وادی کے اسپتال کورونا مریضوں کیلئے مخصوص کرنا لازم:ڈاک

ہلکے انفیکشن میں مبتلاء افرادگھروں میں بھی الگ تھلگ رہ سکتے ہیں

1 اپریل 2020 (22 : 01 AM)   
(      )

نیوز ڈیسک
سرینگر//ڈاکٹرس ایسوسی ایشن ،کشمیر(ڈاک)نے وادی کے اسپتالوں کو کوروناوائرس میں مبتلاء شدیدبیماروں کیلئے مخصوص رکھنے پرزوردیا ہے۔ڈاکٹرس ایسوسی ایشن کے صدر ڈاکٹر نثار الحسن نے ایک بیان میں کہا کہ کورونا وائرس کے انفیکشن میں مبتلاء اکثر لوگوں کو اسپتال میں داخل کرنے کی ضرورت نہیں پڑتی ہے ۔انہوں نے کہا ’’ ہمیں اسپتالوں اور انسانی وسائل کواُن لوگوں کیلئے محفوظ رکھنا چاہیے جنہیں اس کی ضرورت ہے‘‘ ۔انہوں نے مزیدکہا ’’ ہمیں اُن لوگوں کو اسپتالوں میں رکھنے کی ضرورت ہے جنہیں اس کی ضرورت ہے‘‘ ۔ڈاکٹر نثار نے کہا کہ جن لوگوں کو کوروناوائرس کی ہلکی انفیکشن ہے وہ گھروں میں دوہفتوں تک الگ تھلگ رہ سکتے ہیں اورفون پر ڈاکٹر سے رابطہ کرسکتے ہیں ۔ان مریضوں کوایک Paracetamolکی گولی سے افاقہ ہوگااور وہ اپنے آپ ٹھیک ہوجائیں گے ۔ڈاکٹر نثار نے کہا کہ صرف ان مریضوں کو اسپتالوں میں داخل کئے جانے کی ضرورت ہے جنہیں یہ بیماری شدیدطور لاحق ہو۔انہوں نے کہا کہ اس بیماری کے ہلکے کیس میں مریضوں کو بخاراور کھانسی ہوتی ہے اورانہیں سانس لینے میں کوئی دشواری نہیں ہوتی ہے اور وہ مستحکم ہوتے ہیں۔شدید معاملات میں مریض کوسانس لینے میں دقت ہوتی ہے ،یہاں تک کہ نازک مریضوں کے دیگر اعضاء بھی ناکام ہوتے ہیں ۔انہوں نے چین کے مریضوں کاحوالہ دیتے ہوئے کہا کہ وہاں44000مریضوں میں80فیصدکو یہ بیماری ہلکی طور لگی تھی اور14فیصد کوشدید تھی جبکہ5فیصد نازک تھے۔اس تحقیق کے مطابق صرف نازک مریض ہی اس بیماری کی وجہ سے مرگئے ۔انہوں نے کہا کہ مجموعی طور اس بیماری سے مرنے والوں کی شرح2.3فیصد رہی ہے لیکن نازک مریضوں میں اس کی شرح49فیصد تھی۔
 

تازہ ترین