یہ کشتی کس محکمہ کی ہے؟ | نہرو پاک میں مہینوں سے پڑی کشتی میں گندی کے ڈھیر جمع

سرینگر //نہرو پاک میں مہینوں سے پڑی ایک کشتی کو ہٹانے میں محکمہ فلوری کلچر ناکام ہو چکا ہے جس کے نتیجے میں وہاں گندی کے ڈھیر لگے ہیں تاہم فلوریکلچر محکمہ کا کہنا ہے کہ کشتی اُن کی نہیں ہے ۔نہرو پارک کے گرد ونواح میں جھیل ڈل کے ایک حصہ میں صفائی کے فقدان کے سبب مقامی وغیر مقامی سیاح مایوس نظر آرہی ہے وہیں واٹر سپورٹ سے وابستہ کھلاڑی بھی پریشان ہیں اور مطالبہ کر رہے ہیں کہ اُس کشتی کو وہاں سے ہٹایا جائے کیونکہ پارک کے بیچ اس قدر پانی گندہ اور میلا ہو گیا ہے کہ اُس کو دیکھ کر سیاح ومقامی سیاخوں کی طبعیت خراب ہو جاتی ہے ۔واٹر سپورٹ کوچ بلقیس میر نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ وہ ہر ہفتے اس کی صفائی کرتے ہیں تاہم اُس کے باوجود بھی وہاں کندگی کے ڈھیر لگے جاتے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ پارک کے بیچ میں ایک بوٹ یعنی نائو پڑی ہوئی ہے جس کو ہٹانے کیلئے انہوں نے محکمہ فلوری کلچر کے ملازمین سے بات کی تاہم اُس کو ہٹانے کے حوالے سے کوئی کارروائی عمل میں نہیں لائی جاتی ہے ۔یاد رہے کہ بیلو ارڈ پر جھیل ڈل میںیہ پارک سیاحوں کی توجہ کا مرکز بنی رہی ہے ۔محکمہ فلوری کلچر کے ڈائریکٹر حفیظ مسعودی نے بتایا کہ نہرو پارک میں اُن کی کوئی کشتی موجود نہیں ہے ۔انہوں نے کہا کہ اگر اُن کی ہوتی تو وہ وہاں سے ہٹا دیتے ۔اب یہ بات سمجھ سے باہر ہے کہ پارک میں یہ کشتی کس محکمہ کی ہے جس سے پارک کے آس پاس گندگی کے ڈھیر لگے ہوئے ہیں ۔