۔3سپر انٹنڈنٹ انجینئروں سمیت 72انجینئر تبدیل

سرینگر// انتظامیہ نے3سپر انٹنڈنٹ انجینئروں سمیت72 انجینئروں کے تبادلے اور تقرریاں عمل میں لائیں جبکہ چیف انجینئر سکمز کا چارج زرعی یونیورسٹی کے چیف انجینئر کو دیا گیا ہے۔ محکمہ تعمیرات عامہ کے پرنسپل سیکریٹری شلیندر کمار کی جانب سے جاری حکم نامہ کے مطابق انتظامیہ کے مفاد میں صورہ میڈیکل انسٹی چیوٹ کے چیف انجینئر کی ذمہ داریاں تا حکم ثانی زرعی یونیورسٹی کشمیر کے انچارج چیف انجینئر جاوید اقبال بخاری کو تفویض کی گئی ہیں، جو اضافی چارج بھی سنبھالیں گے۔ ایک اور علیحدہ حکم نامہ میں کہا گیا ہے کہ3 انچارج سپر انٹنڈنٹ انجینئروں کے تبادلے بھی کئے گئے ہیں ۔ آرڈر کے مطابق انچارج سپر انٹنڈنٹ انجینئر ایسٹیٹس کشمیر سید سجاد احمد کو تبدیل کرکے پی ایچ سی جموںکشمیر جبکہ محکمہ تعمیرات عامہ کولگام ڈویژن کے انچارج سپر انٹنڈنٹ انجینئر اشتیاق احمد ملک کو اکنامک ریکنسٹریکشن ایجنسی میں تعینات کیا گیا ہے جبکہ نثار احمد کو لداخ  کے ماتحت رکھا گیا۔ تبدیل کئے گئے افسران میں22انچارج ایگزیکٹو انجینئر،32انچارج اسسٹنٹ ایگزیکٹو انجینئر،3ڈگری ہولڈر انچارج اسسٹنٹ ایگزیکٹو انجینئر میکنکل،4ڈپلومہ ہولڈر انچارج اسسٹنٹ ایگزیکٹو انجینئر میکنکل،6 ڈگری یافتہ انچارج اسسٹنٹ انجینئر میکنکل، ایک ڈگری یافتہ انچارج اسسٹنٹ انجینئر سیول اور ایک انچارج جونیئر انجینئر سیول شامل ہیں۔
 
 

۔10انتظامی افسروں کی تعیناتی ضلع منرل آفیسر بنائے گئے

بلال فرقانی
 
سرینگر// انتظامیہ نے کشمیر انتظامی سروس کے10افسراں کی ترقیاں عمل میں لاتے ہوئے انکے تبادلے عمل میں لائے اور انکی ضلع منرل افسران کے طور پر انکی تعیناتی عمل میں لائی۔ جمعہ کو جاری حکم نامہ میں کہا گیا ہے کہ انتظامیہ کے مفاد میں ان افسران کے تبادلے اور تقرریاں عمل میں لائی گئی ہیں۔ آرڈر کے مطابق جاوید احمد راتھر کو سرینگر کیلئے ضلع منرل افسر تعینات کیا گیا جبکہ ہلال احمد بٹ کو پلوامہ،سلام الدین کو ادھمپور،پیر زاہد احمد کو بارہمولہ اور شوکت احمد بٹ کو ضلع اننت ناگ کیلئے ڈسڑکٹ منرل افسر تعینات کیا گیا ہے۔آرڈر کے مطابق شجاعت احمد قریشی کو ضلع کپوارہ، راجندر سنگھ کو کھٹوعہ،محمد سعید کو سانبہ اور محمد نصیب کو ضلع راجوری کیلئے بطور ڈسڑکٹ منرل افسر تعینات کیا گیا ہے۔ ان اضلاع میں فی الوقت ضلع افسران کے طور پر تعینات منرل افسران کو محکمہ جیالوجی اینڈ مائننگ کے جوائنٹ ڈائریکٹر کے پاس رپورٹ کرنے کی ہدایت دی گئی ہے۔ حکم نامہ میں مزید کہا گیا ہے کہ جموں کشمیر انتظامی سروس کی مجموعی قوت میں سے ٹائم سکیل سطح کی10 اسامیوں کو جیالوجی اینڈ مائننگ میں منتقل کیا گیا ہے،تاکہ یہ افسران جب تک وہاں تعینات رہیں گے انکی تنخواہ وہاں سے واگزار ہو سکے۔