۔2019اور چلہ کلان کی پہلی برفباری

سرینگر // چلہ کلان کے رواں یخ بستہ ایام میں وادی سمیت جواہر ٹنل کے آر پار پہلی برفباری ہوئی جو رات دیر گئے تک جاری رہی۔محکمہ موسمیات کی پیش گوئی کے مطابق  2019کی پہلی برفباری کے دوران وادی کشمیر کا بیرون دنیا سے زمینی و فضائی رابطہ منقطع ہوگیا ہے ۔محکمہ موسمیات نے اگلے 24گھنٹوں تک موسم ابرالودہ رہنے کا امکان ظاہر کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس دوران وادی کے بالائی علاقوںاور میدانی علاقوں میں ہلکی سے درمیانہ درجہ کی بارشیں بھی ہو سکتی ہیں ادھر صوبائی انتظامیہ نے بالائی علاقوں کے لوگوں سے تلقین کی ہے کہ وہ برف باری کے دوران سفر نہ کریں کیونکہ ان علاقوں میں پسیاں اور پتھر گرنے کا عمل شروع ہو گیا ہے ۔ 

بانہال 

بانہال سے محمد تسکین نے اطلاع دی ہے کہ جمعہ کو بعد دوپہر ٹنل کے آر پار بھاری برف باری کا سلسلہ شروع ہو گیا جس کے نتیجے میں انتظامیہ نے سرینگر جموں شاہراہ کو گاڑیوں کی آمد ورفت کیلئے احتیاطی طور پر بند کر دیا ہے کیونکہ سڑک پر برف کی وجہ سے پھسلن پیدا ہوئی ہے ۔جمعہ کو سرینگر سے جموں گاڑیوں کو جانے کی اجازت تھی اور تین بجے سے قبل جن گاڑیوں نے ٹنل پار کر دیا تھا وہ معمول کے مطابق جموں کی طرف بڑھ گئیں ۔ تاہم ریلوے سٹیشن بانہال اور وادی چناب اور جموں کے درمیان مقامی ٹریفک کو دوطرفہ طور چلنے کی اجازت تھی۔ 

وسطی کشمیر 

سرینگر شہرمیں جمعہ کی دوپہر کے بعد سال نو کی پہلی برف باری ہوئی جس دوران معمولات زندگی درہم برہم ہو کر رہ گئے ۔ شہر میں شام دیگر گئے تک قریب 3انچ برف جمع ہو گئی تھی اور برف باری کاسلسلہ جاری تھا، برف باری کی وجہ سے شہر کی سڑکوں پر پھسلن پیدا ہونے سے گاڑیوں کی آمد ورفت میں خلل پڑا ۔ وہیں جمعہ کو انٹرنیشنل ایئر پورٹ سرینگر پر فضائی ٹریفک میں خلل پڑا اور کم روشنی کے باعث  15اْڑانوں کو معطل کیا گیاہے۔ ائیرپورٹ اٹھارٹی کا کہنا ہے کہ اْڑانوں میں خلل بعد دوپہر سے برفباری کے بعد پڑا۔گاندربل سے نمائندے ارشاد احمد اور کنگن سے غلام نبی رینہ نے اطلاع دی ہے کہ ضلع کے میدانی علاقوں میں 2سے 3انچ برف جمعہ کی شام تک جمع ہو گئی جبکہ کنگن کے گنڈ میں 3انچ سونہ مرگ کے میدانی علاقوں میں 4انچ زوجیلہ ، گمری ، بال تل اور منی مرگ میں تازہ 5 انچ برف جمع ہو گئی ہے ۔تازہ برفباری کی وجہ سے گنڈ ،کلن، اور گگن گیر میں سڑک پر پھسلن پیدا ہونے کے نتیجے میں چھوٹی گاڑیوں کو چلنے میں شدید دقتوں کا سامنا کرنا پڑا۔جموں لداخ شاہراہ کو بھی گذشتہ ماہ سے گاڑیوں کی آمد ورفت کیلئے بند کر دیا گیا ہے ۔بڈگام کے میدانی اور بالائی علاقوں میں بھی تازہ برف باری ہوئی ہے ضلع کے بالائی علاقوں میں 3سے 4انچ برف شام دیر گئے تک جمع ہو گئی تھی جبکہ میدانی علاقوں میں بھی وقفے وقفے سے برف باری کا سلسلہ جاری تھا ۔

شمال وجنوب

کپوارہ سے اشرف چراغ نے اطلاع دی ہے کہ ضلع میں جمعہ کو بعد دوپہر پھر سے بھاری برف باری کا سلسلہ شروع ہو گیا اور آخری اطلاعات ملنے تک ضلع کے میدانی علاقوں میں چار انچ جبکہ بالائی علاقوں میں 10انچ تازہ برف جمع ہو گئی ہے ۔آخری اطلاعات ملنے تک ان علاقوں میں برف باری کا سلسلہ جاری تھا ۔برف باری کی وجہ سے ایک دن تک بحال ہونے کے بعد کرناہ کپوارہ شاہراہ کو پھر سے احتیاطی طور پر گاڑیوں کی آمد ورفت کیلئے بند کر دیا گیا جبکہ کلاروس مژھل ، میلیال کیرن ،زرہامہ جمہ گنڈ اور چوکی بل بڈنمل کی رابطہ سڑکیں تیسرے روز بھی گاڑیوں کی آمد ورفت کیلئے بند پڑی ہیں ادھر کرناہ کپوارہ شاہراہ پر متعدد مسافر گاڑیاں برف باری کی وجہ سے درماندہ ہو گئی ہیں ان گاڑیوں میں بچے خواتین اور بزرگ سفر کررہے ہیں۔ بارہمولہ سے فیاض بخاری کی اطلاع ہے کہ ضلع کے بالائی اور میدانی علاقوں میں جمعہ کی شام تک بھاری برف باری کا سلسلہ جاری تھا جس کے نتیجے میں سرینگر مظفرآباد شاہراہ پر کافی پھسلن پیدا ہونے سے کافی گاڑیوں کی آمد ورفت متاثر ہو کر رہ گئی ۔گلمرگ میں 9 انچ بابا ریشی میں5 انچ اور ٹنگمرگ میں 4 انچ تازہ برف باری ریکارڈ کی گئی ہے ۔ تازہ برف باری کے ساتھ ہی ٹریفک کی نقل و حرکت میں زبردست خلل پڑا ہے جس کی وجہ سینکڑوں مسافر گاڑیاں درماندہ ہو کر رہ گئی ہیں جبکہ ضلع کے ٹنگمرگ ، پٹن ، سوپور اوڑی علاقوں میں بھی بھاری برف باری ہونے کی اطلاعات ہیں ۔بانڈی پورہ سے عازم جان کے مطابق ضلع کے بالائی علاقوں اور میدانی علاقوں میںبعد دوپہر برف باری کا سلسلہ شروع ہوا جو شام دیر گئے تک جاری تھا برف باری کے سبب سرینگر بانڈی پورہ شاہراہ پر پھسلن پیدا ہوئی ہے اس دوران گریز بانڈی پورہ سڑک بھی پچھلے تین روز سے گاڑیوں کی آمد ورفت کیلئے بند پڑی ہے ۔ادھر اننت ناگ ، پلوامہ شوپیاں میں بھی بعد دوپہر اس موسم کی پہلی برف باری ہوئی ہے ۔اننت ناگ سے عارف بلوچ نے اطلاع دی ہے کہ ضلع کے بالائی علاقے جن میں پہلگام ، کوکرناگ شامل ہیں میں بعد دوپہر برف باری کا سلسلہ شروع ہوا جو وقفے وقفے سے جاری تھا جبکہ میدانی علاقوں میں بھی ہلکی برف باری جاری تھی ۔کولگام سے خالد جاوید کے مطابق دمہال ہانجی پورہ کے اہر بل ، نندی مرگ ، دنیو کنڈی مرگ میںجمعہ کو دن کے 12بجے برف باری کا سلسلہ شروع ہوا جو شام دیر گئے تک جاری تھا ان علاقوں میں 6انچ تازہ برف جمع ہونے کی اطلاعات ہیں جبکہ ضلع کے میدانی علاقوں میں ہلکی برف باری ہو رہی ہے ۔پلوامہ سے نمائندے سید اعجازکے مطابق ضلع کے میدانی علاقوں تازہ 4انچ برف جمع ہوئی ہے اور شام دیر گئے تک برف باری کا سلسلہ جاری تھا ۔شوپیاں سے شاہد ٹاک کے مطابق قصبہ میں 5انچ تازہ برف جمع ہو گئی ہے جبکہ ضلع کے ہیر پورہ میں 7انچ ، سدو شوپیاں ، کلر، ناگ بل اور چترگام میں بھی 6 سے 7انچ تازہ برف جمع ہوئی ہے۔ اسی طرح مغل روڑ پر بھی بھاری برف باری کا سلسلہ جاری ہے مغل روڑ پرتازہ 2فٹ برف جمع ہو گئی ہے ۔اس دوران محکمہ موسمیات نے اگلے 24گھنٹوں کے دوران وادی کے بالائی اور میدانی علاقوں میں ہلکی سے درمیانہ درجہ کی برف باری ہونے کا امکان ظاہر کیا ہے ۔
 

کپوارہ ۔کرناہ شاہراہ پرکئی مسافر درماندہ

معمر خاتون حرکت قلب بند ہونے سے فوت

اشفاق سیعید
 
سرینگر // نستہ چھن گلی (سادھنا ٹاپ ) پربرف باری کی وجہ سے درماندہ ہوئی ایک عمر رسیدہ خاتون دل کا دورہ پڑنے سے لقمہ اجل بن گئی۔برف باری کی وجہ سے کرناہ کپوارہ شاہراہ پر خونی نالہ کے مقام پر5گاڑیاں جن میں 4سومو اور ایک ٹاٹا موبائل شامل ہیں، درماندہ ہو کر رہ گئیں ۔ان گاڑیوں میں بچے خواتین اور بزرگ سفر کررہے ہیں ۔معلوم ہوا ہے کہ درماندہ مسافروں نے خونی نالہ سے پیدل سادھنا کی طرف چلنے کی کوشش کی جس دوران ٹیٹوال کی رہنے والی ایک 75سالہ خاتون تاجہ بیگم زوجہ عبدالقیوم دل کا دورہ پڑنے سے لقمہ اجل بن گئی ۔خاتون کی لاش اس وقت سادھنا پر درماندہ ہے۔ اس کے علاوہ وہاں 41مسافر بھی درماندہ ہیںجو کپوارہ سے کرناہ کی طرف جا رہے تھے ۔کرالپورہ پولیس کا کہنا ہے کہ صبح جو گاڑیاں کرناہ کی طرف گئی ہیں وہ چوکی بل سے بنا اجازت گئی ہیں