ہوپ کلاسز’’این ای ای ٹی‘‘طلاب کواعزاز سے نوازا

سرینگر//ہوپ کلاسس پرے پورہ نے اتوار کے روز 2019 اور 2020 میں ’’این ای ای ٹی‘‘ کے امتحانات میں اپنا نام درج کرنے والے130طلابکو اعزاز سے نوازا۔ شہر کے ایک ہوٹل میں منعقدہ تقریب کے دوران نے کامیابی کا جشن منایا۔اس موقعہ پر صورہ میڈیکل انسٹی چیوٹ کے ڈائریکٹر ڈاکٹر اے جی آہنگر نے اپنے خطاب میں طلباء کو اعزاز سے نوازنے کے بعد کہا کہ ’’یہ فخر کی بات ہے کہ ہوپ کلاس کے طلبا نے’’این ای ای ٹی‘‘ امتحانات میں بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کیا۔انہوں نے کہا’’ہمیں فخر ہے کہ طلبا نے امتحانات میں شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کیا ہے اور ان کا مستقبل ایک نئی سمت کی طرف بڑا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مجھے یقین ہے کہ جن طلبا کو یہاں اعزاز سے نوازا جا رہا ہے وہ نہ صرف طب میں مستقبل تلاش کر رہے ہیںبلکہ انجینئرنگ ، ٹکنالوجی ، صحافت ، آئی ٹی ، بزنس مینجمنٹ ،کاروبار،انتظامیہ اور تحقیق میں بھی اپان لوہا منوائے گے۔ڈاکٹر آہنگر نے کہا کہ دنیا بہت وسیع ہے اور یہاں بہت سارے مواقع موجود ہیں۔انہوں نے کہا ’’ ہمیں خود کو صرف ڈاکٹر ، انجینئر یا وکیل ہونے تک ہی محدود نہیں رکھنا چاہئے۔‘‘ انہوں نے کہا کہ مسابقت آج حد سے بڑھی ہے۔تقریب میں موجودایڈیشنل ڈپٹی کمشنر سری نگر ، سید حنیف بلخی نے ہوپ کلاسز کے طلباء  اور اساتذہ سے خطاب کرتے ہوئے کہا ’’اکثر ایسا ہوتا ہے کہ ڈاکٹر ہر غلط وجہ کی بنا پر خبروں میں رہتے ہیں،تاہممیں چاہتا ہوں کہ آپ سب اس رجحان کو تبدیل کریں‘‘۔سنٹرل یونیورسٹی آف کشمیر سے تعلق رکھنے والے پروفیسر نذیر احمد زرگر نے روشنی ڈالی کہ کشمیر میں ڈاکٹر گذشتہ تین دہائیوں سے موجودہ صورتحال کے باوجود بے لوث خدمت انجام دے رہے ہیں۔ زرگر نے زور دیا کہ وہ ’’ایک نرم رویہ اپنائیں تاکہ وہ مریضوں کے لئے شائستہ بن سکیں‘‘۔منظور احمد کمار ، چیف ایجوکیشن آفیسر ، سرینگر نے کہا کوویڈ۔19 کے درمیان ، کوچنگ مراکز میں تمام  ضوابط اور معیاری عملیاتی طریقہ کار کے پیروی کرنے کی اشد ضرورت ہے۔شریک ڈائریکٹر ہوپ کلاسز ، فیاض احمد نے طلبہ پر زور دیا کہ وہ’’اپنے نقطہ نظر کو بڑھا‘‘ دیں اور تحقیق پر عمل کریں جس سے معاشرے کی بھلائی میں مدد ملے گی۔پولیس سپرنٹنڈنٹ (ایس پی) ایسٹ ، تنوشری نے  ان طلاب کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا کہ منشیات کی لعنت سے لڑنا پورے معاشرے کا فرض ہے۔