تازہ ترین

وائرس پھیلنے کی رفتار بڑھ گئی، اتوار کو مزید5 کیس سامنے آئے | وادی میں کرونا سے دوسری ہلاکت

جموں کشمیر میں 38کے نمونے مثبت، 542 نمونوں کی رِپورٹ منفی پائی گئی ، 8کی رپورٹ آنا باقی

تاریخ    30 مارچ 2020 (12 : 12 AM)   


پرویز احمد
سرینگر //اتوار کی صبح سی ڈی اسپتال ڈلگیٹ میں 65سالہ کورونا وائرس مریض کی موت کے ساتھ ہی کشمیر میں ابتک مہلک وائرس 2افراد کی جان نگل چکا ہے جبکہ مزید 5مشتبہ افراد کی رپورٹ مثبت آنے کے ساتھ ہی جموں و کشمیر میں کورونا وائرس سے متاثر ہونے والے افراد کی تعداد 38ہوگئی ہے۔ اتوار کی صبح دوسرے کورونا وائرس مریض کی موت کی خبر دیتے ہوئے جموں و کشمیر سرکار کے ترجمان روہت کنسل نے ٹیوٹر پر لکھا ’’ آج دن کی بری شروعات ، بدقسمتی سے سرینگر میں ا ٓج صبح ایک اور کورونا وائرس مریض کی موت ہوگئی ہے‘‘۔ٹنگمرگ سے تعلق رکھنے والے 65سالہ مریض کو چھاتی میں درد اور کھانسی کی شکایت کیلئے ایس ڈی ایچ ٹنگمرگ منتقل کیا گیا تھا لیکن ایچ ڈی ایس ٹنگمرگ میں ڈاکٹروں نے معاملے کی نویت کو سمجھتے ہوئے مریضوں کو سرینگر کے صدر اسپتال منتقل کیاجہاں داخلے کے بعد اس کے خون کی تشخیص کی گئی لیکن پہلی تشخیصی رپورٹ منفی آئی تھی۔صدر اسپتال سرینگر میں تین دنوں تک زیر علاج رہنے کے بعد مریض کی حالت خراب ہوگئی ۔ صدر اسپتال سرینگر میں وینٹیلیٹروں کی کمی کی وجہ سے مریض کو انتہائی نازک حالت میں سنیچر کی صبح سی ڈی اسپتال منتقل کیا گیا جہاں شام کو اسکی تشخیصی رپورٹ مثبت آئی اور اتوار کی صبح چار بجے وہ فوت ہوگیاہے۔اتوار کو وادی کے مختلف علاقوں سے تعلق رکھنے والے مزید 5افراد کی رپورٹ مثبت آئی ہے جن میں 2کا تعلق سرینگر ، 2بڈگام اور ایک کا تعلق بارہمولہ سے ہے۔ کشمیر میں مثبت قرار دئے گئے29 کورونا وائرس مریضوں میں سے 15سرینگر سے تعلق رکھتے ہیں جن میں ایک کی موت ہوگئی ،8بانڈی پورہ،3بڈگام، 2بارہمولہ (جن میں ایک کی موت ہوگئی) اور ایک کا تعلق پلوامہ سے ہے۔اتوار کو سرینگر سے تعلق رکھنے والے 2مثبت مریضوں میں سے ایک کا تعلق ہاکہ بازار حول جبکہ دوسرے کا تعلق جواہر نگر سرینگر سے ہے جو دونوں ایک مذہبی جماعت کا حصہ رہے ہیں۔ ادھر بڈگام میں بھی مثبت قرار دئے گئے کورونا وائرس مریضوں کی رپورٹ مثبت آنے کے بعد سے علاقے میں محکمہ صحت کی ٹیموں نے متاثرہ مریضوں کے رابطوں کی تفاصیل جمع کرنے کا سلسلہ شروع کیا ہے۔ محکمہ صحت میں بڈگام کے نوڈل آفیسر ڈاکٹر پرویز احمد پرے نے بتایا ’’ دونوں مریضوں کے رابطوں کے بارے میں پتہ لگایا جارہا ہے کیونکہ دونوں افراد بڈگام میں ہی کسی مثبت مریض کے ساتھ رابطے میں آئے ہیں‘‘۔ انہوں نے کہا کہ محکمہ صحت کی ٹیمیں دونوں افراد کے بارے میں تفاصیل جمع کررہی ہے اور اس میں 2دنوں کا وقت لگ سکتا ہے۔ ادھر شیر کشمیر انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز صورہ میں اتوار کو 25مشتبہ مریضوں کی رپورٹ منفی آئی جبکہ اسپتال میں 31مشتبہ مریضوں کو آئیسولیشن وارڈ میں داخل کیا گیا ہے۔ میڈیکل سپر انٹنڈنٹ ڈاکٹر فاروق احمد جان نے بتایا ’’سکمز میں اسوقت 102مشتبہ مریض آئیسولیشن اور قرنطینہ وارڈ میں داخل ہیں‘‘۔ انہوں نے کہا ’’ اتوار کو 31مشتبہ مریضوں کو داخل کیاگیا اور اب آئیسولیشن وارڈ میں  37افراد داخل ہیں‘‘۔ انہوں نے کہا ’’ سنیچرکو آنے والے تمام 25مشتبہ مریضوں کی پہلی رپورٹ منفی آئی ہے اور انہیں قرنطینہ وارڈ میں منتقل کیا گیا ہے جہاں نگرانی میں رکھے گئے مریضوں کی تعداد 65ہوگئی ہے‘‘۔ انہوں نے کہا ’’ 31افراد کے خون کی تشخیص کیلئے نمونے حاصل کئے گئے ہیں جنکی رپورٹ سوموار کو آجائے گی‘‘۔رعناواری  اسپتال میں 110افراد کو قرنطینہ میں رکھا گیا ہے۔ میڈیکل سپر انٹنڈنٹ ڈاکٹر ذاکر احمد نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا ’’اتوار کو ہم نے کسی کو بھی داخل نہیں کیا کیونکہ یہاں مزید مشتبہ مریضوں کو رکھنے کی گنجائش نہیں ہے‘‘۔ انہوں نے کہا ’’ جب تک 110کو گھر روانہ نہیں کیا جاتا ، تب تک ہم کسی کو بھی داخل نہیں کرسکتے‘‘۔ دریں اثنائحکومت کی طرف سے جاری کئے گئے روزانہ میڈیا بلٹین میں بتایا گیا ہے کہ جموںوکشمیر میں اب تک 6,465 ایسے اَفراد کو نگرانی میں رکھا گیا ہے جو یاتو بیرون ممالک سے واپس آئے یا مشتبہ افراد کے رابطے میں آئے ہیں۔ان میں سے38 اَفراد کو کورونا وائرس میں مبتلا ہونے کی تصدیق ہوئی ہے جن میں سے 34سرگرم ہیں ، دو صحتیاب ہوئے ہیں اور دو کی موت واقع ہوئی ہے۔ میڈیا بلیٹن کے مطابق 3,260 اَفراد کو ہوم کورنٹین جبکہ 307اَفراد کو ہسپتال کورنٹین میں رکھا گیا ہے۔جن اَفراد کو اپنے گھروں میں نگرانی میں رکھا گیا ہے اُن کی تعداد 2163ہیں جبکہ 735اَفراد نے 28دِن کی نگرانی کی مدت پوری کی ہے۔بلیٹن میں مزید بتایا گیا ہے کہ اب تک 588نمونے جانچ کے لئے بھیجے گئے ہیں جن میں سے 542 نمونوں کی رِپورٹ منفی پائی گئی ہے اور اب تک 38 اَفراد کے نمونے مثبت پائے گئے ہیں جبکہ 8کی رپورٹیں 29مارچ 2020 ء تک آنا باقی ہے ۔ایڈوائزری میں لوگوں سے اپیل کی گئی ہے کہ وہ گبھرائیں نہیں اور حکومت نے کووڈ .19کے مثبت معاملات کی نشاندہی کرنے اور ان کی ٹیسٹنگ کرنے کے لئے ایک مہم شروع کی ہے ۔ اس کے علاوہ وائرس کے پھیلائو کو روکنے کے لئے ہرممکن اقدامات کئے جارہے ہیں۔
 

تازہ ترین