تازہ ترین

ونڈے سیریز کا دوسرا میچ آج

ہندوستان کیلئے جنوبی افریقہ کے خلاف کرو یا مرو کا مقابلہ

تاریخ    21 جنوری 2022 (00 : 01 AM)   


پارل/پہلا میچ 31رن سے ہارنے کے بعد، ہندوستان کی کرکٹ ٹیم جمعہ کو جب میزبان جنوبی افریقہ کے خلاف یہاں دوسرے ون ڈے میں کھیلنے اترے گی تو اس کے لئے یہ کرو یا مرو کا مقابلہ ہوگا۔ ہندوستان اگر اس میچ بھی ہار جاتا ہے تو سیریز اس کے ہاتھ سے نکل جائے گی جبکہ جیتنے کی صورت میں اس کا پاس سیریز پر قبضہ کرنے کے لئے ایک اور موقع ہوگا۔ہندوستان کی ٹیم نے مایوس کن گیندبازی کرتے ہوئے جنوبی افریقہ کو پہلے میچ میں چار وکٹوں پر 296رن بنانے دیئے اور تعاقب میں صرف آٹھ وکٹوں پر 265 رنز ہی بنا سکی۔ ٹیم انڈیا کی آٹھ وکٹیں صرف 214رنز پر ہی گر گئی تھیں۔ شاردل ٹھاکر نے نصف سنچری بنا کر شکست کا فرق کم کیا تھا۔ وینکٹیش ایر کا پہلے ون ڈے میں گیندبازی نہ کرنا کافی حیران کن فیصلہ تھا جبکہ ایک دن پہلے کپتان راہل نے کہا تھا وینکٹیش چھٹے متبادل گیندباز کے طور پر موجود رہیں گے ۔ ہندوستان کو نہ صرف درمیانی اوورز میں اپنی گیند بازی کو بہتر کرنا ہوگا بلکہ درمیانی اوورز میں اپنی بلے بازی کو بھی بہتر کرنا ہوگا۔ سلامی بلے بازشکھر دھون کے 79اور سابق کپتان وراٹ کوہلی کے 51رنز کے بعد ہندوستانی اننگز ڈگمگا گئی اور بلے باز مزید مقابلہ نہ کر سکے ۔ شریس آئیر، رشبھ پنت اور روی چندرن اشون سستے میں آؤٹ ہوئے جس کے بعد شاردل ٹھاکر نے آخر تک ٹک کر جدوجہدکی۔میچ کے بعد کپتان لوکیش راہل کا کہنا تھا کہ‘‘ ہمیں مڈل اوورز میں وکٹ حاصل کرنا سیکھنا ہوگا ، ساتھ ہی جس طرح سے ہمارے بلے بازوں نے رن بنائے تو مڈل آرڈر کے بلے بازوں کو سنبھالنا تھا۔ پچ اتنی سست نہیں تھی۔ میں نے کوہلی اور دھون سے بات کی تو ان کا ایسا ماننا نہیں تھا۔ ہم ان کو 300رن کے اندر روک سکے یہ بڑی بات ہے ۔ ہمارے گیندبازوں نے کچھ 25سے 30رن زیادہ دیئے لیکن ہم نے خراب گیندبازی نہیں کی۔ 290سے زیادہ جنوبی افریقہ کو نہیں پہنچنا چاہئے تھا، ان کو 270 رن تک روکا جاسکتا تھا۔ ’’دوسری جانب جنوبی افریقی کپتان ٹیمبا باوما نے کہا کہ میرے یا ڈوسن کے لیے پچ تبدیل نہیں ہوئی تھی۔ ہم نے گیپ میں گیند کو باؤنڈری لائن کے پار پہنچایا اور ہماری شراکت اس میچ میں اہم ثابت ہوئی۔ یانسن کے لیے یہ ایک اچھا ڈیبیو تھا۔ وہ ایک کھلاڑی کے طور پر مسلسل بہتر کر رہے ہیں۔ جب بھی انہیں نئی گیند ملتی ہے ، وہ ہمیں مایوس نہیں ہونے دیتے ۔ ہمارے پاس گیندبازی کے چھ آپشنز ہیں، اچھا ہے کہ مارکرم نے ہمارے لیے گیند کے ساتھ اچھا مظاہرہ کیا۔ کیشو، مارکرم، شمسی ہمارے تینوں اسپنروں نے اچھا کام کیا۔ ڈی کاک کو واپس دیکھ کر اچھا لگا۔ وہ ہمارے لیے بہت اہم کھلاڑی ہیں۔ ہندوستان پہلے ہی ٹیسٹ سیریز ہار چکا ہے اور وہ ون ڈے سیریز جیتنا چاہتا ہے ۔ ہندوستانی کھلاڑیوں کو سیکھنا ہوگا ۔ بھونیشور کمار نے 10اوورز میں 64رنز دیے جبکہ ٹھاکر نے 10 اوور میں 72 رنز دیے ۔ اب دیکھنا یہ ہوگا کہ گیندبازی میں کوئی تبدیلی کرتے ہوئے دیپک چاہر کو شامل کیا جاتا ہے یا نہیں۔ (یواین آئی)
 

تازہ ترین