ہمارے بچوں کو انسانی بنیادوں پر رہا کیا جائے | آگرہ جیل میں مقید ڈورو کے 2نوجوانوں کے اہل خانہ کی حکومت سے اپیل

30 مارچ 2020 (12 : 12 AM)   
(      )

عارف بلوچ
اننت ناگ//آگرہ جیل میں گذشتہ 9ماہ سے مقید ڈورو شاہ آباد کے2 نوجوانوں کے اہل خانہ نے کورونا وائرس کے خطرات کے پیش نظر انہیں انسانی بنیادوں پر رہا کرنے کی اپیل کی ہے ۔30سالہ شبیر احمد راتھر ولد عبدالرزاق راتھر ساکن محمود آباد ڈوروکو جولائی کے پہلے ہفتہ میں گرفتار کرکے پبلک سیفٹی ایکٹ کے تحت آگرہ جیل منتقل کیا گیا ۔پیشہ سے نانوائی نظر بند نوجوان3کمسن بچوں کا باپ ہے اور گھر کا واحد کفیل ہے ۔مذکورہ نوجوان کی اہلیہ نصرینہ نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ اُن کا شوہرجرم بے گناہی کی سزا کاٹ رہا ہے ۔اُن پر جنگجوئوں کے اعانت کار ہونے کاالزام ہے۔انہوں نے کہا کہ کورونا وائرس کے خطرات کے پیش نظر انہیں شوہر کی سلامتی کے حوالے سے خدشات لاحق ہوگئے ہیں کیونکہ جیل میں صحت و صفائی کا فقدان ہونے کی وجہ سے اُن کا شوہر کئی مرتبہ بیمار ہوگئے۔اس دوران 28سالہ محمد اشرف میر ولد حبیب اللہ ساکن ڈلوچھ کاگذگنڈبھی گذشتہ کئی مہینوں سے آگرہ جیل میںمقید ہے ۔مذکورہ نوجوان دو کمسن بچوں کا باپ ہے اور گھر کا واحد کفیل ہے۔مذکورہ نوجوان کے اہل خانہ نے بھی اسی طرح کے خدشات ظاہر کئے ۔دونوں نظر بند نوجوانوں کے اہل خانہ نے حکومت سے اپیل کی کہ کوروناوائرس کی دہشت کے پیش نظراورانسانی بنیادوں پر رہا کیا جائے ۔
 

تازہ ترین