جاسکتی ہے اور استعمال سے پہلے اس کو اچھی طرح دھونا لازمی ہے۔یہ ماسک اس طرح تیار کیا جانا چاہئے تاکہ اس سے پورا منھ اور ناک ڈھک جائے۔
ایڈوائزری میں کہا گیا ہے کہ مرکزی حکومت نے آروگیاں سیتوں موبائیل ایپلیکشن تیار کی ہے جس میں بلیو ٹوتھ اور جی پی ایس کا استعمال ہوتا ہے اور لوگوں کو اس ایپلکیشن کے ذریعے خطرات کے بارے میں خبردار کیا جاتا ہے۔
حکومت کی جانب سے جاری ایڈوائرزی میں مذہبی رہنماﺅں سے کہا گیا ہے کہ وہ مذہبی مقامات پر کسی بھی طرح کے اجتماع کی اجازت نہ دیں جس میں شادیوں کے اجتماعات بھی شامل ہیں۔
 

تازہ ترین