۔24گھنٹوں میں کوئی موت نہیں

 سرینگر //بدھ کو جموں و کشمیر میں دوسری مرتبہ کورونا وائرس سے کوئی شخص فوت نہیں ہوا ہے اور اسطرح وائرس سے جان گنوانے والوں کی مجموعی تعداد 1923بنی ہوئی ہے جن میں 716جموں جبکہ 1207کشمیر میں فوت ہوئے ہیں۔ پچھلے 24گھنٹوں کے دوران کورونا وائرس کی تشخیص کیلئے21ہزار 818ٹیسٹ کئے گئے جن میں صرف 109افراد کی رپورٹیں مثبت آئیں اور اس طرح متاثرین کی مجموعی تعداد 1لاکھ 23ہزار 647ہوگئی۔ ان میں 72ہزار 370کشمیر جبکہ 51ہزار 277جموں صوبے سے تعلق رکھتے ہیں۔ نئے 109معاملات میں 45جموں جبکہ 64کشمیر سے تعلق ہے۔ کشمیر صوبے کے 64متاثرین میں سے ضلع سرینگر 36، 3بارہمولہ، 7بڈگام، 3پلوامہ، 3کپوارہ، 6اننت ناگ، 2بانڈی پورہ، 0گاندربل، 3کولگام اور ایک شوپیان سے تعلق رکھتا ہے۔ جموں صوبے کے 45متاثرین میں  38ضلع جموں، 2ادھمپور، 1راجوری، 1ڈوڈہ،0کٹھوعہ، 0سانبہ، 0رام بن، ایک ریاسی اور ایک کشتواڑ سے تعلق رکھتا ہے۔ 

 کوئی موت نہیں

 جموں و کشمیر میں بدھ کو دوسری مرتبہ کوئی بھی شخص کورونا وائرس سے فوت نہیں ہوا ۔ اس سے قبل 3جنوری کو 7ماہ بعد کورونا وائرس سے ہونے والی اموات پر روک لگی تھی لیکن پھر 17دنوں تک متواتر طور پر اموات کا سلسلہ جاری رہا اور بدھ کو دوسری مرتبہ اموات تھم گئیں۔ 
حکومتی بیان
سرکاری بلیٹن میں بتایا گیا ہے کہ نوول کورونا وائرس کے1,23,647معاملات سامنے آئے ہیں جن میں سے1,099سرگرم معاملات ہیں ۔ اَب تک1,20,625اَفراد صحتیاب ہوئے ہیں ۔جموں وکشمیر میں کوروناوائرس سے مرنے والوں کی مجموعی تعداد1,923تک پہنچ گئی ،جن میں سے 1,207کا تعلق کشمیر صوبہ سے اور715کاتعلق جموں صوبہ سے ہیں۔اِس دوران بدھ کو مزید113فرادشفایاب ہوئے ہیںجن میںجموں صوبے کے56اَفراداور کشمیر صوبے کے57اَفرادشامل ہیں۔بلیٹن میں مزید کہا گیا ہے کہ اَب تک 43,19,042ٹیسٹوں کے نتائج دستیاب ہوئے ہیں جن میں سے  20؍جنوری 2021 کی شام تک 41,95,395نمونوں کی رِپورٹ منفی پائی گئی ہے ۔علاوہ ازیں اَب تک10,43,766افراد کو نگرانی میں رکھا گیا ہے جن کا سفر ی پس منظر ہے اور جو مشتبہ معاملات کے رابطے میں آئے ہیں۔ اِن میں34,849اَفراد کو ہوم قرنطین میں رکھا گیا ہے جس میں سرکار کی طرف سے چلائے جارہے قرنطین مراکز بھی شامل ہیں ۔1,099  اَفراد کوآئیسولیشن میں رکھا گیا ہے جبکہ70,170اَفراد کو گھروں میں نگرانی میں رکھا گیا ہے۔اِسی طرح بلیٹن کے مطاب9,35,725اَفرادنے 28روزہ نگرانی مدت پوری کی ہے۔