بارہمولہ میں 2 لشکر جنگجو گرفتار، اسلحہ بر آمد : پولیس

عظمیٰ ویب ڈیسک

بارہمولہ// شمالی کشمیر کے بارہمولہ ضلع میں پولیس نے بدھ کے روز لشکر طیبہ کے دو ہائبرڈ ملی ٹینٹوں کو گرفتار کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔
پولیس ترجمان نے بتایا کہ عسکری تنظیم لشکر طیبہ کے دو ہائبرڈ جنگجووں کو اسلحہ اور گولہ بارود کے ساتھ قصبے کے آزاد گنج علاقے میں ناکہ چیکنگ کے دوران حراست میں لیا گیا۔
اُنہوں نے بارہمولہ میں عسکریت پسندوں کی نقل و حرکت کے بارے میں ایک مخصوص معلومات پر کہا کہ گرفتار افراد آئندہ یوم آزادی کے پیش نظر قصبہ میں عسکری سرگرمیاں انجام دے سکتے تھے۔
اُنہوں نے کہا کہ بارہمولہ پولیس، 53 بٹالین سی آر پی ایف اور فوج کی 46 آر آر کے مشترکہ اہلکاروں نے آزاد گنج اولڈ ٹاو¿ن بارہمولہ میں ایک ایم وی سی پی لگایا، دو مشتبہ افراد جو آزاد گنج بارہمولہ کی طرف آرہے تھے، مشترکہ ناکہ پارٹی کو دیکھ کر فرار ہونے کی کوشش کی لیکن انہیں حکمت سے پکڑ لیا گیا۔
ترجمان کہا کہ ان کی ذاتی تلاشی کے دوران ان کے قبضے سے 1 پستول، 1 پستول میگزین، 4 زندہ پستول کے راوند اور 1 دستی بم برآمد ہوا اور انہیں فوری طور پر تحویل میں لے لیا گیا۔
اُنہوں نے گرفتار افراد کی شناخت فیصل مجید گنائی ولد عبدالمجید ساکنہ بنگلہ باغ بارہمولہ اور نورالکامران گنائی ولد محمد اکبر گنائی ساکنہ باغ اسلام اولڈ ٹاو¿ن بارہمولہ کے طور پر کی ہے۔
ترجمان نے مزید کہا کہ ابتدائی تفتیش کے دوران یہ بات سامنے آئی ہے کہ دونوں افراد ہائبرڈ جنگجو ہیں اور کالعدم عسکری تنظیم لشکر طیبہ سے وابستہ ہیں اور انہوں نے آنے والے یوم آزادی کے پیش نظر قصبہ بارہمولہ میں عسکری کارروائیوں کے لیے اسلحہ اور گولہ بارود اکٹھا کیا تھا۔
انہوں نے کہا کہ انڈین آرمز ایکٹ اور یو اے (پی) ایکٹ کے تحت پولیس تھانہ بارہمولہ میں مقدمہ درج کیا گیا اور تحقیقات کی گئیں۔