کروناوباء کی روکتھام

’ڈاک‘نے ’ہائی ڈراکسی کلوروکین ‘دواتجویز کی

29 مارچ 2020 (00 : 01 AM)   
(      )

سرینگر//ڈاکٹرس ایسوسی ایشن کشمیر نے وادی میں کروناوائرس کے مریضوں کی تعداد میں اضافہ کے بعد ڈاکٹروں پرزوردیا ہے کہ وہ اس وائرل انفیکشن میں مبتلاء مریضوں کو , hydroxychloroquine  ’ہائی ڈراکسی کلوروکین ‘دوا،جونقرس کے مرض میں دی جاتی ہے ،دیں۔ڈاکٹرس ایسوسی ایشن کے صدر ڈاکٹر نثار الحسن نے ایک بیان میں کہا کہ اس سے جانیں بچ جائیں گی اور بیماری کا پھیلائو بھی رُک جائے گا۔انہوں نے کہا کہ ایک فرانسیسی تحقیق سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ ’ ہائی ڈراکسی کلوروکین ‘دوا،اس بیماری کے علاج میں مفید ثابت ہورہی ہے اور جب اِسے ایزی تھرومائسن کے ساتھ دیا جاتا ہے تو اِس سے وائرس کے لوڈ میں نمایاں کمی ہوتی ہے ۔انہوں نے کہا کہ چھٹے روزجن مریضوں کو یہ دوا دی گئی اُن میں سے70فیصدسے وائرس کاخاتمہ ہوا،اور جن مریضوں کو یہی دوا ایزی تھرومائسن کے ساتھ دی گئی وہ100فیصد شفایاب ہوئے ۔ڈاکٹر نثار نے کہا کہ تحقیق کے نتائج کو مدنظر رکھتے ہوئے کروناوائرس کے علاج کیلئے  ’ہائی ڈراکسی کلوروکین ‘دوامفید ہے اور تجویز کی جاسکتی ہے ۔انہوں نے کہا کہ کومبو دوا تجویز کرنے سے وائرس کی عمر بھی محدود ہوتی ہے جو مخصوص علاج نہ ہونے کی وجہ سے کئی ہفتوں تک جاری رہ سکتی ہے ۔انہوں نے کہا کہ کومبو دوائی بیماری کی شدت کو روکے گی اور اسپتالوں پر مہنگے اخراجات کو بھی کم کرسکتی ہے ۔انہوں نے کہا کہ دنیا بھر میں معالج یہ دوااستعمال کرتے ہیں اور یہ کام کررہا ہے اور جانیں بچ رہی ہیں ۔

تازہ ترین