مسافر گاڑیوں پر پابندی اور طبی مراکزمیں عملے کی کمی

رام بن ضلع کے کئی علاقوں میں مریضوں کو دشواریوں کا سامنا

24 مارچ 2020 (00 : 01 AM)   
(      )

محمد تسکین
بانہال// ضلع رام بن میں مسافر گاڑیوں پر مکمل بندشوں اور دیہی علاقوں میں طبی مراکز کی ابتر حالت کی وجہ سے ضلع کے کئی دیہات میں آباد ہزاروں لوگوں کو سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے اور مریضوں کے علاج ومعالجہ کیلئے ان کے تیمارداروں کو دشواریوں کا سامنا ہے۔ ٹرانسپورٹ نہ ہونے کی وجہ سے سب ڈویژن رامسو کے نیل علاقے میں پندرہ ہزار سے زائد آبادی محصور ہے اور علاقے میں کئی سب سینٹروں میں ڈاکٹر نہ ہونے کی وجہ سے عوام کیلئے بے معنی ہیں اور معمولی تکالیف کیلئے لوگوں کا رام بن پہنچنا انتہائی مشکل ہے۔ نیل کے سرنگہ علاقے میں ایک سب سینٹر کئی سال پہلے قائم کیا گیا ہے لیکن پچھلے ایک مہینے سے یہ سب سینٹر مسلسل بند پڑا ہے اور نیل سرنگہ کی عوام کو اس سے کوئی فائدہ نہیں پہنچ رہا ہے۔ مشتاق احمد نامی ایک مقامی شہری نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ سب سینٹر سرنگہ کا طبی مرکز عملہ نہ ہونے کی وجہ سے پچھلے ایک مہینے سے بند پڑا ہے اور اس سلسلہ میں بلاک میڈیکل افسر اکڑہال اور چیف میڈیکل افسر رام بن کو اطلاع کی گئی ہے لیکن گھر کی دہلیز پر طبی سہولیات بہم پہنچانے کے سرکاری دعوے سراب ثابت ہورہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ وادی نیل کے علاوہ یہی صورتحال پوگل پرستان، سینابتی، اہمہ ، دردہی ، اگلین ، سوجمتنہ، دھنمستہ، دردن باٹ ، سمبڑھ اور النباس وغیرہ کے دیہات میں قائم طبی مراکز کا ہے۔
 

تازہ ترین