تازہ ترین

کورونا متاثرین کا اب تک کا نیا ریکارڈ قائم| 6568مثبت،7اموات

کشمیر میں4693اورجموں میں1875 نئے معاملات

تاریخ    23 جنوری 2022 (00 : 01 AM)   


پرویز احمد
سرینگر //جموں و کشمیر میں عالمگیر وباء کے 23ماہ میں پہلی پر سنیچر کو کورونا وائرس  کی ریکارڈ تعداد درج کی گئی جو 6568رہی۔ یہ پہلی ہوا ہے کہ جموں کشمیر میں مثبت کیسز کی تعداد 6500 سے زائد درج کی گئی۔ کورونا وائرس کی تشخیص کیلئے  82ہزار 423ٹیسٹ کئے گئے جن میں 65سفر کرنے والوں سمیت مزید 6568افراد کی رپورٹیں مثبت آئیں۔ اس سے قبل 19جنوری 2022کو وائرس سے متاثرین کی ریکارڈ تعداد 5818درج کی گئی تھی۔متاثرین کی تعداد تیزی سے بڑھتے ہوئے 3لاکھ 90ہزار 949ہوگئی ہے۔ اس دوران مزید 7افراد فوت ہوگئے ہیں اور متوفین کی مجموعی تعداد 4598ہوگئی ہے۔ مثبت قرار دئے گئے 6568افراد میں جموںسے 1875جبکہ کشمیر سے 4693 افراد تعلق رکھتے ہیں۔ کشمیر میں مثبت قرار دئے گئے 4693افراد میں 18بیرون ریاستوں سے سفر کرکے وادی واپس لوٹے جبکہ دیگر 4675افراد مقامی سطح پر رابطے میں آنے کی وجہ سے متاثر نہوئے ہیں۔ وادی میں مثبت قرار دئے گئے 4693افراد میں سرینگر میں سب سے زیادہ 1604،بارہمولہ میں 749، بڈگام میں 643، پلوامہ میں 230، کپوارہ میں 320، اننت ناگ میں 243،بانڈی پورہ میں 418، گاندربل میں 99، کولگام میں 333جبکہ شوپیان میں 54افراد متاثر ہوئے ہیں۔ کشمیر میں متاثرین کی مجموعی تعداد 2لاکھ 46ہزار 750تک پہنچ گئی ہے۔ سنیچر کو وادی میں مزید 2افراد کورونا وائرس سے فوت ہوگئے۔ مرنے والوں میں ایک کا تعلق سرینگر اور ایک پلوامہ سے تعلق رکھتا ہے۔ جموں صوبے میں کورونا وائرس سے 1875افراد متاثر ہوئے ہیں جن میں 47افراد بیرون ریاستوں سے سفر کرکے جموں پہنچے جبکہ دیگر 1828افراد مقامی سطح پر رابطے میں آنے کی وجہ سے متاثر ہوئے ہیں۔ جموں صوبے کے 1875متاثرین میں جموں میں 1236، ادھمپور میں 78، راجوری میں 59، ڈوڈہ میں 120، کٹھوعہ میں 59، سانبہ میں 91، کشتواڑ میں 49، پونچھ میں 50، رام بن میں 99 جبکہ ریاسی میں 34افراد متاثر ہوئے ہیں۔ اس دوران جموں صوبے میں اموات کا سلسلہ بدسطور جاری ہے۔ سنیچر کو جموں صوبے میں مزید 5افراد کورونا وائرس سے فوت ہوگئے۔ مرنے والوں میں 2کا تعلق ضلع جموں، ایک راجوری، ایک کشتواڑ اور ایک ریاسی سے ہے۔ جموں صوبے میں متوفین کی مجموعی تعداد 2246ہوگئی ہے۔ 
 
 

بوسٹر ڈوز 3ماہ بعد

 صحت یابی ہوکر90روز تک انتظار کرنا ہوگا

نیوز ڈیسک
 
نئی دلی//مرکزی سرکار نے کہا ہے کہ کورونا مخالف ویکسین بشمول بوسٹر ڈوز وائرس سے متاثر ہونے والے افراد میں صحتیاب ہونے کے تین ماہ بعد لگانا چاہئے۔ ریاستوں اور مرکزی زیر انتظام علاقوں کو لکھے گئے مکتوب میں ایڈیشنل سیکریٹری مرکزی وزارت صحت  وکاس شیل نے کہاہے کہ مختلف حلقوں سے ایسے لوگوں کو کورونا مخالف ویکسین کا بوسٹر ڈوزلگانے کیلئے رہنمائی کی درخواست کی گئی تھی، جو کورونا وائرس سے متاثر ہوئے ہیں۔ مکتوب میں مزید کہا گیا ہے ’’ مہر بانی کرکے نوٹ کرلیں، اگر کسی شخص کی رپورٹ لیبارٹری سے مثبت آتی ہے تو تمام ویکسین بشمول بوسٹر یا احتیاطی ڈوز کو صحتیاب ہونے کے بعد 3ماہ تک ملتوی کریں‘‘۔ انہوں نے مزید کہا ہے کہ یہ مشورہ سائنسی شواہد اور ٹیکہ کاری کیلئے بنائے گئے نیشنل ٹیکنیکل ایڈوائزری گروپ کی صلاح پر دیا گیا ہے۔