۔ 10,000کلومیٹر لمبی سڑکوں پر تار کول بچھایا جائیگا

 جموں//تعمیراتِ عامہ کے وزیر نعیم اختر نے کہا ہے کہ ریاست میں اگلے مالی سال کے دوران  وزیر اعظم گرام سڑک یوجنا(پی ایم جی ایس وائی )کے تحت 10,000کلومیٹر لمبی سڑکوں پر تار کول بچھایا جائے گا۔ انہوںنے کہا کہ یہ سی آر ایف ، نبارڈ ، ورلڈ بینک، اے ڈی بی، سٹیٹ سیکٹر اور ضلع سیکٹر کے تحت ہاتھ میں لی گئی سکیموں کے علاوہ ہوں گے ۔وزیر موصوف نے ان باتوں کا اظہار حال ہی میں نئی دلی میں دیہی ترقی کی مرکزی وزارت کی طرف سے منعقدہ ایک کانفرنس کے دوران کیا۔انہوںنے کہا کہ جموں و کشمیر کو جغرافیائی اور موسمی سطح پر کئی چیلنجوں کا سامنا ہے تاہم ریاستی حکومت اگلے برس لمبی سڑکوں پر تار کول بچھانے کا کام ہاتھ میں لے گی۔وزیر نے کہا کہ سڑک پروجیکٹوں میں تیز ی لانے کے لئے ریاستی حکومت نے ٹینڈرنگ ، ٹھیکوں کی الاٹمنٹ اور دیگر لوازمات پورا کرنے کے لئے 45دن کا ہدف مقرر کیا ہے تاکہ موثر نتائج برآمد کئے جاسکیں۔نعیم اختر نے کہا کہ سڑک پروجیکٹ عملاتے وقت ماحولیاتی توازن پر پڑنے والے اثرات کو ملحوظ نظر رکھا جانا چاہیے ۔انہوں نے کہا کہ جموں وکشمیر کے لئے پی ایم جی ایس وائی کلیدی اہمیت کی حامل ہے کیونکہ اس کی بدولت ریاست کے دیہی علاقوں میں بہتر سڑک رابطے مہیا ہوئے ہیں۔وزیر نے کہا کہ سڑک رابطو ں کو کسی بھی علاقے کی سماجی و اقتصادی ترقی میں بنیادی حیثیت حاصل ہے۔انہوں نے کہا کہ ہر ایک گائوں تک سڑک پہنچانے کے لئے 18برس پہلے پردھان منتری گرم سڑک یوجنا شروع کی گئی ۔انہوں نے کہا کہ پی ایم جی ایس وائی کے ذریعے سے اناج ، سبزیوں ، میوئوں اور دیگر اشیاء ضروریہ کو وقت پر بازاروں تک پہنچانے میں بھی مدد ملی ہے ۔انہوں نے کہا کہ سڑکوں کی اہمیت کو بانپتے ہوئے مرکزی سرکار نے پی ایم جی ایس وائی کے تحت مکمل دیہی سڑک رابطوں کو یقینی بنانے کا ہدف اب 2019ء رکھا ہے جو پہلے  2022 ء مقرر تھا۔