ہند و پاک دوستی مذاکرات پر مضمر

 سرینگر// سابق مرکزی وزیر پروفیسر سیف الدین سوزنے جنرل ایم ایم ناراوانے، آفیسر کمانڈنگ اِن چیف، آرمی ٹریننگ کمانڈکی طرف سے چندی گڈھ میںدیے گئے بیان جس میں انہوں نے کہا کہ بھارت اور پاکستان کے درمیان صرف ایک ہی راستہ کھلا ہے وہ امن اور اچھی ہمسائیگی کا۔اور ایسے ہی خیالات کا اظہار جنرل دپندرا سنگھ ہوڈا ، سابق آفیسر کمانڈنگ اِن چیف ناردرن کمانڈ اور دوسرے کئی فوجی جنرلوں نے کیا ہے اور بتایا ہے کہ بات چیت کے ذریعے ہی دونوں ملکوں کے لوگوں کو کنٹرول لائن کی مشکلات سے نجات مل سکتی ہے جبکہ پاکستان کے قومی سلامتی مشیر ناصر جنجو اور دوسرے کئی سینئر فوجی افسروں نے لگاتار بھارت اور پاکستان کے درمیان امن اور دوستی کی زبردست وکالت کی ہے۔سوز نے کہا کہ ہمیں ان بڑی شخصیات کے خیالات کی تائید کرنی چاہئے اور اِن کو مرحبا کہنا چاہئے کہ انہوںنے بھارت اور پاکستان کے درمیان مستقل امن کے سلسلے میں اپنے خیالات دونوں ممالک کی قیادت کے سامنے رکھے ہیں۔انہوں نے کہا کہ مجھے لگتا ہے کہ یہ آوازیں بھارت اور پاکستان کے قومی سلامتی نظام کے اندر حقیقت پسندی کی بہترین مثال پیش کرتی ہیں اور ان شخصیات نے واشگاف الفاظ میں کہا ہے کہ جنگ کسی صورت میں کسی مسئلے کا حل نہیں ہے اور سارے مسائل بات چیت کے ذریعے ہی حل ہونے چاہئے۔