۔50گھپلہ باز وں کا 68ہزار کروڑ روپے کا قرض معاف | مفرور لوگوں کوچھوٹ کیوں ؟کانگریس کا وزیر اعظم مودی سے سوال

نئی دہلی// کانگریس نے کہا کہ جب پورا ملک کورونا بحران سے متحد ہوکر لڑرہا ہے تو مودی حکومت نے بینکوں کے 50گھپلہ باز قرض داروں کا 68ہزار کروڑ روپے سے زیادہ کا قرض معاف کرنے کابے تکا اور بے جواز قدم اٹھایا ہے اس لئے وزیراعظم نریندر مودی کو بتانا چاہے کہ مفرور لوگوں کو کس بنیاد پر یہ چھوٹ دی گئی ہے ۔کانگریس محکمہ مواصلات کے سربراہ رندیپ سنگھ سرجے والا نے منگل کو یہاں پریس کانفرنس میں کہا کہ ریزرو بینک نے 24اپریل کو حق اطلاعات (آر ٹی آئی) ے تحت پہلی بار بتایا کہ حکومت نے بینکوں کا قرض واپس نہیں کرنے والے جن 50بڑے قرض داروں اور مفرورلوگوں کا قرض معاف کیا ہے ان میں وجے مالیا، نیرو مودی، میہول چوکسی اور جتن مہتہ جیسے بڑے گھپلہ بازشامل ہیں۔انہوں نے کہا کہ جب ملک متحد ہوکر کورونا کے خلاف لڑائی لڑرہا ہے ایسے میں حکومت ان گھپلہ بازوں کا 68ہزار 607کروڑ روپے کا قرض معاف کرنا عام لوگوں کے تئیں اس کے جذبہ کو بیان کرتا ہے ۔ انہوں نے کہاکہ یہ کام حکومت کے سربراہ کی رضامندی کے بغیر ممکن نہیں ہے ۔اس لئے وزیراعظم کو ملک کے عوام کو بتانا چاہے کہ حکومت نے یہ قرض کیوں اور کس بنیاد پر معاف کئے ہیں۔ترجمان نے کہا کہ ایک طرف حکومت کہتی ہے کہ اس کے پاس کورونا سے لڑنے کے لئے پیسے کی کمی ہے اس لئے اس نے مرکزی ملازمین کا مہنگائی بھتہ اور راحت بھتہ میں اضافہ نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے اور دوسری طرف ان لوگوں کا قرض معاف کیا جارہا ہے جنہوں نے ملک کے بینکوں کو نقصان پہنچایا ہے اور پیسے واپس کئے بغیر فرار ہوگئے ہیں۔ مسٹر سرجے والا نے کہا کہ یہ بات 24اپریل کو ریزرو بینک سے ملی اطلاع کی بنیاد پر کہہ رہے ہے ۔