یوم آزادی سے قبل جموں، سانبہ، کٹھوعہ میں سیکورٹی بڑھا دی گئی | جموں میں ہائی الرٹ سرحد، شاہراہوں پرسخت چوکسی، امرناتھ یاترا 15 اگست تک روک دی گئی

File Photo

سید امجد شاہ

جموں// یوم آزادی کی تقریبات کے پیش نظر جموں، سانبہ اور کٹھوعہ اضلاع کے ساتھ ساتھ تمام بین الاقوامی سرحدوں اور شاہراہوں پر ہائی الرٹ جاری کر دیا گیا ہے۔سول انتظامیہ کے ایک عہدیدارنے بتایا “سیکورٹی الرٹ کے پیش نظر، جموں میں امرناتھ یاتریوں کو 15 اگست 2023 تک معطل رکھا جائے گا کیونکہ سیکورٹی ایجنسیاں یوم آزادی کی تیاریوں میں مصروف ہیں ‘‘۔انکاکہناتھا’’امرناتھ یاتریوں کے بیس کیمپ میں اس وقت یاتریوں کی تعداد کم ہے۔ہم متبادل دنوں میں یاترا طے کر لی ہے‘‘۔دوسری جانب، سیکورٹی فورسز نے ان اضلاع میں 15 اگست 2023 کی تقریبات سے قبل صورتحال کو پرامن اور مستحکم رکھنے کے لیے بروقت معلومات کے تبادلے میں رابطہ کاری اور بہتر تفہیم کے لیے سلسلہ وار میٹنگز کا انعقاد کیا ہے۔

جموںسرینگر قومی شاہراہ ،جموںپٹھانکوٹ ہائی وے پر مشترکہ خصوصی ناکے کی چیکنگ تیز کر دی گئی ہے۔ ان ناکوں پر جے کے پولیس ٹیموں کے ساتھ نیم فوجی دستے کے اہلکار کام کر رہے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ جموں و کشمیر پولیس کا اسپیشل
آپریشن گروپ (ایس او جی) رات کے اوقات میں مشتبہ علاقوں میں تلاشی اور محاصرے کی کارروائیوں میں مقامی پولیس اور دیگر سیکورٹی ایجنسیوں کی بھی مدد کر رہا ہے، جبکہ وہ گاڑیوں کی چیکنگ میں بھی حصہ لیتے ہیں۔ساتھ ہی، بارڈر سیکورٹی فورس کے جوانوں نے کٹھوعہ، ہیرا نگر، سانبہ، رام گڑھ، سچیت گڑھ، آر ایس پورہ، کانا چک، اکھنور اور دیگر سرحدی علاقوں اور سرحد پر واقع دیہاتوں میں بین الاقوامی سرحد کے ساتھ اپنی گشت کو تیز کر دیا ہے۔دریں اثنا، سرحدی علاقوں سے جموں شہر کی طرف جانے والی تمام سڑکوں پر اضافی سیکورٹی دستوں کی تعیناتی اور گاڑیوں کی سرپرائز ناکہ چیکنگ کے ساتھ چیکنگ تیز کر دی گئی ہے۔جموں شہر کے مختلف مقامات پر پولیس کے ذریعہ شناختی کارڈ، مسافروں اور کچھ جگہوں پر مسافروں کی جانچ پڑتال کرتے ہوئے دیکھا گیا۔ سیکورٹی فورسز نے تمام پریشانی پیدا کرنے والوں پر بھی کڑی نظر رکھی ہوئی ہے، اور بھیڑ بھاڑ والی جگہوں اور سیکورٹی تنصیبات کی مسلسل نگرانی کر رہے ہیں۔دریں اثنا، ٹریفک پولیس بھی دیگر سیکورٹی اداروں کے ساتھ مل کر جموں شہر کی گنجان سڑکوں پر ہموار ٹریفک کو یقینی بنانے کے لیے سرگرمی سے کام کر رہی ہے اور لوگوں سے کہہ رہی ہے کہ وہ نو پارکنگ زون میں گاڑیوں کی پارکنگ سے گریز کریں۔