تازہ ترین

وادی میں کرونا کی لہر میں شدت

مزید 4کیس مثبت قرار،18کی رپورٹ منفی

28 مارچ 2020 (00 : 01 AM)   
(      )

پرویز احمد

۔ 8کے بارے میں انتظار،صورہ میں آئیسولیشن وارڈ میں بستر کم پڑ گئے، ایک اور دارڈ قرنطینہ میں تبدیل، سی ڈی اسپتال تقریباً بھرا ہوا

 
سرینگر // وادی کشمیر میں کرونا وائرس متاثرین کی تعداد بڑی تیزی سے بڑھ رہی ہے اور جمعہ کو مزید 4افراد کے ٹیسٹ مثبت آگئے، ان سبھی کا تعلق سرینگر سے ہے۔  جبکہ 18کی رپورٹ منفی آئی ہے ۔جموں کشمیر میں کرونا متاثرین کی تعداد 18تک پہنچ گئی ہے جبکہ حیدر پورہ کا ایک معمر شخص فوت بھی ہوا ہے۔کرونا متاثرین میں دو کمسن بچے بھی شامل ہیں۔معلوم ہوا ہے کہ جمعہ کو جو 4افراد وائرس میں مبتلا پائے گئے ہیں ان میں چھتہ بل کے دو اور بمنہ کے دو افراد شامل ہیں۔جمعہ کی سہ پہر جموں و کشمیر سرکار کے ترجمان روہت کنسل نے سماجی رابطہ گاہ ٹیوٹر پر اطلاع دی’’ یہ بہت بری خبر دی جارہی ہے کہ جموں کشمیر میں کرونا وائرس کے مزید 4کیس مثبت آئے ہیں ، یہ چاروں سرینگر ضلع سے تعلق رکھتے ہیں، جن میں سے دو کا رابطہ ایک کرونا وائرس مریض کیساتھ ہوا تھا جبکہ دو افراد مذہبی جماعت کے ساتھ بیرون ریاست گئے ہوئے تھے، اس طرح تعداد 18تک پہنچ گئی ہے‘‘۔
ڈپٹی کمشنر سرینگرشاہد اقبال چودھری نے ٹویٹ کیا ’’ مزید 4 کیس مثبت آئے ہیں،ہمیں اپنی کوششوں میں تیزی لانی چاہئے، مقامی سطح پر منتقلی خطرناک ثابت ہوسکتی ہے‘‘۔سی ڈی اسپتال سرینگر کے میڈیکل سپر انٹنڈنٹ ڈاکٹر محمد سلیم ٹاک نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا ’’30مشتبہ مریضوں میں سے 4کی رپورٹ مثبت آئی ہے‘‘۔ انہوں نے کہا ’’’ جمعہ کو اسپتال کے آئیسولیشن وارڈ میں مزید 20 افراد کو داخل کیا گیا ہے اور اسطرح اسپتال میں داخل مریضوں کی تعداد 66ہوگئی ہے‘‘۔ ڈاکٹر سلیم نے کہا ’’ جمعرات کو داخل کئے گئے 30مشتبہ مریضوں میں سے 4کی رپورٹ مثبت، 18کی رپورٹ منفی جبکہ 8کی رپورٹ کا ابھی انتظار ہے‘‘۔ انہوں نے کہا ’’ مثبت قرار دئے گئے 4مریضوں میں بمنہ کے دو افراد اسی جہاز میں سفر کررہے تھے جس میں خانیار کی خاتون سوار تھی‘‘۔ انہوں نے کہا ’’ چھتہ بل سے تعلق رکھنے والے  2افراد کسی دینی جماعت کے ساتھ بھارت کی مختلف ریاستوں کا سفر کرکے واپس لوٹ چکے ہیں ۔ ادھر جواہر لال نہرو میموریل اسپتال رعناواری میں جمعہ کو کسی بھی نئے مریض کو داخل نہیں کیا گیا  جبکہ اسپتال کے آئیسولیشن وارڈ میں 3اور قرنطینہ میں ابھی بھی 29افراد زیرنگرانی ہیں۔ میڈیکل سپر انٹنڈنٹ ڈاکٹر ذاکر نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ جمعہ کو کسی بھی نئے مشتبہ مریض کو داخل نہیں کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ جمعرات کو مثبت قرار دئے گئے دونوں بچوں کی حالت مستحکم ہے جو آئیسولیشن وارڈ میں زیر علاج ہیں۔شیر کشمیر انسٹی چیوٹ آف میڈیکل سائنسز صورہ میں جمعہ کو او پی ڈی میں آنے والے 80مشتبہ مریضوں کی جانچ کی گئی۔ میڈیکل سپر انٹنڈنٹ ڈاکٹر فاروق احمد جان نے بتایا ’’7مشتبہ مریضوں میں ابتدائی علامات کی موجودگی کی وجہ سے انہیں آئیسولیشن وارڈ میں داخل کیا گیا‘‘۔ انہوں نے کہا کہ جمعرات کو داخل کئے گئے تمام مشتبہ مریضوں کی پہلی رپورٹ منفی آئی ہے‘‘۔ انہوں نے کہا ’’ سکمز کے آئیسولیشن وارڈ اور قرنطینہ میں 5مثبت مریضوں سمیت 55افراد زیرنگرانی ہیں‘‘۔ انہوں نے کہا کہ کورونا وائرس کے مشتبہ مریضوں میں روزانہ اضافہ ہورہا ہے اسلئے جمعہ کو 32 بستروں پر مشتمل ایک اور وارڈ کو قرنطینہ میں تبدیل کیا گیا ۔
ڈاکٹر جان نے بتایا ’’قرنطینہ وارڈ میں کل بستروں کی تعداد اب62ہوگئی ہے جبکہ مریضوں کے رش کو دیکھتے ہوئے مزید 20وینٹی لیٹر نصب کرنے کا عمل بھی شروع کیا گیا ہے۔  انہوں نے کہا ’’ 20وینٹی لیٹروں کی تنصیب کے ساتھ ہی سکمز کے آئیسولیشن وارڈوں میں وینٹی لیٹروں کی تعداد 24ہوجائے گی۔ ادھر جنوبی کشمیر کے سب ضلع اسپتال میں حیدر پورہ کے کورونا وائرس سے فوت ہونے والے مریض کا علاج کرنے والے دونوں ڈاکٹروں کی رپورٹ منفی آئی ہے جس کے بعد انہیں گھر روانہ کردیا گیا ۔ سب ضلع اسپتال سوپور کے انچار چ ڈاکٹر ردانہ نے بتایا ’’ بدھ کو تشخیص کیلئے دونوں ڈاکٹروں کے نمونے حاصل کئے گئے تھے لیکن تشخیص کے بعد دونوں کی رپورٹ منفی آئی ہے جس کے بعد انہیں گھر میں ہی احتیاط برتنے کی ہدایت دی گئی ہے۔ ادھرحکومت کی طرف سے جاری کئے گئے روزانہ میڈیا بلٹین میں بتایا گیا ہے کہ جموںوکشمیر میں اب تک 5,763 ایسے اَفراد کو نگرانی میں رکھا گیا ہے جو یاتو بیرون ممالک سے واپس آئے ہیں یا مشتبہ افراد کے رابطے میں آئے ہیں۔ان میں سے18 اَفراد کو کورونا وائرس میں مبتلا ہونے کی تصدیق ہوئی ہے جن میں سے ایک صحتیاب ہوا ہے۔ 3,136 اَفراد کو ہوم کورنٹین جبکہ 169اَفراد کو ہسپتال کورنٹین میں رکھا گیا ہے۔جن اَفراد کو اپنے گھروں میں نگرانی میں رکھا گیا ہے اُن کی تعداد 1,877ہیں جبکہ 581اَفراد نے 28دِن کی نگرانی کی مدت پوری کی ہے۔بلیٹن میں مزید بتایا گیا ہے کہ اب تک 423نمونے جانچ کے لئے بھیجے گئے ہیں جن میں سے 400 نمونوں کی رِپورٹ منفی پائی گئی ہے اور اب تک 18 اَفراد کے نمونے مثبت پائے گئے ہیں جن میں 16 سرگرم مثبت ہیں ,ایک مریض صحتیاب ہوا ہے اور ایک شخص کی موت واقع ہوئی ہے۔بلیٹن کے مطابق 27؍مارچ 2020ء کی شام تک 5نمونوں کی رِپورٹ آنا ابھی باقی تھی۔