تازہ ترین

ہندوستانی معیشت وبائی امراض کے بعد رفتار پکڑ رہی ہے | 73ویں یوم جمہوریہ کے موقع پر صدرکووند کا قوم کے نام خطاب

تاریخ    26 جنوری 2022 (00 : 01 AM)   


نیوز ڈیسک
نئی دہلی//صدر رام ناتھ کووند نے منگل کو کہا کہ مرکزی اور ریاستی حکومتوں کی کوششوں اور پالیسی اقدامات کی وجہ سے ہندوستانی معیشت کووڈ-19 کی وبا کے جھٹکے سے ابھرتے ہوئے رفتار پکڑ چکی ہے اور ہندوستانی معیشت کی موجودہ مالی سال میں شرح نمو موثر رہے گی وہیں مرکزی حکومت تمام شعبوں میں مسلسل بہتری لانے اور ضرورت کے مطابق امداد فراہم کرنے کے لیے سرگرم ہے ۔73 ویں یوم جمہوریہ کے موقع پر ٹیلی ویژن اور ریڈیو پر قوم سے اپنے خطاب میں مسٹر کووند نے عوام سے اپیل کی کہ وہ کووڈ-19انفیکشن سے بچنے کے لیے پوری احتیاط برتیں، یہ کہتے ہوئے کہ یہ بحران ابھی ختم نہیں ہوا ہے ۔ انہوں نے کووڈ-19 کی ویکسین تیار کرنے سے لے کر اس عالمی وبائی مرض سے نمٹنے میں ہندوستان کی کوششوں کی تعریف کی۔صدر نے کہاکہ ‘‘خطرناک وبا کے بحران کی اس گھڑی میں ہم نے دیکھا ہے کہ ہم تمام ہم وطن کس طرح ایک خاندان کی طرح جڑے ہوئے ہیں۔ ڈاکٹروں، نرسوں اور طبی عملے نے مشکل حالات میں طویل گھنٹوں تک کام کر کے ، یہاں تک کہ مریضوں کی دیکھ بھال کے لیے اپنی جانیں خطرے میں ڈال کر انسانیت کی خدمت کی ہے ۔ بہت سے لوگوں نے اس بات کو یقینی بنایا ہے کہ ضروری سہولیات دستیاب ہوں اور ملک میں سرگرمیاں آسانی سے جاری رکھنے کے لیے سپلائی چین میں خلل نہ پڑے ۔ مرکزی اور ریاستی سطح پر سرکاری ملازمین، پالیسی سازوں، منتظمین اور دیگر کی طرف سے بروقت اقدامات کیے گئے ہیں۔صدر نے کہا کہ انہیں یہ جان کر خوشی ہوئی کہ ہمارے کسانوں بالخصوص نوجوان کاشتکار جن کے پاس چھوٹے کاروبار ہیں، نیچرل کاشتکاری کو جوش و خروش سے اپنا رہے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ کورونا وائرس کے خلاف انسانیت کی جدوجہد ابھی جاری ہے ۔ اس وبا میں ہزاروں لوگ اپنی جانیں گنوا چکے ہیں۔ پوری دنیا کی معیشت کو نقصان پہنچا ہے ۔ نئے ویریئننٹ کی وجہ سے یہ وائرس نئے بحرانوں کو پیش کر رہا ہے ۔ یہ صورت حال بنی نوع انسان کے لیے ایک غیر معمولی چیلنج ہے ۔انہوں نے بتایا کہ آبادی زیادہ گھنی ہونے کی وجہ سے ہندوستان میں وبا سے نمٹنا زیادہ مشکل ہوگا۔ لیکن ایسے مشکل وقت میں یہ ہوتا ہے کہ قوم کی لڑنے کی صلاحیت چمک اٹھتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ میں یہ کہتے ہوئے فخر محسوس کر رہا ہوں کہ ہم نے کورونا وائرس کے خلاف غیر معمولی عزم اور کارکردگی کا مظاہرہ کیا ہے ۔ ہم نے دیسی ویکسین تیار کیں اور دنیا کی تاریخ کی سب سے بڑی ویکسینیشن مہم شروع کی۔ یہ مہم تیز رفتاری سے جاری ہے ۔ ہم نے کئی ممالک کو ویکسین اور دیگر طبی سہولیات فراہم کی ہیں۔ عالمی تنظیموں نے ہندوستان کے اس تعاون کو سراہا ہے ۔مسٹر کووند نے کہا کہ 21ویں صدی کو آب و ہوا کی تبدیلی کے دور کے طور پر دیکھا جا رہا ہے اور ہندوستان نے قابل تجدید توانائی کے لئے اپنے جرات مندانہ اور پرجوش اہداف کے ساتھ عالمی سطح پر قائدانہ مقام حاصل کیا ہے ۔ گزشتہ سال جون میں کانپور دیہات ضلع میں اپنے گاؤں کے تجربات کا اشتراک کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ کامیاب لوگوں کو محنت اور قابلیت کے ساتھ اپنی جائے پیدائش اور ملک کی ترقی میں اپنا حصہ ڈالنے کی تلقین کی۔مسلح افواج میں خواتین کی شمولیت کو بڑھانے کے لیے کیے جانے والے نئے اقدامات کا ذکر کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ "یہ سال مسلح افواج میں خواتین کو بااختیار بنانے کے نقطہ نظر سے خاصا اہم رہا ہے ۔ ہماری بیٹیاں روایتی حدوں کو عبور کیا ہے اور اب خواتین افسران کے لیے نئے شعبوں میں مستقل کمیشن کی سہولت شروع ہو گئی ہے ۔ نیز سینک اسکولوں اور باوقار نیشنل ڈیفنس اکیڈمی سے خواتین کے آنے کی راہ ہموار کرنے سے مسلح افواج کے لیے ٹیلنٹ پول میں اضافہ ہوگا اور ہماری مسلح افواج کو افرادی قوت کے صنفی توازن سے بھی فائدہ ہوگا۔
 
 
 
 

بپن راوت، کلیان سنگھ، کھیمکا کو پدم وبھوشن

نئی دہلی// ملک کے پہلے چیف آف ڈیفنس اسٹاف آنجہانی جنرل بپن راوت اور اتر پردیش کے سابق وزیر اعلیٰ اور راجستھان کے سابق گورنر آنجہانی کلیان سنگھ ، گیتا پریس گورکھپور کے صدر آنجہانی رادھے شیام کھیمکا کو بعد از مرگ ملک کے دوسرے اعلیٰ ترین شہری اعزاز پدم وبھوشن سے نوازا گیا ہے ۔ مہاراشٹرسے کلاسیکی گلوکارہ پربھا اترے کو بھی دوسرے اعلیٰ ترین شہری اعزاز سے نوازا گیا ہے ۔ جبکہ کانگریس لیڈر غلام نبی آزاد ، مغربی بنگال کے سابق وزیر اعلیٰ بدھ دیب بھٹاچاریہ اورانفارمیشن ٹیکنالوجی کی صنعت کی نامور شخصیات ستیہ نڈیلا اور سندر پچائی کو پدم بھوشن سے نوازا گیا ہے ۔  یوم جمہوریہ کے موقع پر حکومت نے 128 شخصیات کو پدم ایوارڈ سے نوازنے کا اعلان کیا۔ ان میں سے چار لوگوں کو پدم وبھوشن، 17 لوگوں کو پدم بھوشن اور 107 لوگوں کو پدم شری سے نوازا جائے گا۔ پدم بھوشن حاصل کرنے والوں میں مسٹر آزاد اور مسٹر بھٹاچاریہ کے علاوہ اداکار وکٹر بنرجی (آرٹس)، گرمیت باوا (آرٹس)، نٹراجن چندر شیکھرن (انڈسٹری)، شری کرشنا ایلا اور محترمہ سچترا ایلا (کمبائنڈ، انڈسٹریز)، محترمہ مدھر جعفری (پاکلا، امریکہ) مسٹر دیویندر جھانجھریا (اسپورٹس)، مسٹر راشد خان (آرٹس)، مسٹر راجیو مہرشی (ایڈمنسٹریشن)، ستیانارائن نڈیلا (انڈسٹری، یو ایس اے )، سندر راجن پچائی (انڈسٹری، یو ایس اے )، سائرس پونا والا (صنعت)، مسٹر سنجے راجارام (بعد از بعد، سائنس، انجینئرنگ، میکسیکو)، محترمہ پرتیبھا رے (ادب)، سوامی سچیدانند (تعلیم اور ادب) اور مسٹر وشیشٹ ترپاٹھی (تعلیم اور ادب) شامل ہیں ۔ 
 
 
 
 

 آر پی ایف کو16تمغے ملے 

نئی دہلی// یوم جمہوریہ کے موقع پرمنگل کے روز ریلوے پروٹیکشن فورس (آرپی ایف) کے ایک پرنسپل چیف سیکورٹی کمشنر کو ممتاز خدمات کے لیے صدارتی پولیس میڈل اور دیگر 15 اہلکاروں کو قابل ستائش خدمات کے لیے پولیس میڈل سے نوازے جانے کا اعلان کیا گیا۔ سرکاری اطلاعات کے مطابق صدر نے آر پی ای/آر پی ایس ایف کے درج ذیل اہلکاروں کو ممتاز خدمات کے لیے صدارتی پولیس میڈل اور قابل ستائش خدمات کے لیے پولیس میڈل سے نوازا ہے ۔ 
 
 

سی بی آئی کے 26ہلکاروں کو ایوارڈ

نئی دہلی// صدر جمہوریہ نے یوم جمہوریہ 2022 کے موقع پر مرکزی تفتیشی ایجنسی (سی بی آئی) کے کل 29 افسران اور اہلکاروں کوپریزیڈنٹ پولیس میڈل اور پولیس میڈل پیش عطا کئے ۔ سی بی آئی کی ایک ریلیز کے مطابق چھ افسران/اہلکاروں کو ممتاز خدمات کے لیے پریزنڈنٹ پولیس میڈل اور 23 دیگر افسران/اہلکاروں کو قابل ستائش خدمات کے لیے پولیس میڈل سے نوازا گیا ہے ۔