ہیلتھ سنٹر آﺅرہ ترہگام میں بنیادی سہولیات کا فقدان

کپوارہ//سرحدی ضلع کپوارہ کے آ ﺅرہ ترہگام میں قائم پرائمری ہیلتھ سنٹر میں ڈاکٹرو ں اورطبی عملہ کے علاوہ دیگر سہولیات بھی میسر نہیں ہیں جس کی وجہ سے لوگو ں کو ضلع کے دیگر اسپتالو ں کا رخ کرنا پڑتا ہے جبکہ پرائمری ہیلتھ سنٹر آﺅرہ میں طبی جانچ کر نے کے لئے مشینری تک دستیاب نہیں ہے ۔مقامی لوگو ں کا کہنا ہے کہ آﺅرہ اور اس کے درجنو ں علاقوں جن میں جمہ گنڈ ،زرہامہ ،مڑہامہ ،لدر ناگ ،لدر ون ،الا چی ذب ،کاواری ،منون ،میر مقام ،گجر پتی ،ہندی اور ڈاری بل شامل ہیں، کے لوگو ں کے لئے آ ﺅرہ میں قائم پرائمری ہیلتھ سنٹر واحد امید تھی لیکن مذکورہ اسپتال سرکاری کی نظرو ں سے اوجھل ہے ۔مقامی لوگو ں کا کہنا ہے کہ دور دراز علاقوں میں لوگو ں کو طبی سہولیات میسر رکھنے کا سرکاری دعویٰ سراب ثابت ہورہا ہے ۔مقامی لوگو ں نے اپنے غم و غصہ کا اظہار کرتے ہوئے بتا یاکہ یہ ہیلتھ سنٹر محکمہ صحت کی غلط پالسیو ں کا شکار ہو اہے ۔انہو ں نے بتا یا کہ اس اسپتال میں ایک یونانی ڈاکٹر کے بغیر کوئی ڈاکٹر تعینات نہیں کیا گیا ہے۔لوگو ں کا کہنا ہے کہ آ ج تک اس اسپتال سے کئی ڈاکٹروں کا تبادلہ عمل میں لایا گیا لیکن کسی دوسرے ڈاکٹر کو یہا ں تعینات نہیں کیا گیا جس کی وجہ سے یہا ں کے مریض درد در کی ٹھوکریں کھارہے ہیں ۔لوگو ں کا یہ بھی کہنا ہے کہ یہا ں کے مریض معمولی علاج و معالجہ کے لئے ضلع کے دیگر اسپتالو ں کا رخ کرنے پر مجبور ہورہے ہیں ۔لوگو ں کا کہنا ہے کہ پی ایچ سی صبح 10بجے کھلتا ہے اور 4بجے بند ہوتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ اسپتال میں ایک ایمبولینس دستیاب تھی تاہم وہ اکثر و بیشتر خراب رہتی تھی اور گزشتہ سال نا مساعد حالات کے دوران اس کو نقصان پہنچا جس کے بعد گا ڑی کو ٹھیک کر نے کی غرض سے ورکشاپ لیا گیا اور آ ج تک بھی اس کو ٹھیک کر کے نہیں لایا گیا۔مقامی آبادی نے سرکار سے مطالبہ کیا کہ پرائمری ہیلتھ سنٹر آﺅرہ کی طرف توجہ دیکر اسے جدید سہولیات سے لیس کریں تاکہ یہا ں کے مریضوں کو ضلع کے دیگر اسپتالو ں کی طرف رخ نہ کرنا پڑے ۔ چیف میڈیکل آفیسر کپوارہ ڈاکٹر پریہالدسنگھ نے کشمیر عظمیٰ کو بتا یا کہ وہ پی ایچ سی کا دورہ کر کے صورتحال کا جائزہ لیں گے۔