ہندوپاک کی ترقی میں مسئلہ کشمیررکاوٹ:کیمرون منٹر

سرینگر//سابق امریکی سفیر برائے پاکستان کیمرون منٹرنے ہندوستان اورپاکستان کے درمیان تنازعہ کشمیر کو ترقی کیلئے بہت بڑی رکاوٹ قراردیتے ہوئے کہا کہ دونوں ممالک کوچاہئے کہ تنازعہ کشمیر سمیت دیگر حل طلب مسائل کوباہمی طورحل کرنے کیلئے مذاکراتی عمل کو بحال کریں ۔ انہوںنے کہا کہ بھارت اور پاکستان امریکہ کیلئے معاشی مرکز ہیں اور ہمیں دونوںممالک کے ساتھ معاملات بہتر رکھنے پڑرہے ہیں۔ سابق امریکی سفارت کار برائے پاکستان کیمرون منٹر نے کراچی میں منعقدہ ایک تقریب کے دوران ہندوستان اور پاکستان کے مابین تعلقات کے حوالے سے بتایا کہ پاکستان اور بھارت کی ترقی کے درمیان تنازعہ کشمیر ہی بڑی رُکاوٹ ہے۔ انہوںنے کہاکہ جنوبی ایشائی خطے میںبھارت اور پاکستان ایسے دو ممالک ہیں جو اگر باہمی اعتمادسازی بحال کرنے میںکامیاب ہوجاتے ہیں تو دونوںممالک کامیابی سے ہمکنار ہوسکتے ہیںاور خطے میں تعمیر و ترقی کانیادور شروع ہوسکتا ہے ۔انہوں نے دونوںممالک کے سربراہان پر زور دیا کہ وہ تنازعہ کشمیر سمیت تمام حل طلب مسائل کو باہمی طور حل کرنے کیلئے مذاکراتی عمل کو پھر بحال کریں ۔کیمرون منٹر نے کہا کہ بھارت اور پاکستان کے ساتھ امریکہ کو اپنے تعلقات بہتر رکھنے پڑرہے ہیں کیوں کہ دونوں ممالک ہمارے لئے معاشی مرکز ہیں اور اگر دونوں ممالک کے تعلقات بہتر ہوں گے تو امریکہ کو بھی اس سے فائدہ ہوگا۔ اس دورن انہوں نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ امریکی انتظامیہ پاکستان کے بارے میں نہیں سوچ رہی۔ان کا کہنا تھا کہ بات عمران خان کی نہیں بلکہ پریشان کن بات یہ ہے کہ بہت کم لوگ پاکستان میں دلچسپی لے رہے ہیں۔  سابق امریکی سفیر کیمرون منٹر نے انکشاف کیا ہے کہ امریکی انتظامیہ اس وقت پاکستان میں دلچسپی نہیں لے رہی۔انہوں نے کہا کہ بدقسمتی سے امریکی انتظامیہ میں بہت کم لوگ پاکستان کے بارے میں سوچ رہے ہیں۔