تازہ ترین

فضائی حادثہ میں جنرل بپن راوت کی ہلاکت

حادثہ کی تحقیقاتی رپورٹ حکومت کوپیش، موسم کی اچانک تبدیلی سے ہیلی کاپٹر گرگیا

تاریخ    15 جنوری 2022 (00 : 01 AM)   


نیوز ڈیسک
نئی دہلی// ٹرائی سروسز کورٹ آف انکوائری کی طرف سے پیش کردہ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ 8دسمبر کو انڈین ائر فورس ہیلی کاپٹر حادثہ ،جس میں چیف آف ڈیفنس اسٹاف جنرل بپن راوت اور دیگر 13 افراد ہلاک ہوئے تھے، موسم میں غیر متوقع تبدیلی کی وجہ سے ہوا تھا ،جس کی وجہ پائلٹ کی کوتاہی تھی۔ جمعہ کو ہندوستانی فضائیہ کے بیان میں کہا گیا ہے کہ "8 دسمبر 2021 کو ہونے والے Mi-17 V5 حادثے کی انکوائری کی سہ فریقی تحقیقات نے اپنے ابتدائی نتائج پیش کر دیئے ہیں‘‘۔اس نے کہا کہ کورٹ آف انکوائری نے مکینیکل خرابی یا لاپرواہی کو حادثے کی وجہ قرار دیا ہے۔"حادثہ موسمی حالات میں غیر متوقع تبدیلی کی وجہ سے بادلوں میں داخل ہونے کا نتیجہ تھا۔جنرل راوت، ان کی اہلیہ مدھولیکا، ان کے دفاعی مشیر بریگیڈیئر ایل ایس لِڈر، چیف آف ڈیفنس اسٹاف کے اسٹاف آفیسر، لیفٹیننٹ کرنل ہرجیندر سنگھ اور ڈیکوریٹڈ پائلٹ گروپ کیپٹن ورون سنگھ سمیت 13 دیگر افراد تمل ناڈو کے کنور کے قریب حادثے میں ہلاک ہوئے۔

تازہ ترین