تازہ ترین

مزید خبریں

تاریخ    24 جنوری 2022 (00 : 01 AM)   


نیوز ڈیسک

خطہ چناب میں ہفتہ وار کورونا لاک ڈائون مسلسل تیسرے روز بھی نافذ رہا

 عاصف بٹ+محمد تسکین+اشتیاق ملک
کشتواڑ+رام بن+ڈوڈہ//جمعہ بعد دوپہر لگائے گئے ہفتہ وار کورونا لاک ڈائون مسلسل تیسرے روزبھی خطہ چناب میںنافذ رہا۔ضلع کشتواڑمیں ضروری خدمات کی دکانوں کو چھوڑ کر دیگر سبھی دوکانیں وکاروباری مراکز مکمل طور بند رہے تاہم سڑکوں پر گاڑیوں کی آواجاہی دن بھر جاری رہی۔انتظامیہ نے عوام سے بلاجواز گھروں سے نہ نکلنے کی اپیل کررہی ہے تاکہ بڑھتے ہوئے مثبت معاملات پر قابو پایا جاسکے۔ ادھر ضلع رام بن کے تمام قصبوں میں جمعہ کی دوپہر بعد سے نافذ لاک ڈاؤن اتوار کو بھی مسلسل جاری رہا جس کی وجہ سے لاک ڈاؤن اور برفباری سے زندگی اثرانداز ہوئی ہے۔ سرکاری حکمنامے کے بعد بانہال ، کھڑی ، رامسو ، مکرکوٹ، اکڑال ، رام بن ، گول سنگلدان، چندرکوٹ اور بٹوت میں جمعہ کی دوپہر دو بجے سے 64 گھنٹوں تک جاری رہنے والا لاک ڈاؤن اتوار کو بھی جاری رہا۔ لاک ڈاؤن کی وجہ سے بیشتر بازار بند تھے اور ادویات سمیت صرف ضروری نوعیت کی دکانیں کھلی تھیں۔ اس دوران ڈوڈہ ضلع میں تیسرے روز بھی ہفتہ وار کورونا کرفیو نافذ رہا جس دوران تجارتی سرگرمیاں دوسرے روز بھی معطل رہیں۔ اطلاعات کے مطابق ہفتہ وار کورونا کرفیو کے سلسلے میں اتوار کو ضلع بھر میں بندشیں عائد رہیں تاہم میڈیکل شاپس، سبزی و چکن فروشوں کے ساتھ ساتھ ایمرجنسی سروسز بحال رہیں۔ انتظامیہ و سیول سوسائٹی نے کوؤڈ 19 کے بڑھتے واقعات کے پیش نظر لوگوں سے ایس او پیز پر سختی سے عمل درآمد کرنے و ہر طرح کے حفاظتی اقدامات اختیار کرنے کی اپیل کی ہے۔ریاسی ضلع سے موصولہ اطلاعات کے مطابق وہاں بھی کورونا لاک ڈائون پر سختی کے ساتھ نفاذ عمل میںلایاگیا۔
 
 
 
 
 
 
 
 
 

وزیر مملکت کا درجہ لیکن سننے والا کوئی نہیں 

ڈی ڈی سی چیئرپرسن 5روز سے احتجاج پر، کمپنی و ضلع انتظامیہ خاموش تماشائی

عاصف بٹ
کشتواڑ// وزیر مملکت کا درجہ رکھنے والی ضلع کشتواڑ کی ضلع ترقیاتی کونسل چیئرپرسن پوجا ٹھاکرگزشتہ پانچ روز سے احتجاج پر ہے لیکن کوئی سننے والا نہیںہے اور انتظامیہ خاموش تماشائی بنی ہوئی ہے۔ٹھاکر دیگر ڈی ڈی سی ممبران و سرپنچوں کے ہمراہ علاقہ ڈنگڈورو میں تعمیر ہورہے پکل ڈول پاور پروجیکٹ میں مقامی نوجوانوں کو روزگار فراہم نہ کرنے کو لیکر احتجاج پر ہے۔ انکا احتجاج ختم کرنے کیلئے نہ ہی کمپنی نے کوئی پہل کی اور نہ ضلع انتظامیہ نے کوئی قدم اٹھایا ۔مقامی لوگوں نے سوال کیا کہ اگر وزیر مملکت کا درجہ رکھنے والی ممبر کے ساتھ انتظامیہ اس طرح کا رویہ اختیار کرتی ہے تو دیگر کے ساتھ کس طرح کا سلوک ہوگا؟۔ انہوںنے کہاکہ پانچ روز سے  احتجاج پربیٹھی چیئرپرسن و دیگر ممبران کا کوئی سننے والا نہیں اور اتنے روز گزرجانے کے بعد بھی نہ ہی ضلع انتظامیہ اور نہ ہی کمپنی حکام پہل کررہے ہیں۔ گزشتہ پانچ روز سے احتجاج کررہی چیئرپرسن 1000میگاواٹ  پکل ڈول پاور پروجیکٹ میں مقامی بیروزگار نوجوانوں کو روزگار فراہم کرنے کیلئے کمپنی کے خلاف احتجاج کررہی ہے۔ چھ ماہ قبل تین روز تک احتجاج کیا گیا تھا جس دوران انھیں یقین دہانی کرائی گی تھی کہ انکے سبھی مطالبات کو پورا کیا جائے گالیکن تاحال مطالبات پرعملدرآمد نہ ہوسکا۔
 
 
 
 

 ایڈیشنل ڈی جی پی سیکورٹی کاایم اے سٹیڈیم جموں کا دورہ 

 یوم جمہوریہ کے انتظامات کو حتمی شکل دینے کیلئے جائزہ لیا 

 جموں//ایڈیشنل ڈائریکٹر جنرل آف پولیس سیکورٹی جموں و کشمیر ڈاکٹر ایس ڈی سنگھ جموال نے یوم جمہوریہ کی تقریبات 2022 کے انتظامات کو حتمی شکل دینے کے لیے ایم اے سٹیڈیم میں پولیس، آرمی، سی اے پی ایف اور سول انتظامیہ کے سینئر افسران کی میٹنگ کی صدارت کی اور سیکورٹی انتظامات کا جائزہ لیا ہے۔انہوں نے تمام متعلقہ ایجنسیوں کے درمیان قریبی ہم آہنگی پر زور دیا۔ پولیس ترجمان نے کہا کہ میٹنگ کے دوران افسران نے قومی تقریب کے خوش اسلوبی سے انعقاد کے لیے متعلقہ محکمے کی جانب سے کیے جانے والے تمام انتظامات پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا۔اے ڈی جی پی نے انتظامات کرتے وقت تمام متعلقہ ایجنسیوں کے درمیان قریبی ہم آہنگی پر زور دیا۔انہوں نے افسران پر مزید زور دیا کہ وہ فول پروف انتظامات کو یقینی بنائیں جن میں ایونٹ مینجمنٹ، سیکورٹی، کووڈ پروٹوکول کے مطابق بیٹھنے کے انتظامات، کار پارکنگ، پنڈال کی روشنی، صفائی، بروقت انٹیلی جنس جمع کرنا اور شیئرنگ وغیرہ شامل ہیں۔واضع رہے جموں میں یوم جمہوریہ کی  سب سے بڑی تقریب ایم اے ایم سٹیڈیم جموں میں منعقد ہو گی جہاں ایل جی منوج سنہا سلامی لے کر تقریب کی صدارت کریں گے ۔
 
 
 

 ٹریفک پولیس نے بھی ٹریفک اور پارکنگ کیلئے پلان جاری کیا 

جموں//جموں میں یوم جمہوریہ کے موقع پر مرکزی تقریب ایم اے اسٹیڈیم میں منعقد ہوگی۔ اس کے لیے انتظامیہ اور پولیس نے پوری تیاری کر رکھی ہے۔ ٹریفک پلان جاری کیا گیا ہے تاکہ لوگوں کو پنڈال تک پہنچنے میں کسی قسم کی دشواری کا سامنا نہ کرنا پڑے۔ کئی راستوں کو تبدیل کرنے کے ساتھ ساتھ نو انٹری زون بھی بنائے گئے ہیں ۔ لوگوں سے اپیل کی گئی ہے کہ وہ پلان کے مطابق آگے بڑھیں اور تعاون کریں۔ شہر میں آنے والی تمام بسیں اور منی لوڈ کیریئر جو کٹھوعہ، سانبہ سے آئیں گی، کنجوانی سے ناروال کی طرف موڑ لیں گی اور انہیں ISBT پارکنگ میں پارکنگ کی سہولت ملے گی۔کٹرا، ادھم پور، ڈوڈہ، بانہال، سری نگر سے آنے والی گاڑیاں دھر روڈ لے کر سامبا ناکہ کی طرف مڑیں گی۔ آر ایس پورہ، میران صاحب کے تمام روٹس سے آنے والی بسیں ایشیا کراسنگ سے گودام پہنچیں گی۔ باری برہمن، بشنہ گنگال، میران صاحب، فلیان منڈل، چٹھہ، ستواری سیدھے مین اسٹاپ گاندھی نگر آئیں گے۔اکھنور، مدھ، گھو منھاسا، مصری والا، جھیری اور بنتلاب سے آنے والی منی بسیں بخشی نگر پلی سے موڑ دیں گی۔ ادھم پور، کٹرا، کشتواڑ، ڈوڈہ، نگروٹہ جموں سے آنے والی گاڑیاں نگروٹہ بائی پاس سے سدرہ بائی پاس ناروال کی طرف موڑ دیں گی۔ تمام منی بسیں جانی پور سے امبالہ چوک تک چلیں گی اور یہاں سے واپس آئیں گی۔شاستری نگر، تریکوٹہ نگر اور گاندھی نگر سے آنے والی منی بسیں ایشیا ہوٹل سے روانہ ہوں گی۔ آنند نگر، بوہری، تالاب تلہ سے آنے والی منی بسیں کینال ہیڈ سے واپس آئیں گی۔ سامبا سے آنے والے ٹرک اور دیگر سامان بردار گاڑیاں سری نگر، ڈوڈا، ادھم پور سے ناروال آئیں گی۔ دیگر تمام ریاستوں سے آنے والی بسیں اور سیاح کنجوانی سے ٹرانسپورٹ نگر ناروال آئیں گے۔پاس کلرز کی بنیاد پر یہاں پارکنگ کی سہولت دستیاب ہوگی۔جنرل، پریڈ کے شرکاء اور مدعو افراد کی گاڑیاں پاس کے رنگوں کی بنیاد پر قائم پارکنگ لاٹس میں کھڑی کی جا سکتی ہیں۔ہلکے پیلے بھورے رنگ کے پاس والی گاڑیاں پیر بابا میدان جی جی ایم سائنس کالج کی پارکنگ نمبر ایک میں کھڑی کی جا سکتی ہیں۔جنوبی اور شمال سے آنے والی گاڑیاں یہاں کھڑی کی جائیں گی۔پریڈ، اکھنور اور تالاب تلو سے آنے والی گاڑیاں کامرس کالج کے قریب جی جی ایم سائنس کالج بوائز ہاسٹل، سائنس کالج پارکنگ میں اولڈ یونیورسٹی لین میں پارک کر سکیں گی۔ اسی طرح ساؤتھ سائٹ سے ڈوگرہ چوک، جیول چوک سے کامرس کالج تک اولڈ یونیورسٹی لین لیں۔ سائنس کالج کی پارکنگ میں گاڑیاں کھڑی کی جائیں گی۔ سٹی نارتھ سمت سے آنے والی گاڑیاں کامرس کالج سے بوائز ہاسٹل سائنس کالج کی طرف آئیں گی۔آرمی، پیرا ملٹری کی گاڑیاں اولڈ یونیورسٹی کیمپس میں بکرم چوک ساؤتھ سے توی پل اور ڈوگرہ چوک، جیول چوک سے سائنس روڈ تک کھڑی کی جائیں گی۔ فوج، پیرا ملٹری کی گاڑیاں جو خاندانوں کو لے کر آئیں گی وہ نگروٹا، بنتلاب سے شنکنتلا کراسنگ کے لیے موڑ لیں گی۔ مہیش پورہ چوک، بخشی نگر، کینال ہیڈ سے سیدھے اولڈ یونیورسٹی کیمپس میں پارکس ہوں گے۔ایسکارٹ گاڑیاں یہاں کھڑی کی جائیں گی۔ایسکارٹ گاڑیاں ڈرائی فروٹ مارکیٹ اور جے ڈی اے پارکنگ جیول میں کھڑی کی جائیں گی۔ جنوب سے آنے والی انتظامیہ کی گاڑیاں براہ راست بکرم چوک پر کھڑی کی جائیں گی۔ ویئر ہاؤس، تالاب تلو، اکھنور، کنال ہیڈ، نگروٹہ سے آنے والی گاڑیاں اندرا چوک پر واقع جے ڈی اے پارکنگ، بھٹنڈی اور ناروال کی جانب سے گودام یونیورسٹی روڈ پر کھڑی ہوں گی۔
 
 
 

پہاڑی کور کمیٹی نے چناب ٹائمز پورٹل کے اقدامات کو سراہا

ڈوڈہ//پہاڑی کور کمیٹی کی سابق وڈہ کے 15 ادبی گروپوں کے اتحاد نے مقامی زبانوں میں خبروں اور دیگر نمایاں مضامین کے ذریعے زبان کو فروغ دینے کے لیے چناب ٹائمز پورٹل کے اقدامات کو سراہا ہے۔ کمیٹی نے اس کے مالک اور چیف ایڈیٹر انظر ایوب کی کاوشوں پر مسرت کا اظہار کیا ہے۔اس موقع پر کور کمیٹی نے کہا کہ چناب ٹائمز واحد چینل ہے جس نے ہمیشہ کشمیری بھدرواہی اور سرازی ہزاروں پہاڑی بولنے والوں کے دلوں کو جیت لیا ہے۔ کمیٹی نے چناب ٹائمز کو اس کے مستقبل کے عزم کے لیے مکمل تعاون فراہم کیا ہے۔انہوں نے کہا کہ سابق ڈوڈہ کے غیر محسوس ورثے کو مختلف دفعات کے دائرے میں نہیں لایا گیا ہے اور اسے بہتر بنانے کی ضرورت ہے۔ کمیٹی نے تمام اسکالرز، محققین، کارکنان کا سابق ڈوڈہ کی مقامی زبان کی تحریک میں شامل ہونے کا خیرمقدم کیا ہے۔ کمیٹی نے چناب ٹائمز کو مقامی زبانوں کے فروغ اور اس کی نشریات کے لیے اسکی ابتدائی خدمات پر اس سال کے بہترین نیوز پورٹل کا ایوارڈ دینے کا فیصلہ کیا ہے۔
 
 
 
 

سابق ایم ایل سی یشپال شرما کا انتقال | پی ڈی پی،دیوندر رانااور الطاف بخاری اور عاشق خان کااظہار تعزیت

 جموں//پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی کا ایک ہنگامی اجلاس پارٹی کے نائب صدر چودھری حمید کی قیادت میں ہوا جس میں پارٹی کے تجربہ کار رہنما اور سابق ایم ایل سی یشپال شرما کے بے وقت اور اچانک انتقال پر تعزیت کا اظہار کیا گیا۔یشپال شرما کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے  چودھری حمید نے کہا کہ پارٹی تجربہ کار لیڈر کے اچانک انتقال پر صدمے میں ہے، جو لوگوں کی آواز تھے۔چودھری حمید نے یشپال شرما کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا کہ وہ پونچھ کے غیر متنازعہ لیڈر تھے اور لوگوں کے لیے رہنما اور سرپرست تھے۔چودھری حمید نے کہا کہ یشپال شرما کی موت پی ڈی پی کا بھی ایک ناقابل تلافی نقصان نہیں ہے بلکہ پورے سماج اور بالخصوص پونچھ کے لوگوں کے لئے ایک ناقابل تلافی نقصان ہے۔ میٹنگ میں دو منٹ کی خاموشی بھی اختیار کی گئی اور پارٹی رہنماؤں نے لواحقین سے ہمدردی کا اظہار کیا۔ اجلاس میں مرحوم کی روح کے ابدی سکون اور سوگوار لواحقین کے لیے ناقابل تلافی نقصان برداشت کرنے کی ہمت کی دعا کی گئی۔ادھر بی جے پی کے سینئر لیڈر دیویندر سنگھ رانا نے پونچھ کے سابق ایم ایل سی یشپال شرما کے انتقال پر گہرے رنج و غم کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ان کے انتقال سے عوامی زندگی میں ایک خلا پیدا ہوا ہے۔ رانا نے کہا کہ "جب کہ جموں و کشمیر نے ایک تجربہ کار، عوامی جذبہ رکھنے والے اور سرشار سیاست دان کو کھو دیا ہے، پونچھ نے اپنے پیارے، قابل احترام اور وسیع دل لیڈر کو کھو دیا ہے جس نے عوامی خدمت کو ہر چیز سے بالاتر رکھا‘‘۔ رانا نے سوگوار خاندان سے تعزیت کی۔اپنے تعزیتی پیغام میں رانا نے کہا کہ یشپال شرما بہت ہی شریف اور عاجز آدمی تھے، جن کی موت جموں و کشمیر کے لیے بہت بڑا نقصان ہے۔ انہوں نے مرحوم کی روح کے لیے سکون اور خاندان کے سوگوار ارکان اور ان کے خیر خواہوں کی بڑی تعداد کو اس ناقابل تلافی نقصان کو برداشت کرنے کی طاقت کے لیے دعا کی۔ادھراپنی پارٹی صدر سید محمد الطاف بخاری نے خطہ پیر پنجال کی مقبول سیاسی شخصیت اور سابقہ ایم ایل سی پونچھ یشپال شرما کی وفات پر گہرے دکھ اور صدمے کا اظہار کیا ہے۔ الطاف بخاری نے یشپال شرما کو نیک سیرت، نرم مزاج، غریب پرور، ملنسار، خو ش اخلاق شخصیت کا مالک قرار دیا ہے۔ انہوں نے دُکھ کی اس گھڑی میں غمزدہ کنبہ کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کیا ہے۔ اپنی پارٹی نائب صدر اور سابقہ کابینہ وزرا اعجاز احمد خان، سابقہ وزیر چوہدری ذوالفقار علی، سابقہ رکن اسمبلی حویلی پونچھ اور اپنی پارٹی ضلع صدرپونچھ شاہ محمد تانترے نے بھی یشپال شرما کی وفات پر دکھ اور صدمے کا اظہار کیا ہے۔ اعجاز احمد خان نے کہاکہ وہ لوگوں کے رہنماتھے اور اُن کے کام کو کبھی بھی فراموش نہیں کیاجائے گا۔ وہ دکھ کی اِس گھڑی میں غمزد ہ کنبہ کے ساتھ برابر کے شریک ہیں۔ چوہدری ذوالفقار علی نے کہاکہ سابقہ ایم ایل سی یشپال شرما ضلع پونچھ کے اندر انتہائی مقبول ترین لیڈر تھے، بلالحاظ مذہب وملت ہرکوئی اُن کی عزت کرتاتھا، اُن کی شخصیت متاثر کن تھے ، وہ سادہ طبیعت، باکردار اور اصول پسند سیاسی رہنمائی تھے۔ اپنی پارٹی ضلع صدر پونچھ شاہ محمدتانترے نے دکھ وصدمے کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ جو لوگ عوامی بہبود کے لئے کام کرنا چاہتے تھے، اُن کے لئے یشپال شرما رہبر تھے،ہر سیاسی لیڈر سیاسی وابستگیوں سے بالاتر ہوکر اُن کی عزت کرتا تھا۔ انہوں نے کہاکہ وہ اُن کی روح کی تسکین اور لواحقین کے لئے صبر وجمیل کی دُعا کرتے ہیں۔دریں اثنائشیعہ فیڈریشن صوبہ جموںنے بھی شرما کی موت پر گہرے افسوس و دکھ کا اظہار کیا ہے ۔فیڈریشن کے صدرعاشق حسین خان نے یشپال شرماکی موت کوذاتی نقصا ن قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ میںآج ایک بہترین رفیق دوست سے محروم  ہو گیا ہوں۔ان کا کہنا تھا کہ یشپال شرما ایک مکمل انسان پرست تھے ،انہوںنے اپنی زندگی کو پوری طرح سے غریب و پسماندہ و دبے کچلے طبقہ جات کی بہبود کے لئے وقف کررکھا تھا ۔وہ پورے طور پر مذہبی بندشوںسے آزاد ہو کر ہرایک غریب و پسماندہ کی ایک انسان کی نظر سے دیکھ کر اس کے ساتھ پیار بانٹتے تھے ۔خان نے کہا کہ یشپال شرما غریب نواز ،غریب پرور ،شریف النفس ،انسانیت کے علمبردار و ہندو مسلم بھائی چارے کے سچے سپاہی تھے ۔ خان نے یشپال شرما کی موت پر تعزیت کا اظہار کرتے ہوئے لواحقین کے ساتھ گہری ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے مرحوم کی روح کی تسکین و ان کو سورگ میںجگہ عطا کئے جانے کی دعا کی۔ان کا کہنا تھا کہ میںاس غم کی گھڑی میںلواحقین کے ساتھ شریک غم ہوںاور دعا گو ہوںکہ ایشور لواحقین کو یہ صدمہ برداشت کرنے کی توفیق عطا فرمائے ۔
 
 
 

برفباری سے متاثرہ علاقوں میں لوگوں کی مشکلات میں بے پناہ اضافہ

برف باری کے دو ہفتہ بعد بھی بانہال کے مختلف علاقوں سے رابطہ منقطع :سجاد شاہین

بانہال//نیشنل کانفرنس کے رہنما اور ضلع صدر رام بن سجاد شاہین نے برف سے متاثرہ علاقوں میں عوامی خدمات کی بحالی میں تاخیر پر اپنی تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ دور دراز کے علاقوں میں رہنے والے لوگوں کو شدید برف باری کے بعد شدید پریشانی کا سامنا ہے کیونکہ بجلی، پانی اور ضروری سامان کی فراہمی بری طرح متاثر ہوئی ہے۔ بانہال حلقہ کے مختلف علاقوں میں اس طرح لوگوں کو پریشانی کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ "یہ تشویشناک بات ہے کہ بانہال حلقہ کے مختلف علاقوں میں برف باری کے دوہفتہ بعد بھی یوٹیلٹی سروسز بحال نہیں ہوسکی ہیں اور ایسا لگتا ہے کہ انتظامیہ برفباری والے علاقوں میں لوگوں کی تکالیف سے بے خبر ہے"۔انہوں نے مزید کہا کہ مہو منگت، تاجنیہال، کھاروان، ڈھک، کھاری، نیل، گگرناگ، شگن، تریگام، پوگل-پارستان، سربگنی، چکہ، سراچی، امکوٹ، تھاچی، پھاگو، ہنجھل، چملواس، چکنارواہ، تنجیوار، دردہی، سمر، لمبر، اشہر، چچل، بنگارہ، گوجرہ، نوگام اور دیگر علاقوں میں پینے کے پانی کی قلت اور بجلی کی غیر اعلانیہ کٹوتی کی وجہ سے شدید مشکلات کا سامنا ہے۔اس کے علاوہ اہم لنک سڑکیں جن میں بانہال-منگت روڈ، کھاری تا مہو روڈ، چملواس-لیورا-نیل سڑکیں برف باری کے دو ہفتے سے زیادہ گزرنے کے بعد بھی بند ہیں اور جاری برف باری کے بعد صورتحال مزید خراب ہو گئی ہے۔انہوں نے انتظامیہ سے اپیل کی ہے کہ متاثرہ علاقوں میں بحالی کے کام کو جنگی بنیادوں پر تیز کیا جائے اور برف سے متاثرہ علاقوں میں یوٹیلیٹی سروسز کو جلد از جلد بحال کیا جائے۔
 
 
 

 ’’ عوام کی آواز‘‘ تجاویز پیش کرنے کا بہترین پلیٹ فارم :سمت بھارگو

جموں//صوبہ جموں کے ضلع راجوری سے تعلق رکھنے والے نوجوان صحافی اور کشمیر عظمیٰ و گریٹر کشمیر کے نامہ نگار سمت بھارگو نے لیفٹیننٹ گورنر منوج سِنہا کا ماہانہ ریڈیو پروگرام ’’ عوام کی آواز’’ کو ایک ایسا پلیٹ فارم قرار دیا ہے جو عوام الناس کو اَپنے تجربات اور تجاویز کو براہِ راست شیئر کرنے کا اعتماد فراہم کرتا ہے۔ لیفٹیننٹ گورنر منوج سِنہا نے 16؍ جنوری کو اَپنے ماہانہ ریڈیو پروگرام ’’ عوام کی آواز‘‘ کے حالیہ شمارے میں راجوری ضلع کے سمت بھارگو کی تجویز کا ذکر کیا ہے۔سمت بھارگو نے سڑکوں پر ہر چند کلومیٹر کے بعد بورڈ لگانے کے لئے ایک تجویز دی ہے جس میں اِن بورڈوں پر سڑک تعمیرکرنے والے اِنجینئروں اور ٹھیکیداروں کے نام درج ہوں گے اور اِس قدم سے سڑک کی تعمیر کے منصوبوں میں شفافیت اور جواب دہی کو فروغ ملے گا۔لیفٹیننٹ گورنر نے اِس تجویزکو منفرد قرار دیتے ہوئے کہا کہ متعلقہ تجویز پر غور کیا جائے گا۔سمت بھارگو نے ’’ عوام کی آواز‘‘ کو قابل ستائش قدم قرار دیتے ہوئے کہا کہ یہ ایک ایسا پلیٹ فارم ہے جس میں جموں وکشمیر کے لوگ اَپنی تجاویز ، آرأ اور تجربات بھی شیئر کرتے ہیں۔اُنہوں نے کہا کہ اِس طرح کے پلیٹ فارموں سے ایک عام آدمی کو اَپنے علاقے کی ترقی کا براہِ راسست حصہ بننے کے لئے ایک اضافی سطح پر اعتماد فراہم کرتے ہیں۔
 

تازہ ترین