سرینگرجموں شاہراہ ہنوزٹریفک کیلئے بند

متعدد مقامات پر گر آئی پسیوں اورپتھروں کا ہٹانے کاکام جاری

29 مارچ 2020 (00 : 01 AM)   
(      )

محمدتسکین
بانہال//گزشتہ کئی روزکی بارشوں کی وجہ سے سرینگر جموں شاہراہ ،کم سے کم ایک درجن مقامات پر پسیاں اور پتھر گرآنے کی وجہ سے ہنوزٹریفک کی آمدورفت کیلئے بند ہے اور رام بن اورادھمپور کے درمیان کئی مقامات پر کشمیرجانے والی مال بردار گاڑیاں درماندہ ہیں ۔کروناوائرس کی وباء پھوٹ پڑنے کے بعد اگر چہ شاہراہ پر مسافر گاڑیوں کے چلنے پر پابندی عائد ہے تاہم کشمیراور چناب خطے میں ضروری اشیاء اور سازوسامان کی کمی نہ ہونے دینے کیلئے سڑک پر مال بردار گاڑیوں کے چلنے پر کوئی روک نہیں ہے ۔سنیچر کی صبح موسم میں بہتری آنے کے بعداگرچہ شاہراہ کی بحالی کاکام شروع کیاگیا تھا تاہم سنیچردیر رات تک شاہراہ کی مکمل بحالی کے امکانات کم ہی دکھائی دے رہے تھے۔مقامی لوگوں نے کشمیرعظمیٰ کوبتایا کہ تعمیراتی کمپنیوں نے شاہراہ پر گرآئی پسیوں کوصاف کرنے کی کارروائی سنیچر بعد دوپہر بھی شروع نہیں کی تھی۔ڈی ایس پی ٹریفک نیشنل ہائی وے ،رام بن اجے آنند نے اس نمائندے کو بتایا کہ سنیچر کی صبح تک شدیدبارش کے نتیجے میں شاہراہ کم سے کم ایک درجن مقامات پر پسیاں اور پتھر گر آنے کی وجہ سے بند ہوگئی ہے اور ٹریفک کو رام بن اور ناشری ٹنل کے آر پار کئی مقامات پرروک دیاگیاہے۔انہوں نے کہا کہ شاہراہ چندرکوٹ،کیفٹیریاموڈرام بن،سیری،ماروگ،بیٹری چشمہ،منکی موڈ،پنتھیال،رام سو،ہنگنی اورشیر بی بی کے مقام پر پسیاں اور پتھر گرآنے کی وجہ سے جمعہ کی دوپہر کو بند ہوگئی ۔انہوں نے مزیدکہا کہ سنیچروار کی صبح سے موسم میں بہتری آنے کے بعدتعمیراتی کمپنیوں کی مشینری نے شاہراہ کی بحالی کاکام شروع کیا اوررات دیر گئے تک شاہراہ پرٹریفک کوبحال کرنے کی کوششیں کی جارہی ہیں ۔ڈی ایس پی ٹریفک رام بن نے کہا کہ سنیچر کی شام تک منکی موڈ،کیفٹیریاموڈ سمیت کئی مقامات پر پتھر گررہے تھے ۔انہوں نے کہا کہ شاہراہ کے بحال ہوتے ہی کشمیرجانے والی مال گاڑیوں اورایندھن ٹینکروں کو ترجیحی طور آگے بڑھنے کی اجازت ہوگی۔

تازہ ترین