۔120بچوں کیلئے3کمرے دستیاب | مڈل سکول حاجن ترال کی عمارت ڈیڑھ سال سے ناقابل استعمال

ترال//گورنمنٹ مڈل سکول حاجن کی سکولی عمارت کو ڈیڑھ سال قبل سیلابی پانی کے ریلے نے سخت نقصان پہنچایا جس کے بعد یہ عمارت ناقابل استعمال بن گئی۔18ماہ کا وقت گزرنے کے باجوودمحکمہ تعلیم نے اس عمارت کی تعمیر وتجدید کی طرف کوئی توجہ نہیں دی ۔ ترال قصبہ سے تقریباً25کلو میٹر دور تحصیل آری پل کے حاجن علاقے میں یہ سکول نالے کے کنارے پر قائم کیا گیا ہے ،جسے اگست2019کو سیلابی پانی کے ایک ریلے نے سخت نقصان پہنچایا۔مقامی لوگوں نے بتایاکہ سرکار نے اس وقت سکول کو دوسری جگہ منتقل کیا تاہم سکول کی عمارت کوڈیڑھ سال کا وقت گزرنے کے باوجود اس عمارت کی مرمت بھی نہیں کی گئی اور نہ سرنو تعمیر کرنے کیلئے کوئی اقدام کیا جارہا ہے۔مقامی لوگوں کے مطابق سکول میں زیر تعلیم تقریباً120 بچوں کیلئے 3کمرے دستیاب ہیں۔اس صورتحال کے نتیجے میں یہاں تعینات عملے کو بھی پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔ذرائع سے معلوم ہوا ہے سکول کی تجدید و مرمت کے لئے 3لاکھ روپے واگزار کئے گئے ہیں تاہم سکولی عمارت پر کام شروع نہیںکیا گیا ہے۔ مقامی لوگوں نے اس سکولی عمارت کی تجدید و مرمت کا مطالبہ یا تاکہ آنے والے تعلیمی سال کے دوران بچوںکو مشکلات کاسامنا نہ کرنا پڑے۔