۔28 ماہ سے اجرت نہیں ملی

 بھدرواہ// بھدرواہ ڈیو لپمنٹ اتھارٹی سے جڑے کیجول لیبرر نے اپنی تنخواہوں کی واگزاری کے مطالبہ کو لے کر جمعرات کو زبردست احتجاج مظاہرہ کیا ۔کیجول لیبرر مرد و خواتین ٹورسٹ ریسپشن سینٹر سرنا میں بھدرواہ کیجول لیبررز یونین اور چناب ویلی ورکرس یونین کے بینر تلے جمع ہوئے اور انہوں نے گذشتہ مسلسل 28ماہ سے تنخواہ کی واگزاری کا مطالبہ کیا۔انہوں نے چیف ایگزیکٹو آفیسر پر ان کی حالت زار کو نظر انداز کرنے کا الزام لگایا۔مظاہرین انتظامیہ خاص طور سے سی ای او ڈاکٹر راجندر پرسادکھجوریہ کے خلاف نعرے لگائے اور کہا کہ انہوں نے جب بھی بقایا تنخواہوں کا مطالبہ کیا توانہیں حراساں کیا گیا۔انہوں نے بتایا کہ انہیںاٹھائیس ماہ سے تنخواہیں نہیں دی گئیں۔انہوں نے کہا کہ وہ اپنے سرکاری فرائض اخلاص اور ایمانداری سے انجام دیتے ہیں۔یونین کے صدر محمد حفیظ نے بتایا کہ تنخواہوں کی عدم ادئیگی کی وجہ سے وہ بچوں کی سکول فیس نہیں دے پاتے۔انہوں نے مزید کہا کہ کچھ کیجول لیبرر سکول فیس جمع نہ کروانے کی وجہ سے بچوں کو سکول نہیں بھیج رہے۔مظاہرین نے کہا کہ صوبہ جموں میں بھدرواہ ڈیو لپمنٹ اتھارٹی کے پاس کافی پیسہ ہے لیکن ہماری بقایا تنخواہیں واگزار نہیں کی جارہی۔ایک کیجول لیبرر محمد اشرف نے بتایا کہ جب بھی سی ای او سے تنخواہوں کا مطالبہ کیاگیا تو وہ منع کر دیتے ہیں اور یہاں تک کہ رجسٹرد کیجول لیبرر کو بھی منع کرتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ انتظامیہ نے انہیں احتجاج کرنے پر مجبور کر دیا ہے اوروہ تب تک جاری رہے گا جب تک ان کی مانگ پوری نہیں ہو تی۔ایک مزدور احتجاجی اقبال بھوانی نے کہا کہ محکمہ تہواروں اور تفریحی سر گر میوں پر کافی روپیہ خرچ کرتا ہے لیکن غریب مزدوروں کی بقایا اجرتیں واگزا رنہیں کی جارہی ،اب ان کے پاس اس کے سواکوئی چارہ نہیں رہا کہ وہ دریائے چناب میں کود جائیں  ۔ دریں اثناء چناب ویلی ورکرس یونین کے صدر طارق زرگر احتجاج میں شرکت کی اور کہا کہ وہ غریب مزدوروں کے احتجاج کی پوری طرح حمایت کرتے ہیں ۔انہوں نے گورنر ستیہ پال ملک سے ذاتی طور مداخلت کرنے کی اپیل کی ۔