تازہ ترین

بانڈی پورہ میں 2غیر ملکی ملی ٹینٹ ہلاک

گڈورہ پلوامہ میں پولیس کانسٹیبل کو گھر کے باہر جاں بحق کیا گیا

تاریخ    14 مئی 2022 (00 : 01 AM)   


عازم جان +شاہد ٹاک
 بانڈی پورہ +پلوامہ //بانڈی پورہ کے آرہ گام جنگلاتی علاقے میں گذشتہ روز فرار ہونے والے 2ملی ٹینٹ مارے گئے۔ادھر پلوامہ کے مضافاتی گائوں میں ملی ٹینٹوں نے ایک پولیس کانسٹیبل کو گولیاں مار کر ہلاک کردیا۔

بانڈی پورہ

پولیس بیان کے مطابق پولیس اور 13آر آر نے بانڈی پورہ کے برار آرہ گام علاقے میں ایک انسداد دہشت گردی آپریشن میں حال ہی میں کالعدم ایل ای ٹی کے دراندازی کرنے والے 2 غیر ملکی  ملی ٹینٹوں کو بے اثر کر دیا۔ یہ دونوں بانڈی پورہ کے  سریندر جنگلاتی علاقے میں 11مئی کو ہوئے آپریشن میں فرار ہو گئے تھے۔پولیس لشکر طیبہ کے ایک مقامی ملی ٹینٹ لطیف راتھرعرفاسامہ کا سراغ لگا رہی تھی جو سرینگر اور بڈگام میں گزشتہ دو ماہ سے دہشت گردی کے واقعات میں ملوث تھا۔ ایک ہفتہ قبل بانڈی پورہ کے علاقے سریندر میں لطیف راتھر کی نقل و حرکت کی تصدیق ہوئی تھی جہاں وہ لشکر طیبہ کے ایک تازہ دراندازی گروپ کو لینے گیا تھا۔ ان کی موجودگی / نقل و حرکت کو محسوس کیا گیا اور بانڈی پورہ پولیس کے ساتھ اشتراک کر کے 11/5/22 کو آپریشن شروع کیا گیا جس کے نتیجے میں ایک مقامی  ملی ٹینٹ ضلع بارہمولہ کے گلزار احمد گنائی کی ہلاکت ہوئی۔جبکہ دیگر 2  مذکورہ تصادم کی جگہ سے فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے۔ تاہم، پولیس ٹیم فرار ہونے والے مذکورہ ملی ٹینٹوں کے قدموں کے نشانات کی پیروی کرتی رہی، جن کی موجودگی کی تکنیکی طور پر بڈگام کے چاڈورہ علاقے میں تصدیق کی گئی تھی، جہاں کل 12/05/22 کو دہشت گردی کا واقعہ پیش آیا تھا۔ اس کے بعد آج 13/5/22 کو بانڈی پورہ کے آرہ گام علاقے برارمیں ان کے قدموں کے نشانات کی دوبارہ تصدیق ہوئی۔ اس کے مطابق پولیس بانڈی پورہ کے ساتھ معلومات کا اشتراک کیا گیا اور ان کی طرف سے 13  آر آرکے ساتھ آپریشن شروع کیا گیا جس کے نتیجے میں لشکر طیبہ کے دو غیر ملکیوں کو ہلاک کیا گیا جن کی شناخت فیصل عرف سکندر عرفمحسن ساکن پاکستان اور اوکاشا ساکن پاکستان کے طور پر کی گئی۔ جبکہ لطیف راتھر عرفاسامہ کی تلاش جاری ہے۔انکانٹر کے مقام سے مجرمانہ مواد، اسلحہ اور گولہ بارود برآمد کیا گیا۔

پلوامہ

پلوامہ میں مشتبہ ملی ٹینٹوںنے ایک پولیس اہلکار کو گھر کے باہرگولی مار کر ہلاک کردیا ۔ پولیس نے بتایا کہ جمعہ کی صبح 8بجکر 25منٹ پرملی ٹینٹوں کے ہاتھوں  24گھنٹوں میں دوسری ٹارگیٹ کلنگ ہوئی ۔ گڈورہ پلوامہ میں پولیس کانسٹیبل ریاض احمد ٹھوکر اپنی رہائش گاہ  میں موجود تھا، جسے 2ملی ٹینٹوں نے باہر آنے کیلئے کہا اور جونہی وہ گھر سے باہر آیا تو اس پر نزدیک سے گولیاں چلائیں گئیں اور وہ فرار ہوئے۔ ریاض احمد شدید زخمی ہوا اور لوگوں نے پولیس کے مطلع کرکے بعد میں اسے سرینگر منتقل کیا جہاں اسے فوجی اسپتال بادامی باغ لیا گیا۔ اسکی حالت بہت نازک تھی اور  بعد دوپہر وہ زخموں کی تاب نہ لا کر دم توڑ بیٹھا۔پولیس نے بتایاکہ واقع کے فورا بعد پولیس، فوج اور فورسز کی بھاری نفری نے علاقے میں گھر گھر تلاشی شروع کردی ہے تاکہ حملہ آوروں کو پکڑ ا جاسکے ۔ریاض کی دو بیٹیاں ہیں۔ جب اسکی لاش گھر لائی گئی تو وہاں کہرام مچ گیا۔ اس سے قبل ڈسٹرکٹ پولیس لائنز پلوامہ میں ریاض  کو خراج عقیدت پیش کرنے کیلئے تقریب منعقد ہوئی جس میں ضلع کے سیول و پولیس افسران موجود تھے۔بعد میں سرکاری اعزاز کیساتھ انکی لاش گڈورہ لائی گئی جہاں سینکڑوں لوگ انکے آخری سفر میں شریک ہوئے۔