۔18برس قبل تعمیرچھاندل ہیلتھ سنٹرکی عمارت کا افتتاح کب ہوگا؟

بارہمولہ//ضلع بارہمولہ کے چھاندل ٹنگمرگ میں 18سال قبل لاکھوں روپے کی لاگت سے تعمیر کیا گیا ایک پرائمری ہیلتھ سینٹرمکمل ہونے کے باوجود بھی دھول چاٹ رہا ہے ۔ اس ہیلتھ سنٹر کا افتتاح آج تک نہیں ہورہاہے ۔ہیلتھ سنٹر کیلئے تعمیر اس عمارت میںڈاکٹروں و نیم طبی عملے کے بجائے بندروں اور پرندوںنے ڈھیرا جمایا ہے اورفقط انتخابات کے دوران فورسز کی تحویل میں دیا جاتا ہے ۔مقامی لوگوں نے بتایا کہ چھاندل ٹنگمرگ ایک دور دارز علاقہ ہے اور اسکے آس پاس درجنوں دیہات  بدر کوٹ ،رنگوالی ،براری کھوڈ،داراکوشی، زنڈہال،ماچھی گنڈ،چنہ چک،چک پرسراشی ،بومکھل،گنی بابا،وانی گام اور دیگر کئی دیہات میں رہائش پذیر آبادی کو طبی سہولیات کیلئے ٹنگمرگ اور کنزر کے اسپتالوں کا رخ کرنا پڑتا ہے ۔مقامی لوگوں کے مطابق سرکار نے اس پرائمری ہیلتھ سینٹر کا 2000میں سنگ بنیاد رکھا جس کے بعد ہیلتھ سنٹر کو مکمل بھی کیا گیا لیکن ستم ظریفی یہ ہے کہ18سال گذرنے کے باوجود بھی اسے چالو نہیں کیا گیا ۔لوگوں کا کہنا ہے کہ لاکھوں روپئے کی مالیت سے تعمیر یہ عمارت سرکارکی نظروں سے قوجھل ہے ۔ایک مقامی شہری اشفاق احمد نے کشمیر عظمیٰ کو بتا یا کہ وہ اس عمارت کو دیکھتے رہتے ہیں اور اس انتظار میں ہیں کہ کب اس کا افتتاح ہوگا اور لوگوں کوطبی خدمات دستیاب ہونگی۔اُ نہوں نے بتایا کہ اگر اس عمارت کو جلد از جلد استعمال میں نہیں لایا گیا تو یہ کھنڈرات میں تبدیل ہو سکتی ہے ۔اس سلسلے میں چیف میڈیکل آفیسر بارہمولہ ڈاکٹربشیر احمد چالکو نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ اگر چہ عمارت مکمل ہوچکی ہے تاہم ابھی تک محکمہ صحت کو عمارت تفویض نہیں کی گئی ہے ۔