ہندوستان کا پاسپورٹ، ہریانہ کا آدھار کارڈ … افغانستان کے کھلاڑی پر دہلی میں کیس درج

نئی دہلی //افغانستان نژاد کے ایک مارشل آرٹ فائٹر کھلاڑی کے خلاف جنوبی دہلی کے حوض خاص تھانہ میں معاملہ درج کیا گیا ہے ۔ جانکاری کے مطابق افغانستان نژاد کھلاڑی عبد العظیم بدخشی کے پاس سے ہندوستان کا بنا ہوا پاسپورٹ اور آدھار کارڈ برآمد ہوا ہے ۔ اس کو لے کر ہندوستان کے وزیر خارجہ ایس جے شنکر کو شکایت کنندہ نے ایک خط بھی لکھا ہے ۔ دہلی پولیس کے ذرائع کے مطابق دو دن پہلے جنوبی دہلی میں واقع سری فوٹ آڈیٹوریم میں ایک کھیل کے دوران کافی ہنگامہ ہوا تھا ۔

 

دراصل یہ معاملہ دو مارشل آرٹ فائٹر کے درمیان کا تھا ۔ اوڈیشہ کے مارشل آرٹ فائٹر شری کانت شیکھر نام کے ایک کھلاڑی پر افغانستان نژاد کے کھلاڑی کے حامیوں نے حملہ کردیا تھا ۔ شری کانت شیکھر فی الحال سنگین حالت میں اسپتال میں بھرتی ہیں اور ان کا علاج چل رہا ہے ۔ معاملہ کی سنگینی کے پیش نظر شری کانت شیکھر نے حوض خاص تھانہ میں شکایت درج کروائی تھی، جس کے بعد دہلی پولیس کے ذریعہ معاملہ درج کرکے جانچ شروع کردی گئی ہے ۔ جنوبی دہلی ضلع پولیس کی ٹیم نے افغان کھلاڑی عبد العظیم بدخشی کو پوچھ گچھ کیلئے بلایا ۔ اس کے سامان سمیت دیگر دستاویز کی جب جانچ پڑتال کی گئی تو اس کے پاس سے ایک ہندوستان نژاد کے شہری ہونے کا پاسپورٹ اور ہریانہ کے گروگرام کا آدھار کارڈ برآمد ہوا ۔ پولیس ذرائع کے مطابق ہندوستانی پاسپورٹ میں عبد العظیم بخشی کا نام عظیم سیٹھی لکھا ہوا ہے ۔ ساتھ ہی گروگرام کے نئی بستی علاقے کا پتہ لکھا ہوا ہے ۔ معاملہ کی سنگینی کو دیکھتے ہوئے دہلی پولیس اس معاملہ کی تفتیش میں مصروف ہوگئی ہے ۔

 

بڑا سوال یہ ہے کہ افغانستان نزاد شہری نے کس طرح سے ہندوستانی پاسپورٹ اور آدھار کارڈ بنوایا تھا ؟ کون کون سے لوگ اس طرح کے دھندے سے جڑے ہوئے ہیں، جو غیر ملکی لوگوں کے ہندوستانی شناختی کارڈ غیرقانونی طریقہ سے بنوا رہے ہیں ۔ پاسپورٹ سے وابستہ سبھی ان پٹس کو بھی کھنگالا جارہا ہے ۔ اس معاملہ میں جانچ کروانے کیلئے ہندوستان کے وزیر خارجہ ایس جے شنکر کو سپریم کورٹ کے وکیل ہریجندر سنگھ نے خط لکھا ہے ۔