تازہ ترین

غزلیات

تاریخ    23 جنوری 2022 (00 : 01 AM)   


 رب سے باتیں کیا کرو یارو
اپنے سب غم ہوا کرو یارو
بندگی سے عروج پاؤگے
تم خدا مَت بنا کرو یارو
زندگی  ایک بار ملتی ہے      
 ہر کسی کا بھلا کرو یارو
زیر دستوں کی مختصر دنیا
نہ انہیں تم خفا کرو یارو
 حد سے باہر ہزار خطرے ہیں
حد کے اندر جیا کرو  یارو
غیظ پَل بھر میں راکھ کرتا ہے
زہر یہ پی لیا کرو یارو
چھوٹی باتوں پہ کان دھرنا کیا
نہ کسی سے گلہ کرو یارو
کچھ تو رکھّو بھرم محبت کا
 تم بھی ہم سے وفا کرو یارو
بھول جاؤ عنایتیں کرکے
بن بتائے دیا کرو یارو
قَول انساں کو عزتیں بخشے
مت کسی سے دغا کرو یارو
دل کے ٹکڑے ہیں شعر بسملؔ کے
اس کے حق میں دعاکرو یارو
 
خورشید بسملؔ
تھنہ منڈی راجوری جموں وکشمیر
موبائل نمبر؛9086395995
 
 
 
اِس دُنیا کو بدلنا ہوگا
راہِ نو پر چلنا ہوگا
بِگڑے ہوئے ہیں وقت کے تیور
سوچ سمجھ کر چلنا ہوگا
منزل دُور ہو یا قریب 
ہر صورت میں چلنا ہوگا
جو ٹھہرے تکلیف کا باعث 
اُن کانٹوں کو مسلنا ہوگا
جِس انداز سے جیتے ہیں ہم
وہ انداز بدلنا ہوگا
دُنیا میں اپنی مُحبّت سے 
گرے ہوئوں کو سنبھلنا ہوگا
مُشکلوں سے جو پُر ہیں ہتاشؔ
اُن راہوں پر چلنا ہوگا
 
پیارے ہتاش ؔ
دور درشن گیٹ لین جانی پورہ جموں
موبائل نمبر؛8493853607
 
 
نہیں خبر کہاں میں کھو چکا کہ دے صدا مجھے
کسی طرح سمیٹ مجھ کو خود سے اب ملا مجھے
 
کہ مجھ سے گر بچھڑنا ہے تو ایک بار ہی بچھڑ
خدارا اپنی ذات میں نہ کر یوں مبتلا مجھے
 
میں جاں بکف ہوں لا علاج مرض نے پکڑ لیا
تُو چارہ ساز ہے میرا کہ دے کوئی دوا مجھے
 
یہ آنکھ نم نہیں ہوتی کہ سنگ دل ہوں کیا بتا
کوئی نیا سا زخم دے کسی طرح رُلا مجھے
 
ردا غموں کی کب تلک رہے گی سر پہ میرے میرؔ
پلا دے جام زہر کا کہ قید سے چُھڑا مجھے
 
میرؔ ثاقب 
دیارو شوپیان،موبائل نمبر؛9596455617
 
 
دورِ ازل سے ہی محبّت خاص و عام ہے
کرے اصول سے کوئی تو محبّت بھی نیک کام ہے
 
جنکے دل میں اغیار کی فکر، اپنوں سے محبت
ایسے اشخاص کا زمانے میں بہتر انجام ہے
 
کوچۂ یار سے ہم کبھی نہیں گزرے ہیں، لیکن
زمانے میں نہ جانے کیوں نام ہمارا بدنام ہے
 
حُسنِ عدالت نے بے قصور ٹھرایا ہمیں
نہ جانے کیوں پھر محبّت کا قتلِ عام ہے
 
ذرا سنبھل سنبھل سی گئی ہے اپنی زندگیِ
جب سے تصویرِ یار میرے دل میں قیام ہے
 
اپنا خونِ جگر دے کے اردو کو جان بخشی ہے
ایسے اہلِ قلم کو عثمانؔ کا سلام ہے
 
 عثمانؔ طارق
ڈول، کشتوار
موبائل نمبر؛9797542502
 
 
دورِ ازل سے ہی محبّت خاص و عام ہے
کرے اصول سے کوئی تو محبّت بھی نیک کام ہے
 
جنکے دل میں اغیار کی فکر، اپنوں سے محبت
ایسے اشخاص کا زمانے میں بہتر انجام ہے
 
کوچۂ یار سے ہم کبھی نہیں گزرے ہیں، لیکن
زمانے میں نہ جانے کیوں نام ہمارا بدنام ہے
 
حُسنِ عدالت نے بے قصور ٹھرایا ہمیں
نہ جانے کیوں پھر محبّت کا قتلِ عام ہے
 
ذرا سنبھل سنبھل سی گئی ہے اپنی زندگیِ
جب سے تصویرِ یار میرے دل میں قیام ہے
 
اپنا خونِ جگر دے کے اردو کو جان بخشی ہے
ایسے اہلِ قلم کو عثمانؔ کا سلام ہے
 
 عثمانؔ طارق
ڈول، کشتوار
موبائل نمبر؛9797542502
 
 
لبوں پر مہر ہے میرے وگرنہ کچھ بتاتا میں
اسیرِ زندگی کی داستان سب کو سُناتامیں
میرا لختِ جگر بھی اب نہیں پہنچانتا مجھ کو
بھلا اس حال میں خود کو بتا کیسے سجاتا میں
ہوا ہوتا نہ خاکستر میرا یہ آشیانہ تو
گلہ کرنے کی خواہش کو دبے لفظوں نبھاتا میں
تیرے جانے کا غم جیسے حیاتِ جاوداں ہے اب
میں دُھتکاروں مگر ہر ہر قدم خود کو جتاتا ہے
تلاشِ یار کی خواہش سفر میں گر مجھے ہوتی
تو اپنے اس سفینے کو یہاں کیونکر جلاتا میں
دیئے جو زخم ہیں صیاد نے گہرے ہیں وہ اتنے 
بتا کس کس کو تیرے نرم ہاتھوں سے سِلاتا میں
میرا دامن بھرا ہے ظلمتوں سے تم نے جی بھر کے
کوئی ہوتا میرا اپنا جسے دامن دکھاتا میں
وہ راشدؔ لے اُڑا میرے دیئے سارے نہ جانے کیوں؟
وگرنہ اِ ن اندھیروں میں اُنہیں کچھ تو جلاتا میں
 
راشدؔ اشرف
کرالہ پورہ سرینگر
موبائل نمبر؛9622667105
 
 
اُس گلی سے مری رہگزر اب نہیں
 میرے خوابوں میں وہ جلوہ گر اب نہیں
 
ہجر کے لطف کا اب مزہ کیسے لوں
دردِ فرقت میں بھی وہ اثر اب نہیں
 
ساتھ میرا بھلے وہ نبھائیگا کیا؟
جوکہ لفظِ 'وفاسے باخبر اب نہیں
 
یہ تو بہتر ہے کوئی سُنائے نہیں
داستانِ وفاء مختصر اب نہیں
 
کیسے شائقؔ جیئے گا تمنا لئے
تیرا دیدارِ شام و سَحر اب نہیں
 
شائقؔ فاروق وانٹ
بونجوا کشتواڑ،
موبائل نمبر؛9682606807
 
غزل
ستمگر سے نہیں کوئی گلہ ہے
کہ زخم اپنے ہی ناخن سے چِھلا ہے
 
معطّر کیوں نہ ہوں دیوار و در سب
کہ خط بادِ بہاری سے ملا ہے
 
کرشمہ ہے یہ مالی کے ہُنر کا
جو پھر سے پھول پتھر میں کِھلا ہے
 
بہت نازاں ہے زخمِ دِل ہمارا
کہ یہ ریشم کے تاگے سے سِلا ہے
 
مسافر دے رہے اُس کو دعائیں
یہ پربت جس کے کہنے پر ہِلا ہے
 
اندھیرا اُس جگہ ہوگا نہ پنچھیؔ
جہاں بھی روشنائی کی جِلا ہے
 
سردار پنچھیؔ
ملیر کوٹلہ پنجاب
موبائل نمبر؛9417091668