کوروناوائرس۔۔۔

تاریخ    27 مارچ 2020 (00 : 01 AM)   


حاجن میں طبی ٹیمیں خیمہ زن،جراثیم کش ادویات کا چھڑکائو

متاثرین کے17قریبی رشتہ دار نگرانی میں، تین مشتبہ افراد سکمزمنتقل

سرینگر//با نڈ ی پورہ ضلع کے حاجن علاقے میں کورونا وائرس سے چار افراد کے ٹیسٹ مثبت آنے کے بعد انتظامیہ نے حاجن میں طبی ٹیموں کو روانہ کیا جنہوں نے 1000کے قریب گھرانوں میں جاکرلوگوں کی سکریننگ کی اور پور ا قصبہ سینی ٹا ئز کیا گیا۔ اس دوران متاثرین کے45 قریبی رشتہ داروںاورانکے ساتھ قریبی روابط رکھنے والے17 نوجوانوں کو نگرانی میں رکھا گیا ہے جبکہ تین مشتبہ افراد کو سکمز منتقل کیا گیا۔حاجن میں داخل ہونے کیلئے تمام پوائنٹ سیل کئے گئے ہیں اور کسی کو بھی اند ر یا باہر جانے کی اجازت نہیں دی جارہی ہے۔ ڈپٹی کمشنر بانڈ ی پورہ ، ایس ایس پی اور سی ایم او کے علاوہ محکمہ صحت کی تین ٹیمیں حاجن پہنچیں جبکہ صحت ، مال ، پولیس محکموںاور میونسپل کمیٹی کے اہلکار قصبہ میں خیمہ زن ہیں جہاں انہوںنے سکریننگ کا عمل شروع کیا۔ ان امدادی ٹیموں نے متاثرین کی رہائش گاہوں کے گرد ونواح میں پر ہ محلہ ، بونہ محلہ ، ڈانگر محلہ اور دیگرمحلہ جات میں گھر گھر جاکریہاںرہائش پذیر لوگوں سے تفاصیل طلب کیں۔طبی ٹیم کی نگرانی کرنے والے ایک ڈاکٹر نے بتایا کہ 300افراد کی نشاندہی کی گئی ہے جنہوں نے کورونا وائرس سے متاثرہ شخص کے شوہر کے ساتھ ہاتھ ملایا تھا یا گلے ملے تھے ۔ ان ٹیموں نے گھر گھر جاکر کورنا وائرس سے متاثرین کے ساتھ رابطوں کی تفاصیل جمع کیں ۔ٹیم میں شامل ایک ڈاکٹر نے بتایاکہ اگرچہ مجموعی طور پر ان علاقوں میں زیادہ لوگوں نے متاثرین کے رشتہ داروں کے ساتھ رابطہ نہیں کیا ہے تاہم انہوں نے تبلیغی جماعت سے وابستہ ہونے کے ناطے درجنوں لوگوں سے ہاتھ ملایا یا پھر بغلگیر ہوئے ہیں۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ متاثرین کے45 قریبی رشتہ داروں کوقرنطینہ مرکز انڈور سٹیڈ یم شادی پورہ میں رکھاگیا ہے جہاں اُن کے خون کے نمونے حاصل کرکے تشخیص کیلئے بھیجے جائیں گے۔بلاک میڈیکل افسر حاجن ڈاکٹر نثا ر احمد کے مطابق متاثرین کے ساتھ قریبی روابط رکھنے والے17 نوجوانوں کو ڈگر ی کالج سمبل میں نگرانی میں رکھا گیا ہے جبکہ تین کو سکمز منتقل کیا گیا جن میں سے دو کا تعلق بنگر محلہ حاجن اور ایک کا صدر کوٹ بالا سے ہے۔ اس دوران جمعرات کو میونسپل کمیٹی نے دن رات قصبہ کے15 محلوں میں سڑکوں ، مسا جد، رہاء شی مکانوں او ر دکانوں پرجراثیم کش ادویات کا چھڑکائو کیا ۔ اس دوران علاقہ میںجگہ جگہ پانی کی ٹینکیاں، صابن اور سینی ٹائزردستیاب رکھے گئے ہیں ۔ میونسپل کمیٹی حاجن کے چیئرمین ڈاکٹر ارشاد کی قیاد ت میں حاجن کے پر ہ محلہ ، ڈانگر محلہ، پرے محلہ، بنگر محلہ، محلہ شکر الدین،بونہ محلہ ، میر محلہ اور سید محلہ میں قائم رہائشی مکانوں، مساجد، گلی کوچوں ، سڑ کوں اور دکانوں پرجراثیم کش ادویات کا چھڑکائو کیا گیا ۔اس کے علاوہ ان علاقوں کی صفائی دستھرا ئی بھی کی گئی۔
 
 

طبی و نیم طبی عملہ کورو ناوائرس کیخلاف جہاد میں مصروف

 کشمیر چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹریزنے ہر تعاو ن کا یقین دلایا

سرینگر// کشمیر چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹریزنے طبی و نیم طبی عملے کو سلام پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ عالمی سطح پر وبا ء قرار دئے گئے کورو ناوائرس کے خلاف وہ محدود وسائل کے باوجود حقیقت میں جہادکر رہے ہیں۔ کے سی سی آئی کا کہنا ہے کہ اپنی زندگیوں کو خطرے میں ڈال کر طبی و نیم طبی عملہ عام لوگوں کیلئے صحت ایڈوئزریاں جاری کرنے میں بھی پیش پیش ہیں۔ایک بیان میں انجمن نے بتایا کہ بہ حیثیت تاجر اور کاروباری طبقہ یہ انکی ذمہ داری ہے کہ طبی و نیم طبی عملے کی سلامتی کیلئے وہ مالی و اخلاقی مدد کریں۔انجمن نے ڈاکٹرس ایسو سی ایشن سے بھی درخواست کی کہ وہ اُنہیں اس بات سے متعلق مطلع کریں کہ سماج کے یہ ہیرو کورو نا وائرس کا مقابلہ کرنے کیلئے وہ حفاظتی ساز و سامان سے لیس ہیں کہ نہیں۔کشمیر چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹریز کے جنرل سیکریٹری کا کہنا ہے کہ اگر طبی و نیم طبی عملے کو ان چیزوں کی قلت کا سامنا ہے تو اس نازک موڑ پر وہ اُن کی ہر ممکن مدد کرنے کیلئے تیار ہیں۔انہوں نے حکومت پر زور دیا کہ معالجین اور نیم طبی عملے کو حفاظتی اعتبار سے تمام لازمی ساز و سامان سے لیس کرے۔
 

 بانہال میں کوئی ڈھیل نہیں دی گئی

 چار متاثرین کا قصبے میں قیام باعث تشویش: انتظامیہ

محمد تسکین
 
بانہال //کرونا وائرس سے بچاؤ کی تدابیر کے تحت لاک ڈاؤن کا سلسلہ ضلع رام بن علاقوں میں جمعرات کو بھی نہایت ہی سختی کے ساتھ جاری رہا تاہم جموں سرینگر شاہراہ پر واقع بانہال قصبہ میں کرفیو کا نفاذ رہا ۔ جمعرات کو تیسرے روز بھی قصبہ بانہال میں لاک ڈاؤن سے مستثنیٰ کسی بھی دکان کو کھولنے کی اجازت نہیں دی گئی جس پر حکام کا کہنا ہے کہ گزشتہ روز کرونا وائرس کے جو افرادمثبت پائے گئے اُن چاروںافراد نے  دہلی سے واپسی پرریلوے سٹیشن بانہال کے پاس موجود مسجد میں رات گزاری تھی۔قصبے میںاشیائے ضروریہ کیلئے مخصوص دکانوں کوکھولنے کی اجازت نہیں دی گئی جس کی وجہ سے بہت سارے لوگوں کو ضروری چیزوں کے حصول میں سخت دشواریوں کا سامنا کرنا پڑا تاہم ادویہ فروش کھلے تھے ۔اس دوران رام بن میں ایک گھنٹہ کی ڈھیل دی گئی۔انتظامیہ کے ایک افسر نے کہا کہ قصبے میں بندشوں کی وجہ بانڈی پورہ کے متاثرین کی ہے کیونکہ انہوں نے ریلوے سٹیشن کے پاس موجود مسجد میں رات گزاری ہے ۔مذکورہ افسر نے کہا کہ اُن (متاثرین)کے رابطے میں کئی لوگ آئے ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ مسجد کے امام سے رابط قائم کیا گیا لیکن وہ کوئی مثبت جواب نہ دے سکے اور ریلوے سٹیشن کے اس پاس کی گئی تحقیق سے بھی پولیس اور حکام کو کوئی خاص مدد نہیں مل پائی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ریلوے سٹیشن بانہال کے نزدیک مسجد کو نمازیوں کیلئے بند کردیا گیا ہے جبکہ امام کو اپنے گھر میں بیٹھنے کیلئے کہا گیا ہے اور پورے علاقے میں آگاہی کی گئی ہے کیونکہ اس وقت عوامی زندگی ان کیلئے سب سے اہم ہے۔
 

مزدور طبقہ کی امداد کیلئے آگے آئیں

صدرِ جمعیت کی اہل خیر حضرات سے اپیل

سرینگر// جمعیت اہلحدیث کے صدرپروفیسر غلام محمد بٹ المدنی نے اہل خیر حضرات سے اپیل کی ہے کہ بلا لحاظ مسلک و ملت انسانیت کی بنیاد پر بے بس مزدور پیشہ افراد کی حتی المقدور امدادکریں۔انہوں نے کہا کہ محکمہ صحت کی طرف سے جاری کردہ ہدایات پر مکمل عمل کرنا وقت کی اشد ضرورت ہے۔صدر جمعیت نے گذارش کی کہ غفلت پرتنے سے باز رہیں اور ایک دوسرے کو صحیح پیغام دیکر اپنی ذمہ داری نبھائیں۔
 

دہشت کے بجائے احتیاط سے کام لیں:مولانا قمی

مذہبی اجتماعات فی الحال ترک کریں

سرینگر//پیروان ولایت نے کورونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کیلئے تمام سماجی اورمذہبی اجتماعات کو معطل کرنے کا اعلان کیا ہے۔تنظیم کے سربراہ مولانا سبط محمد شبیر قمی نے ایک بیان میں کہا ہے کہ کوروناوائرس کا مقابلہ کرنے کیلئے خوف و دہشت کے بجائے احتیاطی تدابیر کو عمل میں لایا جائے۔انہوں نے کہا کہ محکمہ صحت اور علماء کی ہدایات پر عمل پیرا ہوکر اس وباء کو صفحہ ہستی سے مٹایا جاسکتا ہے لہٰذا اس وقت ہمارا اولین فرض یہ ہے کہ اپنے گھروں میں قیام کرکے ہدایات پر مکمل عمل کریں۔مولانا موصوف نے جموں و کشمیر کے عوام اور ذمہ داروں سے اپیل کی ہے کہ اس خطرناک وباء پر قابو پانے کیلئے فی الحال تمام مذہبی اجتماعات ترک کریں۔انہوں نے مفتی اعظم جموں کشمیر اور دیگر مذہبی تنظیموں کی طرف سے لئے گئے فیصلوں کا خیرمقدم کیا ہے۔
 

گھروں میں بیٹھیں :جمعیت ہمدانیہ

انتظامیہ سے تعاون کریں

 سرینگر//جمعیت ہمدانیہ کے سربراہ مولانا ریاض احمد ہمدنی نے موجودہ عالم گیر وباء سے محفوظ رکھنے کے لئے قرآن و حدیث پرمکمل عمل کریں۔انہوں نے کہا کہ ہر وقت توبہ و استغفارکرنے کے ساتھ ساتھ اللہ کے حضورسربسجود ہوجائیں۔انہوں نے عوام سے اپیل کی انتظامیہ کو اپنا تعاون دیں اورگھروں میں ہی بیٹھنے کو ترجیح دیں۔
 

بارہمولہ پولیس کا لوگوں سے تعاون دینے کی اپیل

فیاض بخاری
 بارہمولہ //کورونا وائرس کے سلسلے میں احتیاتی تدابیر کے پیش نظرایس ایس پی بارہمولہ عبدالقیوم نیکہا کہ گھر میں رہنا نہ صرف کسی فرد کے لئے محفوظ ہے بلکہ پورے معاشرے ، برادری ، ریاست اور ملک کے لئے بھی ہے۔ ایس ایس پی نے کہا کہ کورونا وائرس کی وجہ سے سب سے زیادہ اموات اٹلی میں ہوئی ہیں جو صحت کی دیکھ بھال میں دوسرے نمبر پر ہیں اور ہم ان سے بہت دور ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس بیماری کی روک تھام کیلئے ، ہم سب کو گھر پر رہنے اور سلامت رہنے کے لئے کہنا چاہتے ہیں ، ہم آپ کی ، آپ کے کنبہ اور پورے معاشرے کی دیکھ بھال کرتے ہیں۔انہوں نے مزید کہا’’ میں نے آج بہت سے بوڑھے لوگوں سے درخواست کی جو سڑکوں پر تھے ، لیکن بدقسمتی سے انہوں نے اپنے جواب میں کہا کہ ہمیں پریشانی کی کوئی بات نہیں ، ہمارے ساتھ کچھ نہیں ہوگا ‘‘۔انہوں نے کسی قسم کی پریشانی کی صورت میںان نمبرات 9596767717 0195223441,0 اور9596767704 پر رابطہ کرنے کی گذارش کی۔
 
 

ہندوارہ اور کرالہ پورہ میں جانکاری مہم 

اشرف چراغ 
 
کپوارہ//کورنا وائرس کے بڑھتے خطرات کے پیش نظر جہا ں انتظامیہ کی جانب سے لاک ڈائون میں سختی لائی گئی اور لوگو ں کو اپنے گھرو ں میں رہنے کی ہدایت دی جارہی ہے وہیں جمعرات کو کرالہ پورہ اور ہندوارہ میں طبی و نیم طبی ٹیمو ں نے متعدد علاقوں کا دورہ کر کے وہا ں لوگو ں کو اس مہلک وباء سے بچنے کے لئے جانکاری فراہم کی ۔بلاک میڈیکل آفیسر کرالہ پورہ ڈاکٹر محمد شفیع میر نے کشمیر عظمیٰ کو بتا یا کہ بلاک کرالہ پورہ میں گزشتہ کئی روز سے طبی ٹیموں کو مختلف علاقوں میں روانہ کیا گیاتاکہ لوگو ں کو اس وباء سے بچنے کے لئے جانکاری فراہم کی جائے۔لوگوں کوطبی ٹیموں کے ساتھ ساتھ ضلع انتظامیہ کی جانب سے جاری کردہ احکامات پر سختی سے عمل کرنے کی ضرورت پر دیا گیا۔اس دوران ہندوارہ کے راجواڑ علاقے میں بھی ڈاکٹروں کی ٹیمو ں نے گھر گھر جاکر لوگو ں کو کورنا وائرس سے احتیاط برتنے کی تدابیر اپنانے پر زور دیا ۔
 
 

کشمیری طلاب کی گھر واپسی کیلئے نوڈل افسر مقرر کیا جائے :الطاف ٹھاکر

 سرینگر //بھارتیہ جنتا پارٹی کے ترجمان الطاف ٹھاکر نے ایل جی حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ بیرون ریاستوں میں پھنسے کشمیریوں کو واپس لانے کیلئے ایک نوڈل افسر کومقرر کیا جائے تاکہ انہیں ہوائی سروس کے ذریعے کشمیر پہنچایا جا سکے ۔انہوں نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ بیرون ریاستوں میں کافی کشمیر پھنسے ہوئے ہیں ،جنہیں وہاں مصائب کا سامنا ہے ۔انہوں نے کہا کہ کالج بند ہونے کے بعد یہ طلاب اپنے گھروں کو لوٹنا چاہتے ہیں اور ان کی واپسی کیلئے ایک نوڈل افسر تعینات کر کے انہیں ہوائی سروس کے ذریعے کشمیر لایا جائے ۔ٹھاکر نے کہا کہ بند کی وجہ سے ایسے طلاب کو مناسب غذا نہیں مل پا رہا ہے ۔انہوں نے کہا کہ سہارنپور کی ایک یونیورسٹی کے پانچ طالب علم حکومت سے مدد کے طلبگار ہیں ۔انہوں نے کہا کہ بہت سے طلاب دہرادون ، چندی گڑھ کے علاوہ دوسرے حصوں میں درماندہ ہیں، جنہیں سخت مشکلات کا سامنا ہے۔ انہوں نے حکام سے کہاکہ ایسے طلاب کے مسائل کو دیکھنے کیلئے ایک نوڈل افسر مقر ر کیا جائے اور انہیں ہوائی سروس کے ذڑیعے واپس لایا جائے ۔ 
 

تازہ ترین