۔6 افریقی ممالک کو ویکسین کی تیاری کی ٹیکنالوجی ملے گی:عالمی ادارہ صحت

 جنیوا//یو این آئی//عالمی ادارہ صحت نے جمعہ کو اعلان کیا کہ مصر، کینیا، نائیجیریا، سینیگال، جنوبی افریقہ اور تیونس ان پہلے چھ افریقی ممالک میں شامل ہوں گے جنہیں جدید ویکسین بنانے کے لیے درکار ٹیکنالوجی ملے گی۔کل برسلز میں یورپی افریقی یونین کے سربراہی اجلاس میں ڈبلیو ایچ او کے ڈائریکٹر جنرل ڈاکٹر ٹیڈروس گیبریئس نے پہلے چھ ممالک کے ناموں کا اعلان کیا جو افریقی براعظم میں ایم آر این اے ویکسین بنانے کے لیے درکار ٹیکنالوجی حاصل کریں گے ۔ ان میں مصر، کینیا، نائجیریا، سینیگال، جنوبی افریقہ اور تیونس شامل ہیں۔ ان سب نے ٹیکنالوجی حاصل کرنے کے لیے درخواست دی ہے ۔بیان کے مطابق جدید ٹیکنالوجی حسب ضروری آپریشنل عمل تک رسائی کو یقینی بنا کر اور بڑے پیمانے پر بین الاقوامی اصولوں کے مطابق ویکسین تیار کرنے کے طریقے کو یقینی بنا کر ویکسین بنانے والوں کی مدد کرے گا۔ڈبلیو ایچ او کے سربراہ نے بتایاکہ "صحت کی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے اور وسط سے طویل مدتی ہیلتھ ایمرجنسی صورت حال سے نمٹنے اور صحت کی کوریج تک پہنچنے کا بہترین طریقہ یہ ہے کہ تمام خطوں میں یکساں رسائی کے ساتھ ہیلتھ مصنوعات تیار کرنے کی صلاحیت میں نمایاں اضافہ کیا جائے ۔"بیان کے مطابق ڈبلیو ایچ او اور اس کے افریقی اور یورپی شراکت دار ایک روڈ میپ تیار کرنے اور مناسب تربیت اور مدد کو یقینی بنانے کے لیے وصول کنندگان کے ساتھ مل کر کام کریں گے تاکہ ممالک مستقبل قریب میں ویکسین کی تیاری شروع کر سکیں۔تاہم گزشتہ مہینوں میں افریقہ میں کووِڈ-19 ویکسین کی فراہمی میں نمایاں اضافہ ہوا ہے ۔واضح رہے کہ براعظم میں ویکسینیشن کی شرح اب بھی بہت کم ہے ۔