تازہ ترین

جموں کشمیر میں کورونا وائرس کی لہر میں شدت| 7ماہ بعد تعداد 1600کے پار

۔85مسافروں سمیت 1695متاثر، ایک فوت

تاریخ    13 جنوری 2022 (00 : 01 AM)   


پرویز احمد
سرینگر //جموں و کشمیر میں کورونا وائرس کے یومیہ کیسوں میں تیسرے دن بھی اچھال کا سلسلہ جاری رہا ۔ بدھ کوجموںو کشمیر میں کورونا وائرس کی تشخیص کیلئے 65ہزار 348ٹیسٹ کئے گئے جن میں 85مسافروں سمیت مزید 1695افراد کی رپورٹیں مثبت آئی ہیں۔ اس سے قبل جموں و کشمیر میں 4جون 2021کو کورونا وائرس کے یومیہ کیسز کی تعداد 1723تھی۔ جموں و کشمیر میں کورونا وائرس سے متاثر ہونے والے افراد کی مجموعی تعداد 3لاکھ 48ہزار 201ہوگئی ہے۔ اس دوران جموں صوبے میں بدھ کو بھی کورونا وائرس سے ایک اور شخص فوت ہوگیا ہے۔ جموں و کشمیر میں کورونا وائرس سے مرنے والوں کی تعداد 4547ہوگئی ہے۔ جموں و کشمیر میں مثبت قرار دئے گئے 1695افراد میں جموں میں812جبکہ کشمیر میں 883افراد بھی شامل ہیں۔ کشمیر میں مثبت قرار دئے گئے 883افراد میں 32بیرون ریاستوں سے سفر کرکے وادی لوٹے جبکہ 851مقامی سطح پر رابطے میں آنے کی وجہ سے متاثر ہوئے ہیں۔ کشمیر میں مثبت قرار دئے گئے 883افراد میںسرینگر میں 320، بارہمولہ میں 250، بڈگام میں 116، پلوامہ میں 30، کپوارہ میں 52، اننت ناگ میں 40، بانڈی پورہ میں 36، گاندربل میں 18، کولگام میں 20، اور شوپیان میں ایک شخص کی رپورٹ مثبت آئی ہیں۔ اس دوران مسلسل دوسرے دن بھی کشمیر میں کورونا وائرس سے کسی کی موت نہیں ہوئی ہے۔ وادی میں متوفین کی مجموعی تعداد 2336بنی ہوئی ہے۔ جموں صوبے میں بھی کورونا متاثرین کی تعداد میں زبردست اچھال جاری ہے اور بدھ کو جموں صوبے میں کورونا وائرس سے مزید 812افراد متاثر ہوئے ہیں۔ جموں صوبے میں متاثر ہونے والے 812افراد میں 53بیرون ریاستوں سے سفر کرکے جموں پہنچے جبکہ دیگر 759افراد  مقامی سطح پر رابطے میں آنے کی وجہ سے وائرس سے متاثر ہوئے ہیں۔ جموں صوبے میں متاثر ہونے والے 812میں سب سے زیادہ جموں صوبے میں 438، ادھمپور میں 68، راجوری میں 42، ڈوڈہ میں 10، کٹھوعہ میں 93، سانبہ میں 30، کٹھوعہ میں 9، پونچھ میں 22، رام بن میں 15 جبکہ ریاسی میں 85افراد کی رپورٹیں مثبت آئی ہیں۔ جموں صوبے میں متاثرین کی مجموعی تعداد 1لاکھ 29ہزار 961تک پہنچ گئی ہے۔ اس دوران جموں صوبے میں کورونا وائرس سے مزید ایک شخص فوت ہوگیا ہے۔ جموں صوبے میں متوفین کی تعداد 2211ہوگئی ہے۔ 
 
 

ملک میں ایک لاکھ 94 ہزار نئے کیس،442 ہلاکتیں

اومیکرون کے 4868معاملات درج

یو این آئی
 
نئی دہلی// کورونا وبا کے کیسز میں اچانک اضافہ سے ملک میں حالات مسلسل خراب ہوتے جا رہے ہیں۔ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ایک لاکھ 94 ہزار 720 نئے کیسز سامنے آئے ہیں، جس سے ایکٹیوکیسز کی کل تعداد نو لاکھ 55 ہزار 319 ہو گئی ہے ۔ منگل کو 85 لاکھ 26 ہزار 240 افرادکوکووڈ ویکسین لگائی گئی ہیں اور اب تک ایک ارب 53 کروڑ 80 لاکھ 8 ہزار 200 افراد کو ویکسین دی جا چکی ہے ۔اعداد و شمار کے مطابق متاثرین کی کل تعداد بڑھ کر تین کروڑ 60 لاکھ 70 ہزار 510 ہو گئی ہے ۔ اسی عرصے میں مزید 442 مریضوں کی موت کے بعد ہلاکتوں کی مجموعی تعداد چار لاکھ 84 ہزار 655 ہو گئی ہے گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 60 ہزار 405 مریض صحت یاب ہونے کے بعد اس وبا سے نجات پانے والوں کی مجموعی تعداد تین کروڑ 46 لاکھ 30 ہزار 536 ہوگئی ہے ۔ اسی مدت میں 17 لاکھ 61 ہزار 900 کووڈ ٹسٹ کیے گئے ہیں۔دوسری طرف، ملک کی 27 ریاستوں میں اب تک 4,868 لوگ کووڈ کے نئے ویرینٹ اومیکرون سے متاثر پائے گئے ہیں، جن میں مہاراشٹر میں سب سے زیادہ 1281، دہلی میں 546 اور کرناٹک میں 479 کیسز ہیں۔ اومیکرون سے 1805 افراد صحت یاب ہو چکے ہیں۔
 
 

جموں کشمیر میں 146آکسیجن پلانٹوں کی تنصیب مکمل

 پیداوار کی صلاحیت 1لاکھ 26ہزار لیٹرفی منٹ تک پہنچ گئی

پرویز احمد 
 
سرینگر // کورونا وائرس کی ممکنہ تیسری لہر سے نپٹنے کیلئے ضلع ، سب ضلع اسپتالوں اور پرائمری ہیلتھ سینٹروں میں آکسیجن پلانٹوں کی تنصیب مکمل  ہونے کے ساتھ ہی نصب شدہ پلانٹوں کی تعداد146ہوگئی ہے۔مختلف طبی اداروں میں نصب شدہ پلانٹوں میں2000 لیٹر فی منٹ کی صلاحیت والے 20 پلانٹ ضلع اسپتالوں، ایک ہزار لیٹر فی منٹ کی صلاحیت والے 30 پلانٹ سب ضلع اسپتالوں اور پرائمری ہیلتھ سینٹروں میں 500اور 300لیٹر فی منٹ کی صلاحیت والے 30 پلانٹوں کی تنصیب کو یقینی بنایا گیا ہے۔ اس کے علاوہ جموں و کشمیر میں قائم میڈیکل کالجوں، سکمز صورہ اور سکمز میڈیکل کالج اور دونوں صوبے میں فوج کی جانب سے قائم کئے گئے 500بستروں والے ڈی آر ڈی او اسپتالوں میں بھی آکسیجن پلانٹوں کی تنصیب کو یقینی بنایا گیا ہے۔وادی میں آکسیجن کی سپلائی یقینی بنانے کیلئے تعینات نوڈل آفیسر ڈاکٹر منظور احمد نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا ’’ کشمیر صوبے کے 10ضلع اسپتالوں میں 2000لیٹر فی منٹ آکسیجن پیدا کرنے والے 10پلانٹ، وزیر اعظم فنڈ سے حاصل ہونے والے 1000لیٹر فی منٹ پیداوار کی صلاحیت والے 15آکسیجن پلانٹ ،سب ضلع اسپتالوں میں 1000لیٹر فی منٹ کی صلاحیت والے  10پلانٹ اور اس کے علاوہ پرائمری اور کیمونٹی ہیلتھ سینٹروں میں 500لیٹر فی منٹ اور 300لیٹر فی منٹ کے 15آکسیجن پلانٹ قائم ہیں۔ ڈاکٹر منظور نے بتایا کہ اس کے علاوہ جواہر لال نہرو میموریل اسپتال رعناواری میں 3000لیٹر فی منٹ ، سکمز میڈیکل کالج بمنہ ، میڈیکل کالج سرینگر میں آکسیجن پلانٹ نصب کئے گئے ہیں۔ ڈاکٹر منظور نے بتایا’’ لل دید، صدر اسپتال، جی بی پنتھ، کشمیر ویلی نرسنگ ہوم ، سپر سپیشلٹی اسپتال شرین باغ کے علاوہ گورنمنٹ میڈیکل کالج اننت ناگ اور بارہمولہ میں بھی آکسیجن پلانٹوں کی تنصیب کو یقینی بنایا گیا ہے۔ ڈاکٹر منظور نے بتایا ’’ کشمیر میں آکسیجن پیدا کرنے کی صلاحیت 11ہزار لیٹر فی منٹ سے بڑھ کر 60ہزار لیٹر فی منٹ سے زیادہ ہوگئی ہے۔انہوں نے کہا کہ پرائمری ہیلتھ سینٹروں میں نصب ہونے والے آکسیجن پلانٹوں کو ضرورت پڑنے پر شروع کیا جائے گا۔ ڈاکٹر منظور نے بتایا ’’پرائمری ہیلتھ سینٹر نورباغ، پرائمری ہیلتھ سینٹر زیون، پرائمری ہیلتھ سینٹر چھانہ پورہ اور 12دیگر پرائمری ہیلتھ سینٹروں میں آکسیجن پلانٹوں کی تنصیب مکمل ہے اور ضرورت پڑنے پر ان پلانٹوں کو ایک گھنٹہ میں قابل استعمال بنایا جاسکتا ہے۔ انہوں نے کہا ’’ اسی طرح جموں صوبے کے ہر ضلع اور سب ضلع اسپتالوں میں آکسیجن پلانٹوں کو نصب کیا گیاہے اور مجموعی طور پر جموں و کشمیر میں 146آکسیجن پلانٹ دستیاب ہیں جن سے 1لاکھ 26ہزار لیٹر فی منٹ آکسیجن پیدا کرنے کی صلاحیت موجود ہے۔ 
 
 

 کووِڈ میں اِضافے پر صحت عامہ کی تیاریاں

چیف سیکریٹری کامیٹنگ میں جائزہ ،ٹیکہ کاری مہم تیز کرنیکی ہدایات

نیوز ڈیسک
 
جموں//چیف سیکریٹری ڈاکٹر ارون کمار مہتا کی صدارت میں کووِڈ ٹاسک فورس کی میٹنگ منعقد ہوئی، جس میں کووِڈ معاملات میں اِضافے کے پیش نظر صحت عامہ کے ردِّعمل  اور جموںوکشمیر میں انفیکشن کی مؤثر روکتھام اور مختلف تحفظی اور تخفیفی اِقدامات کا جائزہ لیا گیا۔میٹنگ کو جانکاری دی گئی کہ جموںوکشمیر کی اہل آبادی کو 1.94کروڑ ٹیکے لگائے گئے ہیں۔ 15برس سے 17برس عمر تک کے زُمرے میں ٹیکہ کاری مہم کو مزید تیز کیا جارہاہے اور اس میں پہلے ہی 32 فیصد ہدف حاصل کیا گیا ہے۔چیف سیکریٹری نے محکمہ صحت و طبی تعلیم سے کہا کہ وہ کمزور آبادیوں میں مدافعتی حفاظتی بوسٹر ڈوز کے اِنتظام کو ترجیح دیں ۔ اِس کے علاوہ 15برس سے 17برس تک عمر کے گروپوں میں ٹیکہ کاری کو تیز کیا جائے اور کووِڈ مخصوص اَدویات کو وافر مقدار میں سٹاک کیا جائے ۔ محکمہ کو ہدایت دی گئی کہ وہ کووِڈ مناسب طرزِ عمل ( سی اے بی ) ، کووِڈ ایس او پیز اور پروٹوکول کی سختی سے عمل آوری کو یقینی بنائے۔چیف سیکریٹری نے عوام سے اپیل کی کہ وہ اَپنی حفاظت کو بڑھائیں اور اِنفیکشن سے ہوشیار اور چوکس رہیں کیوں کہ اِس میں ٹرانسمیشن کی شرح بہت زیادہ ہے اورمختصر مدت میں لوگوں کا بڑا گروپ اس  اِنفکیشن میں مبتلا ہوسکتا ہے۔اُنہوں نے کہا،’’ یہ ہر شہری کی سماجی اور اَخلاقی ذمہ داری ہے کہ وہ اَپنے اور اَپنے آس پاس کے لوگوں کے لئے ذمہ دار ہو ۔ اُنہیں اَپنے خاندان کے اَفراد کے ساتھ ساتھ بڑے پیمانے پر معاشرے کے مفاد میں اِنفکیشن کی کسی بھی علامت کے خلاف مستعدی سے کام لینا چاہیے۔لوگوں سے مزید اپیل کی گئی کہ وہ رَش والی جگہوں پر جانے سے گریز کریں اور تمام علامات والے اَفراد اَپنے آپ کو مناسب طریقے سے الگ تھلگ رکھیںاور ضرورت پڑنے پر طبی اِمداد حاصل کریں۔ ہوم آئیسولیشن کی عدم دستیابی کی صورت میں کووِڈ کیئر سینٹر کی سہولیات سے فائدہ اُٹھایا جاسکتا ہے۔چیف سیکریٹری نے جموںوکشمیر میں ٹیسٹنگ کی سہولیات کو تیز کرنے کی ہدایت دی کہ آنے والے دِنوں میں روزانہ زائد اَز 2لاکھ ٹیسٹ کرائے جائیں جبکہ رابطے کا پتہ لگانے کا تناسب 15:1 پر برقرار رکھا جائے۔ٹاسک فورس کو مزید بتایا گیا کہ اِی سی آر پی ۔II کے تحت تمام بنیادی ڈھانچے کی تیاریاں مکمل کی گئی ہیں اور آئی سی یو بستروں ، آکسیجن معاون بستروں اور وینٹی لیٹرتیار حالت میں ہیں ۔ اِس وقت جموںوکشمیر میں بستروں کی تعداد 10 فیصد سے کم ہے اور طبی سہولیات صحت مند اور آرام دہ حالت کو برقرار رکھے ہوئے ہیں۔
 
 

 مدرسین وطلبہ سمیت18افراد مبتلا

آٓئی آئی ٹی جموں کاکیمپس بند

جموں//انڈین انسٹی چیوٹ آف ٹیکنالوجی جموں کوکئی مدرسین وطلبہ سمیت18افرادکوکور ونامیں مبتلاء پانے کے بعدبندکردیاگیا۔ انتظامیہ نے بدھ کو بتایا کہIIT جموں کے طلباء ، فیکلٹی ممبران اور عملہ کے ارکان سمیت کم از کم 18 افرادکے کوروناٹیسٹ مثبت پائے گئے۔ اس کے بعد،انڈین انسٹی چیوٹ آف ٹیکنالوجی(IIT) جموں نے اعلان کیا کہ انسٹی چیوٹ کو تدریسی سرگرمیوں کیلئے بند کردیا گیا ہے تاہم یونیورسٹی آن لائن کلاسز کا انعقاد کرے گی اور فیکلٹی ممبران گھر سے ہی کام کریں گے۔