یاسین ملک کا پاکستانی وزیر اعظم کو مشورہ

 سری نگر//لبریشن فرنٹ چیئر مین محمد یاسین ملک نے پاکستانی وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کو مشورہ دیا ہے کہ کشمیر پر ایسے بیانات دینے سے گریز کرنے میں ہی دانشمندی ہے جن سے انتشار پیدا ہونے کا اندیشہ ہو ۔ انہوں نے کہا کہ بھارتی جبر و ظلم کے خلاف آواز بلند کرنا ہی وقت کی اہم ضرورت ہے۔ محمد یاسین ملک شاہد خاقان عباسی کے کشمیر کی آزادی سے متعلق دئے گئے بیان پر تبصرہ کررہے تھے۔ملک نے کہا کہ جموں کشمیر کے لوگ پچھلے70 برس سے اپنے حق خودارادیت اور آزادی کیلئے ایک خونین تحریک مزاحمت چلارہے ہیں۔ اس دوران ہم نے اپنی لاکھوں جانیں قربان کی ہیں اور قربانیوں کا یہ سلسلہ ابھی تک جاری ہے۔ایسے میں لازم ہے کہ پاکستانی حکمران بجائے اس کے کہ کشمیر پر متنازعہ بیانات جاری کریں ‘کشمیریوں پر ہورہے ان بے انتہا مظالم کا نوٹس لیں اور اس ظلم کو دنیا بھر کے ایوانوں میں پہنچا کر کشمیریوں کو اس سے نجات دلانے کی سعی کریں۔ انہوں نے کہا کہ کشمیری اپنے حق خودارادیت اور آزادی کے حصول کی جدوجہدکو جاری رکھنے کا عزم رکھتے ہیں اور ہمیں امید قوی ہے کہ قربانیاں دینے والی یہ قوم و ملت اپنی منزل کو ضرور حاصل کرکے رہے گی۔دریں اثناء انفورسمنٹ ڈائرکٹوریٹ دہلی کی جانب سے محمد یاسین ملک کو منگل کے روز نوٹس موصول ہوگئی ہے۔