۔200ملی ٹینٹ دراندازی کی تاک میں:لیفٹیننٹ جنرل دیویدی | کہا مشرقی لداخ میں حقیقی کنٹرل لائن پرصورتحال مستحکم

نیوز ڈیسک
ادھمپور//شمالی کمان کے سربراہ لیفٹیننٹ جنرل اوپندردیویدی نے کہا ہے کہ حدمتارکہ پردراندازی میں نمایاں کمی ہوئی ہے تاہم اُ س پارابھی بھی200ملی ٹینٹ لانچنگ پیڈوں پراس پارداخل ہونے کی تاک میں ہیں۔انہوں نے کہا کہ ہندپاک سرحد پرفروری2021سے جنگ بندی معاہدہ بہترطور کام کررہا ہے۔انہوں نے کہا کہ جموں کشمیر میں تربیت یافتہ ملی ٹینٹوں کی تعداد میں ہرگزرتے دن کمی ہورہی ہے اوراس سال21بیرونی ملی ٹنٹوں کو مارگرایا گیا ہے۔ایک سول کے جواب میں  انہوں نے کہا ہندپاک سرحد پراُس پار200کے قریب ملیٹنٹ اس پار داخل ہونے کیلئے تیار ہیں اوروہ اس انتظار میں ہیں ۔انہوں نے کہا کہ دراندازی مخالف گرڈ چوک سے مبرا ہے ۔انہوں نے کہا کہ ہم نے اس بات کو یقینی بنایا ہے کہ ریزروفوج دوسرے دائرے میں ہو تاکہ کوئی دراندازی نہ ہو۔دیودیدی نے کہا کہ گزشتہ12ماہ کے دوران جنگ بندی خلاف ورزیاں محدودپیمانے پر ہوئی ہیں ۔انہوں نے تاہم کہا کہ سرحد کے اُس پار ملیٹینٹوں کاڈھانچہ برقرار ہے ۔کم سے کم وہاں چھ بڑے ملی ٹنٹ کیمپ اور29چھوٹے کیمپ ہیں ۔انہوں نے پاک فوج پر ملی ٹنٹ ڈھانچہ کوبرقراررکھنے کاالزام لگایا۔اس دوران لیفٹیننٹ جنرل اپندردیویدی نے جمعہ کوکہا کہ مشرقی لداخ میں حقیقی کنٹرل لائن پرصورتحال مستحکم ہے ،لیکن سخت چوکسی کی حالت میں ہے اورکہا کہ ہندچین سرحد پر فوج کی تیاریوں میں کسی قسم کی چوک نہیں ہوگی ۔انہوں نے کہا کہ بھارت اب چین کی پیپلزلبریشن آرمی کے ساتھ طاقت کی پوزیشن میں بات کررہا ہے اور کہا کہ مواصلاتی رابطے قائم کئے گئے ہیںتاکہ دھینگامشتی کوروکاجائے جیسا کہ پہلے ہوتاتھااور فوجیوں کاآمناسامنا نہیں ہونے کو یقینی بنایاگیا ہے۔لیفٹیننٹ جنرل دیویدی نے کہا کہ جہاں تک آپریشنل تیاریوں کا تعلق ہے ،میں آپ کویقین دلاتاہوں کہ ہندچین سرحد کے ساتھ حقیقی کنٹرول لائن پرحفاظتی چوکسی میں کوئی چوک نہیں برتی جائے گی۔وہ یہاں فوج کے اہتمام سے ایک تقریب کے حاشیہ پرذرائع ابلاغ کے ساتھ بات کررہے تھے۔انہوں نے کہا کہ فورس اور آلات کو اس طرح سے نصب کیاگیا ہے کہ دشمن کو کسی بھی  مہم جوئی کاکوئی موقعہ نہ ملے۔انہوں نے کہا کہ فوج نے مختلف سطحوں پردونوں اطراف کے درمیان مواصلات کے رابطے بنائے ہیں تاکہ پہلے کی طرح کوئی دھینگامشتی نہ ہو۔