۔35اے کی جس دن شنوائی ہوگی

 سرینگر //مشترکہ مزاحمتی قیادت سید علی شاہ گیلانی ، میرواعظ عمر فاروق اور محمد یاسین ملک نے ر یاست جموں کشمیر کے مستقل اور پشتینی باشندگی قانون 35اے سے متعلق ہندوستان کی سپریم کورٹ میں19 ، 20 اور21   فروری کوہو رہی ممکنہ شنوائی کے پیش نظر کشمیری عوام سے کہا ہے کہ قائدین اس ضمن میں بار ایسوسی ایشن کے ساتھ مکمل رابطے میں ہے اور شنوائی کی حتمی تاریخ کا پتہ چونکہ ایک دن پہلے شام کے 7 بجے تک معلوم ہوجاتی ہے لہٰذا جس دن بھی35A سے متعلق شنوائی ہوگی وہ اُس دن مکمل احتجاجی ہڑتال کر کے اپنی اس موقف کو واضح کریں کہ مستقل باشندگی کے قانون کیساتھ کسی بھی چھیڑ چھاڑ کو برداشت نہیں کیا جائیگا ۔قائدین نے کہا ہے کہ یہ قانون ریاست جموں کشمیر کی متنازعہ حیثیت کیساتھ براہ راست وابستہ ہے کیونکہ ریاست کا  اپنے سیاسی مستقبل کے تعین کے حوالے سے پیدائشی حق یعنیــ حق خود ارادیت کا استعمال ابھی باقی ہے اور اقوام متحدہ نے ریاست کے عوام کو بحثیت قوم کے اپنا مستقبل طے کرنے کیلئے اس حق کی گارنٹی دی ہے۔قائدین نے کہا ہے کہ جموں کشمیر کے عوام نے گذشتہ سال بھی یک زبان ہو کر نئی دہلی کو یہ واضح پیغام بھیجا ہے کہ وہ ان کیخلاف رچائی جارہی ان سازشوں کو کبھی کامیاب نہیں ہونے دینگے اور وہ آج بھی اپنے اس موقف پر چٹان کی طرح قائم ہیں۔