ہینڈ لوم سیکٹر بحالی کی راہ پر گامزن:نظام الدین بٹ

 سرینگر//مرکزی و ریاستی حکومتوں کی بھرپور معاونت سے جموں وکشمیر میں ہینڈ لوم سیکٹر بحالی کی راہ پر گامزن ہے ۔ ہینڈ لوم ڈیولپمنٹ کارپوریشن جو کہ ہینڈ لوم شعبے کی ترقی سے وابستہ ایک مرکزی ایجنسی ہے۔کی عنقریب 2014ء کے سیلاب اور 2016ء کی شورش کے دوران ہوئے نقصانات کی تلافی ہوگی ۔ اس کا اظہار وائس چیئرمین ہینڈلوم اینڈ ہنڈی کرافٹ کارپوریشنز نظام الدین بٹ نے ان اداروں کے کام کاج کا جائزہ لینے کے دورا ن کیا۔ انہوں نے کہا کہ دو بڑے پروجیکٹوں سرینگر کے لئے 9کروڑ روپے کی مالیت کا ڈبلیو ڈبلیو ڈی ڈی سی ۔ مرحلہ دوم پروجیکٹ اور کانی شال کی بحالی کے لئے کانہامہ 3.50کروڑ روپے کاپروجیکٹ مرکزی حکومت کو رقومات کے لئے بھیجا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت کے ہینڈی لوم ڈیولپمنٹ و ہینڈی کرافٹس کمشنر اس معاملے میں ذاتی طور دلچسپی لے رہے ہیں اور دونوں پروجیکٹ عنقریب منظور کئے جائیں گے ۔انہوں نے مزید کہاکہ مرکزی حکومت ہینڈ لوم اور ہینڈی کرافٹس شعبو ں کے لئے بجٹ امداد اور روالونگ فنڈ میں اضافہ کرنے پر غور کر رہی ہے تاکہ دونوں اداروں کی تجارتی اور مالی صحت میں بہتری واقع ہو سکے ۔ انہوں نے کہا کہ دونوں اداروں نے مشکل اوقاف میں بھی تاریخی اہمیت کے حامل فن و دستکاری کے تحفظ میں اہم کردار ادا کیا ہے۔اُنہوںنے کہا کہ تن دہی ، لگن اور محنت سے دونوں شعبوں کے ہنر مند اور دیگر افرادی قوت کشمیر کی فن و دستکاری کی عظمت رفتہ کو بحال کرسکتے ہیں۔ وائس چیئرمین نے ذرائع کے بہتر انتظامیہ اور کوالٹی کنٹرول کے ذریعے تجارت کو توسیع دینے کے لئے انتظامیہ کی کوششوں کو سراہا۔اُنہوں نے کہا کہ ہینڈ لوم و دستکاری مصنوعات کے لئے بہتر مارکیٹنگ کے امکانات کا جائزہ لینے کے لئے ایک جامع مطالعہ کی ضرورت ہے تاکہ مقامی ، قومی او ربین الاقوامی سطح پر کئی مصنوعات کی مارکیٹنگ کے لئے ایک مؤثر لائحہ عمل مرتب کیاجاسکے۔ انہوں نے ملازمین کی تنخواہوں کے واجبات کی ادائیگی کے لئے یک وقتی پیکیج کی فراہمی کے لئے حکومت سے اپیل کی تاکہ ملازمین او روکروں کی مشکلات کم ہوسکیں اور وہ ان اداروں کی ترقی کے لئے تن دہی اور لگن سے کام کرسکیں۔