وادی میں اومیکرون کے پہلے 2معاملات درج

جموں کشمیر میں 1148کورونا مثبت، 2اموات

تاریخ    12 جنوری 2022 (00 : 01 AM)   


پرویز احمد

 جموں کشمیر میں کیسوں کی تعداد 8پہنچ گئی، 3جموں اور 3غیر ریاستی شہری بھی شامل

 
سرینگر //وادی میں اومیکرون کے پہلے 2کیس سامنے آئے ہیںاسطرح مجموعی طور پر ابتک 8افراد اومیکرون سے متاثر ہوئے ہیں۔ اس دوران منگل کو کورونا وائرس  کے یومیہ کیسز میں زبردست اچھال آیا اور  138مسافروں سمیت مزید 1148 افراد کی رپورٹیں مثبت آئیں۔ ان میں 13ٖڈاکٹر، 12پولیس اہلکار، ایک درجن فورسز جوان بھی شامل ہیں۔ اس دوران جموں صوبے میں مزید 2افراد وائرس سے فوت ہوگئے۔ متوفین کی مجموعی تعداد 4546ہوگئی ہے۔ جموں و کشمیر میں  20سے 27دسمبر تک بھیجے گئے نمونوں میں8متاثرین کی جینوم رپورٹ میں’’ اومیکرون‘‘ کی تصدیق ہوئی ہے جن میں5 جموں و کشمیر، 2مہاراشٹرا اور ایک گجرات سے تعلق رکھتا ہے۔ مہارااشٹر اور گجرات کے تین شہری واپس بھی چلے گئے ہیں۔جموں و کشمیر میں جن 5متاثرین میں اومیکرون کی تصدیق ہوئی ، ان میں 3جموں جبکہ کشمیر 2سے تعلق رکھتے ہیں ۔ جنوبی ضلع میں ایک شہری کو اومیکرون وائرس میں مبتلا پایا گیا۔ انچارج سی ایم او ڈاکٹر محمد یوسف نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ 40سالہ شہری 24دسمبر کو دوبئی سے وادی واپس لوٹ آیا ۔ائر پورٹ پر کورونا رپورٹ مثبت آنے کے بعد اسے ڈی آر ڈی او اسپتال کھنموہ میں داخل کیا گیا۔انہوں نے کہا کہ  وہ 10روز تک اسپتال میں زیر علاج رہا لیکن اسکے نمونے دلی بھیج دیئے گئے ہیں جس کی رپورٹ منگل 11جنوری کو موصول ہوئی ہے جس میں اسے اومیکرون میں مبتلا پایا گیا ہے۔تاہم انکا کہنا تھا کہ مذکورہ شہری کی رپورٹ اب منفی آئی ہے اور اسے اسپتال سے رخصت کیا جاچکا ہے۔ادھروادی کے سرحدی علاقے اوڑی کے دنی سیدان چندن واڑی علاقے سے تعلق رکھنے والے 30سالہ حاملہ خاتون کی جینوم رپورٹ میں اومیکرون کی تصدیق ہوئی ہے۔ ایس ڈی ایم او ڑی ہروندر سنگھ نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا ’’مذکورہ خاتون کا نمونہ ایس ڈی ایس او ڑی سے 20دسمبر 2021کو حاصل کیا گیا تھا لیکن اسکی رپورٹ منگل کو 20دن بعد موصول ہوئی‘‘۔ایس ڈی ایم نے بتایا کہ مذکورہ خاتون کا ٹیسٹ کیا گیا جو اب منفی آیا ہے اور اسکی حالت ٹھیک اور مستحکم ہے۔جموں صوبے میں 3متاثرین کے نمونوں میں اومیکرون کی تصدیق ہوئی ہے جو چھنی ہمت اور ، کنال روڑ جموں سے تعلق رکھتے ہیں۔ان تینوں متاثرین کے نمونے جی ایم سی جموں سے 24دسمبر کو جینوم سیکونسینگ کیلئے دلی بھیجے گئے تھے۔ اس طرح جموں و کشمیر میں اومیکرون متاثرین کی تعداد 8ہوگئی ہے۔ اس کے علاوہ 20دسمبر کو کشمیر آنے والے 3سیاحوں کے رپورٹ مثبت آئے تھے جن میں 2ممبئی جبکہ ایک گجرات سے تعلق رکھتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ممبئی کے 2سیاح اور گجرات کا ایک سیاحؓ 22دسمبر سے 27دسمبر 2021کے دوران کشمیر آئے تھے لیکن رپورٹ مثبت آنے کے بعد وہ تینوں سے سیاح واپس چلے گئے۔ انہوں نے کہا کہ متاثرہ سیاحوں میں ایک 19سالہ لڑکی اور 22اور 40سال کے دور مرد سیاح شامل ہیں۔ 
کورونا وائرس
 جموں و کشمیر میں پچھلے 24گھنٹوں کے دوران کورونا وائرس کی تشخیص کیلئے 54ہزار679  ٹیسٹ کئے گئے جن میں 138مسافروں سمیت 1148افراد کی رپورٹیں مثبت آئیں ۔ مثبت قرار دئے گئے 1148افراد میں 13ڈاکٹر ، 12 آر پی ایف اور پویس اہلکار بھی شامل ہیں،جموں میں 640جبکہ کشمیر میں 508افراد کی رپورٹیں مثبت آئی ہیں۔ کشمیر میں 508افراد میں 83افراد بیرون ریاستوں کا سفر کرکے واپس کشمیر لوٹے جبکہ دیگر 425افراد مقامی سطح پر متاثر ہوئے ہیں۔ کشمیر میں متاثر ہونے والے 508افراد میں سرینگر میں 256، بارہمولہ میں 94، بڈگام میں 59، پلوامہ میں 12، کپوارہ میں 30، اننت ناگ میں 18، کپوارہ میں 30، اننت ناگ میں 18، بانڈی پورہ میں 19، گاندربل میں 5، کولگام میں 13، جبکہ شوپیان میں 2افراد متاثر ہوئے ہیں۔ وادی میں پچھلے 24گھنٹوں کے دوران کسی کی موت نہیں ہوئی ہے۔ جموں صوبے میں کورونا وائرس سے 640افراد متاثر ہوئے ہیں جن میں 55بیرون ریاستوں سے سفر کرکے جموں پہنچے جبکہ 585مقامی سطح پر رابطے میں آنے کی وجہ سے متاثر ہوئے ہیں۔ جموں صوبے کے 640متاثرین میں جموں میں 301، ادھمپور میں 77، راجوری میں 29، ڈوڈہ میں 10، کٹھوعہ میں 64، سانبہ میں 26، کشتواڑ میں 4، پونچھ میں 45، رام بن میں 13، جبکہ ریاسی میں 71افراد کی رپورٹیں مثبت آئی ہیں۔ جموں صوبے متاثرین کی تعداد 1لاکھ29ہزار 149ہوگئی ہے۔ اس دوران منگل کو جموں صوبے میں مزید 2افراد کورونا وائرس سے فوت ہوگئے۔ جموں صوبے میں متوفین کی مجموعی تعداد 2211ہوگئی ہے۔ 
 
 

سکمز فیکلٹی ممبران کی چھٹیاں منسوخ

جی ایم سی سرینگر اور  اننت ناگ میں تدریسی عمل معطل

پرویز احمد 
 
سرینگر // شیر کشمیر انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز صورہ نے تمام چھٹیاںمنسوخ کردی ہیں ۔ ڈائریکٹر سکمز ڈاکٹر پرویز احمد کول کی جانب سے جاری کئے گئے حکم نامہ میںکہا گیا ہے کہ کورونا متاثرین کی تعداد میں اچانک اضافہ کو دیکھتے ہوئے سکمز میں فیکلٹی ممبران کی سردی کی چھٹیاں منسوخ کی گئی ہیں۔ حکم نامہ میں مزید کہا گیا ہے کہ تمام فیکلٹی ممبران فوراًً اپنی ڈیویٹوں پر حاضر ہوجائیں۔ ادھر گورنمنٹ میڈیکل کالج سرینگر نے ایم بی بی ایس اور پیرا میڈیکل کالج میں زیر تعلیم طلبہ کا روزمرہ درس وتدریس کا کام معطل کردیا ہے۔ پرنسپل گورنمنٹ میڈیکل کالج ڈاکٹر سامیہ رشید کی جانب سے جاری کئے گئے حکم نامہ میں کہا گیاہے کہ ایم بی بی ایس اور بی ایس سی پیرا میڈیکل کورسز کے بلواسطہ کلاسوں کو منسوخ کردیا گیا ہے لیکن آن لائن کلاسز اور کلینکل پوسٹنگ متعلقہ شعبہ جات کی جانب سے پہلے سے طے شدہ وقت پر منعقد ہونگے۔ ادھر جی ایم سی اننت ناگ میں بھی روزمرہ کا تدریسی کام معطل کیا گیا ہے۔پرنسپل گورنمنٹ میڈیکل کالج سرینگر ڈاکٹر سید طارق قریشی نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ کالج میں پہلے ہی تدریسی عمل منسوخ کیا گیا ہے لیکن طلبہ کیلئے آن لائن کلاسز جاری ہیں۔ یہ بات قال ذکر ہے کہ کورونا وائر س متاثرین میں اضافہ کے بعد ہی پیر کو جی ایم سی سرینگر اور اس سے منسلک اسپتالوں میں تدریسی عملہ کی چھٹیاں منسوخ کی گئی ہیں۔ 
 
 

۔15سے زائد ملازمین مثبت

جے کے بینک اور ایس پی آئی کے3برانچ بند

عازم جان 
 
بانڈی پورہ //15ملازمین کے کورونا ٹیسٹ مثبت آنے کے بعد بانڈی پورہ میں جموں کشمیر کی 2شاخوں کو بند کردیا گیا جبکہ مینڈھر پونچھ میں SBIکی شاخ کو بھی بند کیا گیا۔ضلع مجسٹریٹ کے احکامات کے مطابق مین برانچ اور ٹی پی نو پورہ میں15 بنک ملازمین کے ٹیسٹ مثبت آئے، جس کے بعد دونوں شاخوں کو بند کیا گیا ہے۔ سبھی ملازمین کو قرنطین کیا گیا ہے اور انکے رابطے میں آنے والوں کو کورونا ٹیسٹ کرنے کی صلاح دی گئی ہے۔ کووڈ 19 کی رفتار بڑھنے کے پیش نظر ڈپٹی کمشنر ڈاکٹر اویس احمد کی صدارت میں ایک میٹنگ کے دوران کورونا ایس او پیز پر من و عن عملدر آمد کرنے کی ہدایات دی گئیں۔اُدھرکچھ ملازمین کے کووڈ19ٹیسٹ مثبت آنے کے بعداسٹیٹ بینک آف انڈیا مینڈھرشاخ کو بندکردیاگیا۔ بلاک میڈیکل آفیسر مینڈھر ڈاکٹر پرویز احمد خان نے کہا کہ کچھ بینک ملازمین کے کووڈ19ٹیسٹ مثبت آئے ہیں۔اْنہوں نے کہا کہ برانچ کو احتیاطی اقدام کے طور پر بند کر دیا گیا۔ 
 
 

سرینگر کے 13علاقوں میں پابندیاں 

 ضلع میں 210علاقوں میں سرگرم معاملات موجود

پرویز احمد 
 
سرینگر //ضلع انتظامیہ سرینگر نے 13علاقوں کو محدود پابندیوں والے زمرے میں شامل کرلیا ہے۔اسطرح سرینگر میں محدود پابندی والے علاقوں کی موجودہ تعداد 210ہوگئی ہے ، شہر میں ابتک مجموعی طور پر 462علاقوں پر محدود پابندیاں عائد کی گئی ہیں۔ ضلع مجسٹریٹ محمد اعجاز کی جانب سے 11جنوری 2022کو جاری کئے گئے حکم نامہ میں کہا گیا ہے کہ 4زونوں میں آنے والے 13علاقوں میںمحدود پابندیاں عائد کی گئی ہیں۔ میڈیکل زون بٹہ مالو کے 4علاقوں،نیو ایئر پورٹ روڈ پیر باغ  نزدیک جے کے پبلک سکول میں 4، بال گارڈن نزدیک ماڈرن پبلک سکول بٹہ مالو میں 5، عمر آباد سیکٹر اے پیر باغ میں 4 اور باغ حیدر ، حیدرپورہ میں 3معاملات سرگرم ہیں۔ میڈیکل زون زڈی بل میں 3علاقوں پر محدود پابندیاں عائد کی گئی جن میں محبوب کالونی حول میں 3، سید کالونی زکورہ نزدیک آنگن واڑی سینٹر میں 6، غوثیہ لین اے عمر کالونی متصل غوثیہ مسجدمیں 4 معاملات سرگرم ہیں۔ میڈیکل زون خانیار میں 5علاقوں کو محدود پابندی والے  کے زمرے میں لایا گیا ہے جن میںچودھری باغ رعناواری میں 3، بھشمبر نگر خانیار نزدیک علمدار مسجد5 ،منور آباد نزدیک ہوٹل اخوان میں 3، سونہ وار نزدیک روز ووڈ سکول میں 3، مغل محلہ نزدیک ایئر ٹیل ٹاور رعناواری میں 5معاملات سامنے آئے ہیں۔میڈیکل زون حضربل میں  ملہ باغ نزدیک ڈیلی نیڈس مارٹ ملہ باغ میں 3معاملات سرگرم ہونے کی وجہ سے علاقے کو محدود پابندی والے علاقے میں شامل کیا گیا ہے۔  
 
 

اومیکرون کے 4461معاملات

ملک میں کورونا کے 1لاکھ 68ہزار سے زائد کیسز،277 ہلاکتیں

یو این آئی
 
نئی دہلی// ملک میں کورونا وائرس کی وبا ایک بار پھر تیزی سے پھیل رہی ہے ۔ گزشتہ 24گھنٹوں کے دوران کوروناوائرس کے ایک لاکھ 68 ہزار 63 نئے کیسز سامنے آئے ، جس سے ایکٹو کیسز کی تعداد بڑھ کر آٹھ لاکھ 21 ہزار 446 ہو گئی ہے اور اس سے یومیہ کیسز کی شرح 10.64 فیصد تک پہنچ گئی ہے ۔مرکزی وزارت صحت کی طرف سے جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق متاثرہ افراد کی کل تعداد بڑھ کر تین کروڑ 58 لاکھ 75 ہزار 790 ہو گئی ہے ۔نئے کیسز میں اضافے سے ایکٹیو کیسز کی تعداد 8 لاکھ 21 ہزار 446 ہو گئی ہے ۔ اسی عرصے میں مزید 277 مریضوں کی موت کے بعد ہلاکتوں کی مجموعی تعداد چار لاکھ 84 ہزار 213 ہو گئی ہے ۔دوسری جانب اب تک ملک کی 28 ریاستوں میں 4461 لوگ کووڈ کے اومیکرون ویرینٹ سے متاثر پائے گئے ہیں، جن میں مہاراشٹر میں سب سے زیادہ( 1247 ) کیسزہیں، اس کے بعد راجستھان میں 645، دہلی میں 546 اور کرناٹک میں 479 افراد ویرینٹ سے متاثر ہیں۔ اومیکرون کے وائرس سے 10711 افراد صحت یاب ہو چکے ہیں۔

تازہ ترین