بانڈی پورہ اور سوناواری میں سبزیوں کی قلت

کئی علاقوں میں منافع خوری عروج پر

تاریخ    29 مارچ 2020 (00 : 01 AM)   


عازم جان
بانڈی پورہ//بانڈی پورہ ضلع میں لاک ڈائون کے بیچ لوگوں کو سبزیوں کی قلت کا سامنا ہے ۔کئی علاقوں میں دودھ بھی دستیاب نہیں ہے  اور اگر کہیں لازمی اشیاء ملتی ہیں تو وہاں قیمتیں آسمان کو چھورہی ہیں۔سوناواری کے سمبل ،نائدکھے ،حاجن ،شادی پورہ، صدرکوٹ بالا، اجس گرورہ، آرہ گام، نادی ہل ،ماڈر، آجراور بانڈی پورہ قصبہ کے لوگوں نے کشمیرعظمیٰ کو بتایا کہ انہیں سبزیوں اور دیگر اشیائے خوردونوش کی قلت کا سامنا ہے ۔ بانڈی پورہ قصبہ کے لوگوں نے بتایا کہ بعض دکانداروںنے قیمتوں میں اضافہ کردیا ہے۔کلوسہ کے لوگوں نے بھی الزام لگایا ہے کہ انہیں اگرچہ ضرورت کی کچھ چیزیں بازار میں ملتی ہین لیکن ان کی قیمتیںدوگنی کردئی گئی ہیں۔لوگوں نے لیفٹیننٹ گورنر انتظامیہ اور ضلع انتظامیہ سے مطالبہ کیا کہ لاک ڈائون پر سختی سے عمل کروانے کے ساتھ ساتھ سبزی ودیگر اشیائے ضروریہ میسر رکھنے اور قیمتوں کو اعتدال پررکھنے کیلئے اقدامات کئے جائیں۔
 

 

قیمتوں میں اضافہ باعث تشویش:کشمیر ٹریڈ الائنس

مصنوعی قلت پیدا کرکے عوام مزید پریشان

سرینگر//لاک ڈائون کے نتیجے میں اشیائے ضروریہ اور ادویات کی مصنوعی قلت اور کھانے پینے کی چیزوں میں ہوش ربا اضافہ پر کشمیر ٹریڈ الائنس نے فکر و تشویش کا اظہار کیا ہے۔ الائنس کے صدر اعجاز شہداد نے کہا کہ سبزیوں، ادویات اور بنیادی اشیاء کی مصنوعی قلت پیدا کرکے مفاد خصوصی رکھنے والے عناصر نے عوام کو مزید مشکلات میں ڈال دیا ہے۔انہوں نے انتظامیہ پر زور دیا کہ ایسے تاجروں کے خلاف سخت کاروائی عمل میں لائی جائے جو لوگوں کو اس نازک مرحلے پر منافع خوری کرکے عوام کو مصیبت میں ڈال رہے ہیں۔ الائنس نے اشیائے خوردنی فروخت کرنے والے تاجروں سے اپیل کی کہ وہ ان مشکل حالات میں لوگوں کی مدد کریں اور ناجائز منافع خوری سے اجتناب کریں۔اعجاز شہداد نے انتظامیہ کی طرف سے لوگوں کو دہلیز پر راشن فراہم کرنے کے فیصلے کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا کہ ایسے اقدامات کہیں نظر نہیں آرہے ہیں۔ انہوں نے انتظامیہ سے مطالبہ کیا کہ محلہ سطحوں پر چاول،آٹا ،دالیں، گیس اور دیگر اشیاء کو ہمہ وقت دستیاب رکھا جائے تاکہ لوگوں کو خریداری کے دوران کسی پریشانی کا سامنا نہ کرنا پڑے ۔
 

 

تازہ ترین