۔ وادی میں آبی ذخائر جم گئے | سرینگر میں منفی4.8 اور گلمرگ میں منفی 11

سرینگر// وادی کشمیر میں شبانہ درجہ حرارت میں مسلسل گراوٹ آرہی ہے۔ سرینگر میں گذشتہ شب رواں موسم سرما کی اب تک کی سرد ترین رات ریکارڈ کی گئی ۔شہر میں کم سے کم درجہ حرارت منفی 4.8 ڈگری سینٹی گریڈ درج ہوا وہیںسیاحتی مقام گلمرگ وادی کشمیر میں سرد ترین مقام رہا جہاں کم سے کم درجہ حرارت منفی 11.0 ڈگری ریکارڈ ہوا ۔محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ وادی کشمیر میں مطلع صاف رہنے کی وجہ سے کم سے کم درجہ حرارت میں آنے والے دنوں کے دوران مزید گراوٹ آنے کی توقع ہے ۔ منفی درجہ حرارت کی وجہ سے سخت ترین سردی کی لہر رات کے دوران جاری ہے جس کی وجہ سے جھیل ڈل کے کنارے بھی منجمند ہورہے ہیں۔ چلہ کلاں سے قبل ہی اس طرح کی سردی اہل وادی کیلئے نیا تجربہ ہے۔ادھرگذشتہ شب پہلگام میںمنفی 7.4  اورسرینگر میں کم سے کم درجہ حرارت منفی 4.8  ریکارڈ ہوا ۔ قاضی گنڈ میںمنفی 3.3 ،سرحدی ضلع کپوارہ میں منفی 4.8  جبکہ کوکر ناگ میں منفی 5.2 ڈگری ریکارڈ ہوا ۔لداخ یونین ٹریٹری کا قصبہ دراس سرد ترین مقام رہا جہاں کم سے کم درجہ حرارت منفی 18.6 ریکارڈ کیا گیا ۔ ضلع لیہہ میں کم سے کم درجہ حرارت منفی 14.6 ڈگری جبکہ ضلع کرگل میں کم سے کم درجہ حرارت منفی 14.4 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا۔وادی کے درجنوں دور افتادہ دیہات بشمول کیرن، مژھل اور گریز قصبوں کا بدھ کے روز بھی مسلسل ایک ہفتے سے اپنے ضلع ہیڈ کوارٹروں سے رابطہ منقطع رہا، جبکہ مغل روڑ بھی بدستور بند ہے۔متعلقہ حکام کا کہنا ہے کہ ان علاقوں کا ضلع ہیڈکوارٹوں کے ساتھ رابطہ بحال کرنے کیلئے سڑکوں سے برف ہٹانے کا کام شد ومد سے جاری ہے ۔ادھر وادی میں بدھ کے روز بھی موسم نہ صرف خشک رہا بلکہ صبح سے ہی کمزور ہی سہی مگر دھوپ چھائی رہی جس سے لوگوں کو شبانہ سردی سے قدرے راحت نصیب ہوئی۔