مزید خبرں

تاریخ    9 جون 2019 (00 : 01 AM)   


آشاورکروں کا مشاہرہ آندھرا کے طرز پر کرنے کا مطالبہ 

نیوز ڈیسک
 
جموں //سنٹر آف انڈین ٹریڈ (CITU) ،جے اینڈ کے نے ا ٓندھر ا پردیش میں جگن موہن ریڈی کی قیادت والی نو منتخبہ سرکار نے آشا ورکروں کا ماہانہ مشاہرہ .10000/ روپے کرنے کے فیصلہ کی ستائش کی ہے۔ایک بیان کے مطابق  CITU لیڈر شام پرساد کیسر کی قیادت میں منعقدہ ایک اجلاس میں ریاست کے گورنر سے ریاست کی آشا ورکروں کا ماہانہ مشاہرہ آندھرا پردیش کی آشا ورکروں کے برابر کرنے کا مطالبہ کیا ہے، جن کا ماہانہ مشاہرہ دس ہزار روپے کر دیا گیا ہے۔یہ بات قابل ذکر ہے کہ آشا ورکر اپنے فرائض اور ذمہ واریاں انتھک انجام دے رہے ہیں جسکی وجہ سے ریاست میں IMR شرح میں بہتری آئی ہے۔اجلاس میں بتایا گیا کہ آشا ورکروں کا مطالبہ ہے کہ انکی وردی  Purpleرنگ کی ہونی چاہیے ،جس پر ایڈمنسٹریٹو محکمہ کی جانب سے غور کرنے کی ضرورت ہے۔اجلاس میں گورنر انتظامیہ پر زور دیا گیا کہ ایسا ایک طریقہ کار تیار کیا جائے ،تاکہ آشا ورکرں کو ماہانہ مشاہرہ ماہانہ کی نبنیادوں پر با قاعدگی سے ادا کی جائے ،تاکہ انک ومشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑے۔
 
 

نیسلے انڈیانے صفائی مہم کا اہتمام کیا 

جموں // نیسلے انڈیا نے ورلڈ اوشنز ڈے کے موقعہ پر دنیا بھر میںصفائی مہم کا اہتمام کیا ۔ ایک بیان کے مطابق نیسلے انڈیا فیکٹری اور برانچوں کے نزدیک قصبوں میں نیسلے نے تقریباً  2000رضا کاروں نے شرکت کی۔رضا کاروں میں نیسلے انڈیا کے ملازمین ، انکے اہل خانہ ،این جی او شریک، تقسیم کاری شریک، سپلائرز اور اہلکار شامل تھے۔اس منفرد پہل پر تبصرہ کرتے ہوئئے نیسلے انڈیا کے چیئر مین و منیجنگ ڈائریکٹر سریش نرائن نے کہا کہ عالمی یوم بحر ہمیں قدرتی وسائل کا تحفُظ کرنے اور انہیں بچانے کیلئے ایک منفرد موقعہ فراہم کرتا ہے۔انہوں نے کہا کہ ذاتی طور سے اس نے اپنے دفتر ،گھر میں پلاسٹک کے استعمال کی کھپت کم کر دی ہے اور کہا کہ ہم بطور ایک آرگنائزیشن اس میں فرق دکھا سکتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ان مواقعوں سے ہمیں جانکاری ملتی ہے اور اس سے لوگوں کے برتائو میں بدلائو بھی لایا جا سکتا ہے۔انہوں نے کہا کہ ہمیں ماحول دوستانہ کیلئے اکٹھا ہو کر کام کرنا ہوگا اور یقینی بنائیں کہ ہماری ہمسائیگی پلاسٹک کے مسئلہ سے پاک ہو۔صفائی مہم کے لئے رضا کاروں کو متعدد گروپوں میں تقسیم کیا گیا تھا،تاکہ کوڈا کرکٹ اکٹھا کیاجا سکے۔پروگرام کے اختتام پر کوڈا کرکٹ پراسیسینگ سہولیت کیلئے بھیجا گیا اور ذمہ واری سے ٹھکانے لگایا گیا۔
 

پنتھرس سربراہ کا امن کے دشمنوں کو جواب

جموں//نیشنل پنتھرس پارٹی کے سرپرست اعلی پروفیسر بھیم سنگھ نے ہندستان کے صدر رامناتھ کووند سے جموں وکشمیر خاص طورپر وادی کشمیر میں امن کے دشمنوں کے ذریعہ اپنے ذاتی مفاد کے لئے پیدا کی گئی موجود صورتحال کے تعلق سے قومی یکجہتی کونسل کی ہنگامی میٹنگ طلب کرنے کی درخواست کی ہے۔پنتھرس سربراہ پروفیسر بھیم سنگھ نے صدر پر زور دیا کہ جو لوگ اقتدار، مقامی لوگوں کے استحصال اور قومی قیادت کو دھمکانے کے لئے جموں وکشمیر کی سیاسی صورتحال سے فائدہ اٹھا رہے ہیں ضروری ہوگیا ہے کہ انہیں آئین اور قانون کے مطابق سبق سکھایا جائے۔انہوں نے صدر سے درخواست کی کہ فوری طور پر آرڈی ننس کے ذریعہ جموں وکشمیر کے قوانین میں ترمیم کی جائے جس سے جموں وکشمیر کے لوگ پر امن ماحول میں رہ سکیں اور ہندستانی آئین میں دیئے گئے تمام آئینی اور بنیادی حقوق کا فائدہ انہیں حاصل ہوسکے۔ پنتھر س سپریمو نے کہاکہ صدر کو  آرٹیکل 370کے تحت اس کا اختیار حاصل ہے کہ وہ جموں وکشمیر کے نام نہادآئین میں، جو جموں وکشمیر کے لوگوں پر ہندستانی آئین کے مساوی تھوپا گیا ہے، ترمیم کرسکیں ۔ انہو ں نے کہا کہ جموں وکشمیر آئین کے سیکشن 47کو فوری طورپر عمل میں لانے کی ضرورت ہے  اور جموں وکشمیر میں نافذ صدر کے دوران صدر ہی واحد اتھارٹی جو جموںوکشمیر آئین کے کسی بھی التزام میں تبدیلی /ترمیم/اضافہ کرسکتے ہیں۔انہوں نے صدر سے اگر انہیں محسوس ہوتاہے اس بیان میں کچھ خامی ہے تو وہ قومی یکجہتی کونسل کی ایک میٹنگ رکھیں جس میں تمام تسلیم شدہ سیاسی جماعتوں کے نمائندے جموں وکشمیر کے درجہ کے تعلق سے جلد او رمناسب فیصلہ کرسکیں جس سے جموں وکشمیر سے کنیا کماری تک تمام کے لئے ایک ہی پرچم ، ایک ہی آئین اور بنیادی حقوق ہوں۔
 

بھارتی شکھشا سمتی کا پرچار وبھاگ ورکشاپ شروع

تعلیم کو فروغ دینے کے لئے میڈیا کی اشد ضرورت 

جموں //بھارتی شکھشاسمتی ،جے اینڈ کے کی جانب سے یہاں ہفتہ کے روز دو روزہ  پرچار وبھاگ ورکشاپ شروع ہوا ہے،جسکی افتتاحی تقریب نرائن بھون ،امبپھلا میں کی گئی۔کھشتریہ پرچار پرمکھ راجندر جی اس موقعہ پر مہمان خصوصی اور ورکشاپ کے ریسورس پرسن بھی تھے۔ بھارتیہ شکھشا سمتی کے صدر وید جی اور سینئر صحافی ودے بھاسکر بھی اس موقعہ پر موجود تھے۔پروگرام کا آغاز رواعتی لیمپ روشن کرکے اور سرسوتی وندنا سے کیا گیا۔اپنے افتتاحی تقریر میں راجندر نے سماج اور خصوصاً تعلیم کے فروغ میں میڈیا کے رول کو اجا گر کیا۔انہوں نے کہا کہ میڈیا میں بہت سے منفی چیزوں کی رپورٹنگ کو دیکھ کر دکھ ہوتا ہے، اسلئے ضرورت ہے کہ مثبت چیزوں کو منظر عام پر لایا جائے۔انہوں نے کہا کہ ودیابھارتی  دنیا بھر میںایک غیر سرکاری تعلیمی سوسائٹی ہے ،جو طلاب کو مہذب بنانے کیلئے بھارت پر مبنی تعلیم فراہم کر رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ جے اینڈ کے میں پرچار کو مستحکم کرنے کیلئے یہ اپنے قسم کا پہلا ورکشاپ ہے،جس میں طلاب کو میڈیا کی جانکاری دی جاتی ہے۔انہوں نے شرکا سے میڈیا اہلکارں کے ساتھ رابطہ کرنے اور انہین باقاعدگی سے بھارتیہ شکھشا سمتی کی جانب سے سکولں میں مثبت سرگرمیوں کی جانکاری فراہم کرنے کو کہا۔پروگرام میں نظامت کے فرائض پرچار پرمکھ ڈاکٹر و ویک شرما نے انجام دئے ،ریاستی آرگنائزنگ سیکرٹری پردیپ ، خزانچی ستیش متل، ہری بھوشن  اور ڈاکٹر نریش شرما کے علاوہ پرچار وببھاگ کے دیویندر پادھہ، امت شرما ، سبھازش ورما ، وکرانت سنگھ ، اور اتل بھی اس موقعہم پر موجود تھے۔
 
 

تازہ ترین