یونانی میڈیکل کالج واکورہ گاندربل | عوام کے نام وقف کرنے کا مطالبہ

گاندربل//واکورہ گاندربل میں 78کنال اراضی پر تعمیرکیاگیایونانی میڈیکل کالج اور60بستروں والا اسپتال مکمل ہونے کے باوجود ابھی تک عوام کے نام وقف نہیں کیا گیا۔ضلع گاندربل میں سال 2008 میں سابق وزیر اعلی غلام نبی آزاد کی قیادت والی مخلوط پی ڈی پی کانگریس حکومت کے دوران یونانی میڈیکل کالج اور 60بستر والے ہسپتال کی سنگ بنیاد رکھی گئی۔دوبرس قبل کروڑوں روپے کی لاگت سے چار شاندار بڑی عمارات کی تعمیر مکمل ہوئی ،لیکن نامعلوم وجوہات کی بنا پر ابھی تک یہاں یونانی اسپتال یامیڈیکل کالج کوشروع نہیں کیاگیا۔اگرچہ سال2018میں .ستم ظریفی یہ ہے کہ جب جب ریاست میں انتخابات منعقد کئے گئے چاہیے وہ بلدیاتی ہو یا کہ پارلیمانی ،اس ہسپتال میں سیکورٹی فورسز کی کئی کمپنیوں کو رکھا گیا جنہوں نے ہسپتال کو کافی نقصان پہنچایا۔نواب باغ واکورہ سے مقامی شہری عبدالرحمان نے کشمیر عظمی کو بتایا کہ پچھلے دس سال سے یونانی میڈیکل کالج اور 60 بستروں والا ہسپتال جو کہ کروڑوں روپے لاگت سے تعمیر کیا گیا ہے نامعلوم وجوہات کی بنا پر عوام کے نام وقف نہیں کیا جارہا ہے ہمارا گورنر انتظامیہ سے مطالبہ ہے کہ اس جانب توجہ دیکر یونانی میڈیکل کالج کو عوام کے نام وقف کیا جائے۔