۔12اضلاع کیلئے ’ زبردست خطرے‘ کی وارننگ سونہ مرگ اور گریز میں برفانی تودے گرے، زوجیلا اور زیڈ مور ٹنلوں پر کام بند، مزدور وں کی منتقلی

 غلام نبی رینہ+عازم جان+اشرف چراغ

کنگن+بانڈی پورہ+کپوارہ// وسطی کشمیر میں زوجیلا ٹنل کے قریب سربل سونہ مرگ علاقے میں ہفتہ کو دوسری باربرفانی تودہ گرا جس کی زد میں آکر میگھا انجینئرنگ اینڈ انفراسٹرکچر لمیٹڈ کے ایک ورکشاپ کو شدیدنقصان پہنچا ، تاہم کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔زوجیلا ٹنل کے بعد زیڈ مور ٹنل پر بھی فی الحال کام بند کردیا گیا ہے۔یاد رہے اسی مقام پر دو روز قبل برفانی تودا گرنے سے کشتواڑ کے دو مزدود زندہ دفن ہوئے تھے۔ادھر تلیل گریز میں بھی ایک بھاری بھر کم برفانی تودا ایک گائوں پر آگرا، جس سے کچھ ڈھانچوں کو نقصان پہنچا تاہم کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔دریں اثناء صوبائی انتظامیہ نے ضلع کپوارہ میں بھاری برفانی تودے گرنے کی وارننگ جاری کردی ہے۔اس سے قبل جموں کشمیر کے12اضلاع کیلئے اسی طرح کی وارننگ جاری کی جاچکی ہے۔حکام نے بتایا کہ سربل کے علاقے میں برفانی تودہ گرا، جس سے ایم ای آئی ایل کے زیر تکمیل ٹنل پروجیکٹ کے قریب ورکشاپ کو نقصان پہنچا۔انہوں نے کہا کہ ورکشاپ کو جزوی طور پر نقصان پہنچا ہے تاہم اس واقعے میں کسی جانی یا مالی نقصان کی اطلاع نہیں ہے۔ایڈیشنل ضلع ترقیاتی کمشنر گاندربل مشتاق احمد نے بتایا کہ ورکشاپ کو معمولی نقصان پہنچا ہے۔انہوں نے یہ بھی کہا کہ تعمیراتی مقام پر کام کرنے والے مزدوروں کو محفوظ مقام پر منتقل کیا جائے گا۔ “ہم نے پہلے ہی وہاں سے کچھ مزدوروں کو شفٹ کیا ہے اور باقی کو بھی شفٹ کر دیا جائے گا۔”قابل ذکر ہے کہ گزشتہ دو دنوں میں اس علاقے میں برفانی تودہ گرنے کا یہ دوسرا واقعہ ہے۔ 12 جنوری کو پروجیکٹ سائٹ کے قریب برفانی تودہ گرنے سے دو مزدور ہلاک ہو گئے۔تازہ واقعہ ہفتے کی شام ساڑھے پانچ بجے پیش آیا۔اس کے نتیجے میں وہاں افرا تفری مچ گئی۔ پروجیکٹ انجینئر برہان اندرابی نے بتایا کہ ان کی نوٹس میں بھی آیا ہے کہ ایک ہلکا برفانی تودہ گرآیا لیکن اس سے کوئی جانی یا مالی نقصان نہیں ہوا ۔دو دن کے دوران 2واقعات پیش آنے کے بعد 6.5کلو میٹر زیڈ مور ٹنل کے باہر بھی کام بند کردیا گیا ہے۔
بانڈی پورہ
شمالی کشمیر کے بانڈی پورہ ضلع میں گریز کے تلیل علاقے میں ہفتہ کے روز برفانی تودہ گرنے سے ایک گاؤں متاثر ہوا۔تاہم اس واقعے میں کسی نقصان کی اطلاع نہیں ملی ہے۔ برفانی تودہ تلیل کے گاؤں جرنیال سے ٹکرا گیا۔حکام نے کہا کہ ٹیمیں پہلے ہی علاقے میں متحرک کر دی گئی ہیں جو صورتحال کا جائزہ لے رہی ہیں۔انہوں نے کہا کہ انتظامیہ کی طرف سے عام لوگوں کو مشورہ دیا گیا ہے کہ وہ محتاط رہیں اور موسم بہتر ہونے تک ڈھلوانوں، پہاڑی علاقوں یا برفانی تودے کے شکار علاقوں میں نہ نکلیں۔
کپوارہ
دریں اثناء جموں و کشمیر حکام نے ہفتے کے روز شمالی کشمیر کے کپواڑہ ضلع کے لیے برفانی تودے کے ‘ہائی خطرے’ کی وارننگ جاری کی ہے۔کپوارہ سمیت 12 اضلاع کے لیے برفانی تودے کی وارننگ جاری کی گئی ہیں جہاں ایک دن پہلے درمیانی سے بھاری برف باری ہوئی۔ ریاستی ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی نے بانڈی پورہ، بارہمولہ، ڈوڈہ، گاندربل، کشتواڑ، پونچھ، رام بن اور ریاسی اضلاع کے لیے ’درمیانی خطرے کی وارننگ‘ جاری کی۔”اگلے 24 گھنٹوں میں کپواڑہ ضلع کے 2,000 میٹر سے زیادہ خطرے کی سطح کے ساتھ برفانی تودہ گرنے کا امکان ہے۔ سرکاری بیان میں کہا گیاہے کہ اگلے 24 گھنٹوں میں بانڈی پورہ، بارہمولہ، ڈوڈا، گاندربل، کشتواڑ، پونچھ، رام بن اور ریاسی اضلاع میں درمیانہ درجے کے خطرے کی سطح کے ساتھ 2,000 میٹر سے زیادہ برفانی تودہ گرنے کا امکان ہے۔عہدیدار نے مزید کہا کہ اگلے 24 گھنٹوں میں اننت ناگ، کولگام اور راجوری اضلاع میں 2000 میٹر سے کم خطرے کی سطح کے ساتھ برفانی تودہ گرنے کا امکان ہے۔حکام نے بتایا کہ ان علاقوں میں رہنے والے لوگوں کو احتیاطی تدابیر اختیار کرنے اور برفانی تودے کے شکار علاقوں میں جانے سے گریز کرنے کا مشورہ دیا جاتا ہے۔