یاتریوں کی حفاظت کیلئے ریڈیو فریکوئنسی شناختی نظام

سرینگر//جموں وکشمیر میں سیکورٹی اداروں نے اب کی بار امرناتھ یاتریوں کی حفاظت کو یقینی بنانے کیلئے ریڈیو فریکوئنسی آئیڈنٹی فیکیشن (آر ایف آئی ڈی) ٹیگنگ اور بار کوڈ ٹیکنالوجی کا استعمال کرنے کافیصلہ کیا ہے۔ آر ایف آئی ڈی ٹیگنگ اور بار کوڈنگ کا مقصد یاتریوں اور ان کی گاڑیوں کی لوکیشن کی ہمہ وقت مانیٹرنگ یقینی بنانا ہے۔جموں زون پولیس کے انسپکٹر جنرل منیش کمار سنہا نے میڈیا کو 30 جون سے جموں سے شروع ہونے والی سالانہ امرناتھ یاترا کے دوران استعمال کی جانے والی ٹیکنالوجی کے بارے میں بتایا’’اب کی بار سی آر پی ایف یاترا گاڑیوں کی آر ایف آئی ڈی ٹیگنگ کرے گی، اس کے علاوہ سبھی یاتریوں کو بار کوڈ کے ذریعے رجسٹر کیا جائے گا، لہٰذا یاتریوں سے گزارش ہے کہ وہ اپنی رجسٹریشن کروائیں اور اپنی گاڑیوں پر آر ایف آئی ڈی ٹیگ لگوائیں‘‘۔انہوں نے کہا’’یاتریوں کی ذمہ داری بنتی ہے کہ وہ انتظامیہ کو اپنا مکمل تعاون دیں، جبکہ یاتریوں کو سیکورٹی فراہم کرنا انتظامیہ کا فرض ہے،ہم اس بات کو یقینی بنائیں گے کہ یاترا خوش اسلوبی سے اپنے تکمیل کو پہنچے۔ یاتریوں سے اپیل ہے کہ وہ یاترا قافلوں کا حصہ بن کر پوتر گھپا کی طرف روانہ ہو، اگر آپ قافلے کا حصہ بنتے ہیں تو ہم آپ کو سیکورٹی کی گارنٹی دیتے ہیں۔ یاتری جلد بازی، شارٹ کٹ اور اپنے آپ کشمیر پہنچنے سے اجتناب کریں'۔آئی جی پی جموں نے سالانہ امرناتھ یاترا کو پولیس اور دیگر سیکورٹی فورسز کے لئے ایک بہت بڑا چیلنج قرار دیتے ہوئے کہا کہ سالانہ امرناتھ یاترا کے لئے سیکورٹی کے پختہ انتظامات کئے گئے ہیں۔انہوں نے کہا’’لکھن پور سے جواہر ٹنل تک جو 268 کلو میٹر شاہراہ پانچ اضلاع کٹھوعہ، سانبہ، جموں، اودھم پور اور رام بن سے گزرتی ہے، کو مختلف زونوں اور سیکٹروں میں تقسیم کیا گیا ہے اور زونل سطح پر ایک افسر کو لگایا گیا ہے‘‘۔ سنہا نے کہا کہ یاترا کو سب سے زیادہ دراندازی کا خطرہ رہتا ہے جس کے لئے سیکورٹی گرڈ کو مزید مضبوط کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا’’سالانہ امرناتھ یاترا کو سب سے بڑا خطرہ یہ رہتا ہے کہ کہیں دراندازی نہ ہوجائے اور اس کے بعد کہیں کوئی واردات پیش نہ آجائے اس لئے ہم نے سیکورٹی گرڈ کو مزید مستحکم کیا ہے‘‘۔آئی جی پی نے کہا کہ یاترا کو فول پروف سیکورٹی فراہم کرنے کے لئے بارڈر پولیس فورس کے ساتھ ساتھ بی ایس ایف کی اضافی کمپنیوں کو تعینات کیا گیا ہے، یہ جموں، سانبہ اور کٹھوعہ میں اپنے مورچے لگائیں گے۔انہوں نے کہا کہ بین الاقوامی سرحد کی طرف سے قومی شاہراہ کی طرف آنے والی تمام سڑکوں پر چیک پوسٹ قائم کئے گئے ہیں، کئی جگہ گاڑیوں کی چیکنگ کے لئے چیک پوسٹ لگائے گئے ہیں اور جو شاہراہ کے چیک پوسٹس ہیں انہیں مزید مستحکم کیا گیا ہے وہاں سینٹر پیرا ملٹری فورسز کی اضافی نفری تعینات ہوگی۔ایم کے سنہا نے کہا کہ امسال لنگروں میں خصوصی لائٹس اور سی سی ٹی کیمرے نصب کئے گئے ہیں۔ انہوں نے کہا: 'امسال لنگروں کو تب اجازت دی گئی جب ان میں لائٹوں اور سی سی ٹی کیمرے نصب کئے گئے، تمام لنگروں نے سی سی ٹی وی کیمرے لگائے ہیں اور لائٹس بھی نصب کی ہیں، اور وہاں مستقل طور پر سیکورٹی فورسز تعینات رہیں گے'۔
 

یاترا موبائل ایپ تیار 

نیوز ڈیسک
 
سرینگر// امر ناتھ یاترا پر جانے والے خواہشمند یاتریوں کے لئے شرائین بورڈ نے ایک نئی موبائل ایپ متعارف کی ہے۔اس موبائل ایپ کو مرکزی سرکار کی الیکٹرانکس اینڈ انفارمیشن ٹیکنالوجی وزارت کے نیشنل اِی۔ گورننس ڈویثرن نے تیار کیا ہے۔ یہ ایپ یاتریوں کو ضروری جانکاری فراہم کرے گی تا کہ وہ اپنی یاترا خوش اسلوبی کے ساتھ انجام دے سکیں۔ ایپ کے ذریعے بنیادی جانکاری کے علاوہ موسم سے متعلق تفصیلات اور ہیلتھ ایڈوائزری بھی اس ایپ بھی دستیاب رہے گی۔ اس کے علاوہ اس موبائل ایپ میں ہنگامی حالات کے لئے کال الرٹ سسٹم بھی دستیاب ہے۔یاتری اپنی یاترا اجازت نامہ فارم نمبر کے ذریعے اس ایپ میں لاگ اِن کرسکتے ہیں۔اس سے شرائین بورڈ کو اس یاتری کے بارے میں معلومات حاصل ہوں گی جو اس ایپ کو استعمال کرے گا۔ترجمان نے مزید بتایا کہ یاتری اس ایپ کو گوگل پلے سٹور سے ڈاؤن لوڈ کرسکتے ہیں ۔ اس ایپ کا نام ’’شری امر ناتھ جی یاترا‘‘ ہے۔ یاتری اس ایپ کو  http://play.google.com/store/apps/details?id=com.ncog.shriamarnath&hl=IT کے ذریعے بھی ڈاؤن لوڈ کرسکتے ہیں۔