۔2016میں خراب ہوا ٹرانسفارمر تبدیل نہ ہوسکا

راجوری //سرحدی ضلع راجوری میں محکمہ بجلی کی کارکردگی انتہائی مایوس کن ہے ضلع میں جہاں متعدد علاقوں میں ترسیلی لائنیں لکڑی کے کھمبوں کیساتھ باندھی گئی ہیں وہائیں خراب مشینری کو تبدیل کرنے کیلئے بھی ملازمین و آفیسران سنجیدہ نہیں ہیں ۔سرحدی تحصیل منجا کوٹ کی پنچایت لوہر دھیری رلیوٹ کے مکینوں نے محکمہ پر الزام عائد کرتے ہوئے کہاکہ پنچایت کی وارڈ نمبر 7موڑھ ڈھوک میں 2014میں مرکزی حکومت کی جانب سے شروع کر دہ سکیم راجیو گاندھی گرامین ودیوتکرن یوجنا(RGGVY)کے تحت بجلی کا 25کے وی کا ٹرانسفارمر نصب کیا گیا تھا جس کی مدد سے وارڈ کے کئی کنبوں کو بجلی کی سپلائی فراہم کی جارہی تھی لیکن 2016میں مذکورہ ٹرانسفارمر خراب ہو گیا تھا جس کے بعد محکمہ کے اُس وقت کے ملازمین نے دوسری وارڈ سے صارفین کو عارضی بنیادوں پر بجلی کی سپلائی فراہم کی لیکن اس کے6برس بعد بھی خراب ہوئے ٹرانسفارمر کو نہ تو ورکشاپ منتقل کیا گیا اور نہ ہی مذکورہ سٹیشن پر کوئی نیا ٹرانسفارمر نصب کیا گیا ہے ۔انہوں نے بتایا کہ خراب ٹرانسفارمر کی زمین پر پڑی مشینری اب زنگ آلودہ بھی ہو چکی ہے ۔مکینوں نے بتایا کہ محکمہ کے ملازمین کیساتھ ساتھ فیلڈ آفیسرا ن سے بھی رجوع کیا گیا لیکن جھوٹی یقین دہانیوں کے بغیر 6برسوں سے کوئی عملی کام نہیں کیا گیا ہے ۔مقامی لوگوں نے مانگ کرتے ہوئے کہاکہ محکمہ کو ہدایت جاری کی جائیں تاکہ خراب ٹرانسفارمر کی جگہ نیا بجلی ٹرانسفارمر نصب کر کے صارفین کی پریشانی حل کی جاسکے ۔