۔5ہزارمال بردار ومسافر گاڑیاں کشمیر پہنچی

بانہال //سرینگر جموں شاہراہ منگلوار کو پیرپنچال پہاڑی سلسلے میں برف باری اور بارشوں کی وجہ سے د وقفے وقفے تک بند رہنے کے باوجود مجموعی طور گاڑیوں کی آمدورفت کیلئے کھلی رہی اورمال بردار گاڑیوں کو ادھمپور سے اورمسافر گاڑیوں کو جموں سے کشمیر جانے کی اجازت دی گئی اس دوران  پنتھیا ل کے مقام پر گرتے پتھروں کی زد میں آکر ایک گاڑی تباہ ہوئی تاہم اس میں سوارافراد معجزاتی طور بچ نکلے۔ منگلوارکو ایڈیشنل ڈائریکٹر جنرل ٹریفک ٹی نمگیال نے رام بن بانہال سیکٹروں میں پنتھیال وغیرہ کادورہ کیا اورٹریفک کی بحالی کے انتظامات کاجائزہ لیا۔کل صبح سے ہی شام ساڑھے چار بجے تک جگہ جگہ پتھر پسیاں گرآنے سے متاثرشاہراہ پرٹریفک کوسہ پہر کوبحال کیاگیااورمال بردار اورمسافر گاڑیاں  سرینگر کی طرف بڑھنے لگی۔علاقہ میں بارشوں کاسلسلہ وقفے وقفے سے جاری تھا۔شاہراہ کی تازہ صورتحال کے بارے میں ڈپٹی سپرانٹنڈنٹ ٹریفک نیشنل ہائی وے شمشیرسنگھ مال نے کشمیرعظمیٰ کوبتایا کہ پیر کی شام سے بانہال اور رام بن میں پتھراور پسیاں گرآنے کی وجہ سے شاہراہ کئی گھنٹوں تک بندرہی تاہم وہاں موجود تعمیراتی کمپینیوں کی مشینری کی مددسے سڑک کوصاف کرکے آمدورفت کے قابل بنایا جاتا رہا۔انہوں نے کہا کہ علاقہ میں بارشوں کا سلسلہ رک رک کر جاری ہے اور منگلوار کوپنتھیال کے مقام پرتعمیراتی کمپنی کی طرف سے گاڑیوں کو گرتے پتھروں اور پسیوں سے بچانے کیلئے بنائی گئی سٹیل کی ٹنل پتھروں کی زدمیں آکرتباہ ہوئی ،جبکہ پنتھیال کے مقام پر کشمیرآنے والی ایک گاڑی کوبھی پتھروں کی زدمیں آنے سے نقصان ہواتاہم معجزاتی طور اس میں سوارافراد بچ نکلے۔انہوں نے کہا کہ اس مقام پر لوہے کی ٹنل کی باقیات ہٹانے اورتباہ ہوئی کار کا ملبہ صاف کرنے میں دوگھنٹوں کا وقت لگا اورشاہراہ پر ساڑھے چار بجے ٹریفک کوبحال کیاگیا۔انہوں نے کہا کہ شاہراہ پر برف باری اور بارشوں کے باوجود ٹریفک کی آواجاہی جاری رہی اورقریب پانچ ہزار مال برداراورمسافر گاڑیوں نے جواہر ٹنل پار کی۔ موسم کی صورتحال بہتر ہونے کی صورت میں آج یعنی بدھوار کو گاڑیوں کو وادی سے جموں جانے کی اجازت ہوگی۔